سہیل احمد خان اور ہمارا تہذیبی حافظہ

سہیل احمد خان کا داستانی تنقید کا سفر، داستانوں کی تفہیم کے حوالے سے کسی بنیادی مابعد الطبیعاتی نظام کی تلاش کا سفر ہے۔ اس سفر کی مبادیات اور ”راہ کی نشانیاں“ جاننے سے پہلے مابعد الطبیعات کی اصطلاح کو سمجھنا ضروری ہے۔ سہیل احمد خان نے داستانوں کوجب اپنے مطالعے کا مرکز بنایا تو…

Read more

اکبر معصوم کہاں چلا گیا؟

اکبر معصوم چلا گیا۔ کہاں گیا؟ جہاں سب جاتے ہیں۔آج ، آج نہیں تو کل، سب کو جانا ہے۔ بالکل ایسے جیسے ہمارے ساتھ کے لوگ چلے گئے۔ موت کا چرخا بڑا بے رحم ہے۔ یہ زندگی کے دھاگے سے چلتا ہے۔ عجیب کھیل ہے۔ جان بوئیں اور موت کاٹیں۔سو جینا مرنا عجیب نہیں لگتا۔…

Read more

محمد سلیم الرحمٰن کی ”نظمیں“

جدید اردو تنقید کی افقی، عمودی اور حرکی تعبیرات سے تنقیدی اسلوب کی تشکیل تو ہو گئی مگر اس کے تخلیقی مکاشفے کو جو نقصان پہنچا اس سے اردو کے وضاحتی نقاد بے خبر ہیں جو زمانی حدود اور تحریکی روابط کی تلاش میں اچھی خاصی تخلیق کو سپاٹ بنانے پر تلے ہوئے ہیں۔ ان…

Read more

کچھ ذکر خاندان تیموریہ کے چراغ آخریں مرزا نظام شاہ لبیب تیموری کا

اُردو شاعری کی روایت نئی نہیں۔ دو چار برس ایک طرف یہ ایک صدی کا قصہ بھی نہیں۔ ہزار سال گزر گئے۔ اس ہزاریے میں اس فن نے کتنی کروٹیں بدلیں۔غزل، مثنوی، قصیدہ، رباعی، شہرا ٓشوب، مرثیہ واسوخت سے ہوتے ہوتے پابند نظم، نظم معری، آزادنظم، نثری نظم اور پتا نہیں کتنی شکلوں میں شعرا…

Read more

انجم رومانی اور ”کوئے ملامت“ کی شاعری

یہ دنیا ہے اور ہم سب دنیا دار۔ دنیا اور آسمان جن کے پاٹوں میں جو آیا ثابت نہیں گیا۔ عجب چکرا دینے والا چکر ہے۔  چکی جھونے والے تھک گئے۔  دانے ہیں کہ ختم ہونے کا نام ہی نہیں لیتے۔  ایک کے بعد دوسرا، دوسرے کے بعد تیسرا۔ اس صورتِ حال میں بہت کم…

Read more

ہم نے ظہیر کاشمیری کو کیوں بھلا دیا؟

موسم بدلا، رت گدرائی، اہلِ جنوں بے باک ہوئے فصلِ بہار کے آتے آتے کتنے گریباں چاک ہوئے یہ غزل ظہیر کاشمیری نے لکھی، استاد امانت علی خاں نے گائی اور اہلِ جنوں کی آواز بن گئی۔ وہ اسے گلیوں گلیوں گاتے پھرتے ہیں اور اپنے دل کو ٹھنڈک پہنچاتے رہتے ہیں۔ شاعری کی مدد…

Read more

ہم نفسوں کی بزم میں

شمیم حنفی سے کون واقف نہیں ہے۔ ہمسایہ ملک کی تہذیبی زندگی کا تصور جن شخصیات کے ذکر کے بغیر مکمل نہیں ہوتا، شمیم حنفی ان میں سے ایک ہیں۔ نقاد، خاکہ نگار، ڈراما نویس، کالم نگار، مترجم، مرتب، ان کی شخصیت کے خاص گوشے ہیں۔ بیسویں صدی کی ادبی حیثیت کی تفہیم اور تاریخ،…

Read more

اک ٹکڑا دھوپ کا اور دوسری کہانیاں

”اک ٹکڑا دھوپ کا اور دوسری کہانیاں“ اسد محمد خاں صاحب کی کہانیوں کا نیا مجموعہ ہے جسے ریڈنگز لاہور کے اشاعتی ادارے ”القا“ پبلی کیشنز نے چھاپا ہے۔ اس سے پہلے اسد صاحب کی پانچ کہانیوں کی کتابوں پر مشتمل مجموعہ ”جو کہانیاں لکھیں“ کے نام سے اکادمی بازیافت، کراچی کی طرف سے 2006ءمیں…

Read more

گمشدہ چیزوں کے درمیان

’’گمشدہ چیزوں کے درمیان‘‘ محمد سلیم الرحمٰن کے عالمی ادب سے انتخاب کردہ افسانوں کا مجموعہ ہے جو تراجم کی صورت میں ’’آج کی کتابیں‘‘ کے زیرِ اہتمام کراچی سے چھپا ہے۔ ترجمہ کسی بھی زبان و ادب کی ثروت مندی میں فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ اس کا اندازہ آپ اُس زبان میں…

Read more

کہاں سے لاؤں انھیں

اردو ادب میں، عام طور پر یادنگاری کے دو طریقے رائج ہیں۔ ایک انداز سوانح عمری لکھنے کا ہے جب کہ دوسری طرز خاکہ نگاری کی ہے۔ دونوں عوامل میں تحدید اور اختیار کے اپنے اپنے ضابطے ہیں۔ ان آسائشات اور مشکلات کے اعتبار سے سوانح نویسی اور خاکہ نگاری کا مطالعہ کیا جائے تو…

Read more