دیر کوہستان کی یاترا

سوات کوہستان میں بولی جانی والے زبان گاؤری اور یہاں کی منفرد ثقافت کے تحفظ اور فروغ کے لئے کام کرنے والی غیرسرکاری فلاحی تنظیم جی سی ڈی پی (گاؤری کمیونٹی ڈیولپمنٹ پروگرام) مادری زبان میں لکھنے والے لکھاریوں کی حوصلہ افزائی اور نئے لکھاریوں کو سامنے لانے کے لئے سالانہ ”رائٹر ورکشاپ“ منعقد کرتی…

Read more

اپنے حصے کی کوئی شمع جلاتے جاتے

راقم بھی ہمیشہ دیر کردیتا ہے، جیسا کہ بیس نومبر کو ہونے والے ایک سیمنار کا وعدہ ایفاء کرنے میں دیر کردیا۔ دراصل غیرسرکاری فلاحی اداروں ایف ایل آئی (فورم فار لینگویج انشٹیوز) اور جی سی ڈی پی (گاؤری کمیونٹی ڈیولپمنٹ پروگرام) نے بچوں کے عالمی دن کے موقع پر ایک سمینار کا انعقاد کیا تھا۔ جس میں علمائے کرام، صحافی برادری، ڈاکٹروں، سماجی کارکنوں کے ساتھ راقم کو بھی شرکت کا شرف حاصل ہوا۔ یہ سیمنار پاکستان کے ایک دور افتادہ علاقے کالام میں منعقد ہوا جس میں بچوں کے حقوق اور ان کے فلاح و بہبود کے حوالے سے آگاہی نہ ہونے کے برابر ہے۔ اس لئے یہ سیمنار انتہائی اہمیت کا حامل تھا۔ اس لئے شرکاء نے عہد کیا تھا کہ اس بارے آگاہی کی بیداری میں بھرپور حصہ ڈالیں گے۔ مگر کیا کریں ”ہمیشہ دیر کردیتا ہوں“ اور آج پورے بیس دن بعد قلم کو جنش دینے کا موقع ملا۔

Read more

پشاور یونیورسٹی، جادو اور ڈنڈوں سے نہیں چلے گی

بلاول صاحب ٹھیک فرمارہے ہیں کہ سیاست گالی، معیشت چندے اور ملک جادو سے نہیں چلتا، نظام کو چلانے کا گر سمجھنا ہوگا، سو روزہ انقلابی حکومت پر جہاں سیاست گالی سے چلانے کا الزام ہے، وہی انہوں نے تعلیم بھی گولی سے چلانے کی ٹھان لی ہے۔ آغاز پشاور یونیورسٹی سے کیا گیا جہاں…

Read more

سراج الحق وکٹ کے بالکل سامنے سے کھیل رہے ہیں

جب سے مولانا فضل رحمن صاحب نے ریاستی اداروں کی طاقت سے یک طرفہ انتخابات کو (بظاہر) متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے، لیکن حقیقت میں (ذاتی طور) مسترد کردیا اور تحریک چلانے کا اعلان کیا، مگر باوجود متحدہ مجلس عمل کے صدر کے فیصلے کے سراج الحق صاحب نے اسمبلیوں میں جانے کا…

Read more

مفاد عامہ اور سوات کوہستان کے نوجوان

تنظیم نوجوانان اشو مٹلتان کی جانب سے افطار ڈنر پارٹی میں ساتھیوں سمیت مدعو کیا گیا تھا۔ اس تنظیم کے حوالے سے چند ہفتوں پہلے دوستوں سے سنا تھا کہ مٹلتان اور اشو کے چند نوجوانوں نے اس پسے ہوئے طبقے کی آواز اٹھانے اور مدد کرنے کی حامی بھرلی ہے۔ ذاتی ابتدائی تاثر یہ…

Read more

جناب! نظام کی بہتری اذیت ہی کیوں بن رہی ہے؟

اداروں اور خیبر پختونخوا حکومت کے مابین اس دھینگامشتی میں عوام کو کچلایا جارہا ہے۔ تبدیلی گروپ کی جنگ اداروں کے ساتھ ہے اور بیچ میں کے پی کے کی عوام، صحت، تعلیم اور ترقیاتی منصوبوں سے محروم ہو رہے ہیں۔ صحت کے ادارے عوامی صحت کے لئے مضر ہسپتالوں میں سیرنج تک نایاب ہوجاتا ہے…

Read more