آگیا 16 دسمبر

آج کا سورج طلوع ہوا اور ماضی کی تلخ یادوں کو تازہ کرگیا۔ ہاں آج 16 دسمبر ہے۔ وہی صبح جو آج سے کچھ سالوں پہلے کئی گھروں کو ماتم کدہ بنا کر چھوڑ گیا تھا اور اے پی ایس کے بچوں کے لیے درد کی ایک داستان لکھ گیا تھا۔ یہ وہی دن ہے…

Read more

باپ کی عظمت

باپ۔ اس لفظ کے آتے ہی ذہن کے کتنے دریچے کھل گئے۔ اس لفظ کو اک لفظ یا جملے میں کیسے بیان کیا جائے۔ باپ کا نام آتے ہی اک ناتواں اورضعیف رو صورت آنکھ کے سامنے گھومنے لگتی ہے۔ میرے نزدیک باپ کی قدر و قیمت کسی دوسرے شخص سے کہیں زیادہ ہے کیوں…

Read more

الف سے اللہ

بولو بیٹا۔ الف۔ الف سے انار۔ جب کانوں میں الف نام کی آواز آتی ہے تو قدرتی طور پر ذہن میں الف سے انار ہی آتا ہے۔ ایسا آخر کیوں کر پے؟ یہ کون سا طریقہ کار ہے جو بچپن کے نا پختہ ذہن میں محفوظ ہوچکا ہے۔ جو ہر یادآوری پر بغیر کسی تاخیر…

Read more

اقبال کا تصور خودی

خودی کیا ہے راز دورنِ حیات خودی کیا ہے بیدارئی کائنات ازل اس کے پیچھے ابد سامنے نہ حد اس کے پیچھے نہ حد سامنے زمانے کی دھارے میں بہتی ہوئی ستم اس کی موجوں کے سہتی ہوئی ازل سے ہے یہ کشمکش میں اسیر ہوئی خاک ِ آدم میں صورت پزیر خودی کا نشیمن…

Read more

لیاقت پور ٹرین سانحہ: حادثہ یا غفلت

ایک اور حادثہ، کراچی سے تیز گام جانے والی ٹرین صبح طلوع آفتاب کے وقت انجانی وجوہات کی بنا پر حادثے کا شکار ہوئی اور ایک دفعہ پھر ہم نے خلق خدا کو زندہ جلتا ہوا دیکھا۔ چلتی ریل سے آگ کے بڑے بڑے شعلےنکل رہے تھے پر گاڑی رکی نہیں تھی۔ خبر دیکھتے ہی…

Read more

سوشل میڈیا جنریشن

آج کل کی دنیا ایجادات کی بنا پر دن دگنی ترقی پر مامور ہے۔ اس ترقی نے وقت کو جیسے سمیٹ لیا ہے۔ فاصلوں کی اہمیت لمحوں میں لپٹ گئی ہے۔ اپنی بات کو دوسروں تک پہچانا بے حد آسان ہوگیا ہے۔ یہاں ہم نے کچھ سوچا اور دوسرے لمحے اس کی تشہیر ہوجانا اب…

Read more

قصور میرا ہے!

کبھی کبھی سوچتی ہوں ہماری بھی کیا زندگی ہے۔ وہی تھکے ہارے سونا اور صبح تھکے ہارے اٹھ کر دنیا داری نبھانا۔ اپنی زندگی سے نا خوش اور نا امید سا رہنا اور اپنی تمام تر ناکامیوں کا وجوہات کسی دوسرے کے سر تھوپ کر دوبارہ تھک کے سوجانا۔ ہمیں اپنی ذات سے نکلنے کا…

Read more

یہ رہی لاہور کی سنبل: کدھر ہے اب وہ کراچی والی مسز خان؟

میں ایک حوا کی بیٹی ہوں۔ صنف نازک ۔۔۔ جس کی مرد جب ناز برداری اٹھانے کو آتا ہے تو ماں جیسی عظیم ہستی کو بیوی کے کہنے پر کچرے میں پھینک جاتا ہے اور کبھی ماں کے کہنے پر اپنی بیوی کو لاتوں، گھونسوں سے اتنا مارتا ہے کہ وہ مر نہیں جاتی تو…

Read more

ڈے کیئر سینٹر یا ٹارچر سیل

سوشل میڈیا پر خبر سر گرم ہے۔ دل اداس سے زیادہ چوکنا ہوگیا ہے۔ ان ویڈیوز کو میں نے بڑے غور سے بار بار دیکھا۔ ایک دفعہ پھر ہمارے معاشرے کا بھیانک چہرہ سامنے آگیا ہے جہاں انسانیت نام کی باقی نہیں رہی ہے۔ ہمارا معاشرہ کس طرف چل پڑا ہے، وہ کون سے عوامل ہیں…

Read more

وجود زن سے ہے تصویر کائنات میں رنگ

عورت نصف انسانیت ہے۔ عورت کے تصور سے ہی کائنات میں رنگ وبو ہے۔ عورت مختلف اور منفرد خصائل وصفات کی مالکہ، فہم وفراست، عود ومشک گلاب سے بہتر عزت وقار میں عرفہ وشفقت رحمت سے اس کے معور کا ہر خاکہ رنگین ومذین ہے۔ علامہ اقبال نے نہ جانے کس ترنگ میں آکر اپنے ایک مصرع میں وجود زن کو کائنات کی تصویر میں رنگ قرار دیا۔ بس ہم ان کے اسی ایک مصرع کو پکڑ کر کچھ ایسے بیٹھ گئے کہ زن بے چاری کو شمع محفل بنا کر ہی دم لیا۔ کیا شاہراہوں پر لگے قد آدم بل بورڈز اور کیا ٹیلی وژن پر چلنے والے الم غلم اشیاء کے اشتہار ’ان سب میں عورت ہی سے رنگ آمیزی کی کوشش کی جاتی ہے۔یہ مصرع ہر خاص و عام فہم کا شخص اس طرح استعمال کرتا ہے کہ جیسے عورت فقط ایک

Read more