نئی جمہوری تکون کی قیادت

اسلامی دنیا کی قیادت کے لئے جمہوریت کوبنیاد بنا کر نیا سہ رکنی اتحاد تشکیل دیا جارہا ہے، جس میں کوئی عرب ریاست شامل نہیں ہے۔ مدتوں پہلے قازقستان کے صدر نورسلطان نذر بایوف اور ڈاکٹر مہاتیر محمد کو مسلم اُمّہ کا رہنما قرار دیا جا رہا تھا، لیکن مہاتیر سیاست سے ریٹائر ہو گئے۔ جب کہ نور سلطان نذر بایوف نے وسط ایشیا کی سیاست سے باہر جانا پسند نہ کیا اور وہ بھی خاموشی سے ریٹائرڈ ہو گئے۔ اب مہاتیر محمد اپنے جانشینوں کی لوٹ مار سے قوم کو بچانے کے لئے دوبارہ میدان میں آئے اور ووٹ کی پرچی کو برچھی بنا کر لٹیروں کو مار بھگایا۔ اُدھر ترکی میں اردگان اور اِدھر پاکستان میں عمران خان منظر پر طلوع ہوئے، لہذا اب ساری امیدیں اس جمہوری تکون سے وابستہ کی جا رہی ہیں۔

Read more