ہرجائی

ہرجائی اب چلے بھی جاؤ۔ میرے دل میں موجود خوش گمانیوں کا ہر کونا تمہاری چاہ سے رخصت طلب ہے۔ شبِ زندگی ابھی اختتام پذیر نہیں ہوئی۔ زندگی میں موجود اندھیرے اب بھی بدستور برقرار ہیں، مگر دور کہیں سے ٹمٹماتے قمقمے میری روح سے اندھیروں کو دور کرنے کے لیے بے قرار نظر آرہے…

Read more

”زندگی“

تمہیں زندگی کیسی لگتی ہے؟ یہ کیسا عجیب سوال ہے۔ اس میں عجیب ہی کیا ہے؟ تم جب آنکھیں بند کرو تو زندگی کی کیسی شکل تمہارے ذہن میں ابھرتی ہے زندگی! اس کی آنکھیں کسی وحشی قاتل کی طرح خون ٹپکاتی ہیں۔ غصے کی حالت میں گالیاں بکتے اس مرد جیسی جس کی نظر…

Read more

افسانہ ”التجا“

اے میری ناراض محبوبہ! اب مان بھی جاوُ نا۔ تمہیں مجھ سے منہ پھیرے نہ جانے کتنا عرصہ بیت چکا ہے۔ تمہارے جانے کے بعد سے چاند مجھ سے اکھڑا سارہتا ہے۔ عورت سے تعلق بنانے سے ساری زندگی محض اسی لئے گریز کرتا رہا تھا کہ یہ قیمت بہت بڑی مانگتی ہے۔ تم جاتے…

Read more

افسانہ دیوانی

میری بے ساختہ ہنسی کو کھوجتے کھوجتے تمہارے ہونٹوں پر ابھرنے والی دھیمی مسکراہٹ، تمہاری محبت سے لبریز پر سحر آنکھیں جن کا جادو میری روح تک کو تمہاری خوشبو سے معطر کر دیتاہے۔ تمہاری ہتھیلی پر موجود گہری لکیریں جن کا کوئی سرا بھی کبھی ہمیں ایک نہ کر پائے گا۔ تمہارا آبگینے کی…

Read more

افسانہ مرد

وہ ریلوے اسٹیشن پر بیٹھی نہ جانے کب کی ریل کی منتظر تھی۔ اس تھکا دینے والے انتظار نے اسے بے چین کر دیا تھا۔ اس کے مہندی لگے ہاتھوں میں لال چوڑیاں تھیں۔ وہ اپنا وقت ان کی کھنکھناہٹ کے ساتھ کاٹ رہی تھی. کبھی وہ انہیں گھوماتی اور کبھی گننے لگتی۔ وہ عجیب…

Read more

جشن سال نو اور ازلی بے بسی

اختتامِ شام ہجراں کے انتظار میں نجانے کتنے ہی چاند بے آواز رونے میں مصروف ہیں۔ نہ جانے کتنے سورج سمندر میں آگ لگائے بیٹھے ہیں۔ مایوسی لے کے خالی ہاتھ پلٹنا کیسا تڑپا دینے والا ہے۔ اس بات کا اندازہ وہ انسان اچھی طرح کر سکتا ہے جو چائلڈ کورٹ کے سامنے بیٹھا اپنے…

Read more

نفسیاتی مریض

وہ پری چہرہ نجانے کب سے سسکیاں لے لے کر رو رہی تھی اس نے ڈریسنگ ٹیبل پر سلیقے سے سجی ہوئی ان ہری چوڑیوں کو دیکھا جنھیں شیراز بڑے چاؤ سے اس کے لیے خرید کر لایا تھا۔ اس کے نکاح میں گزارے گئے حسین لمحات کسی فلم کے منظر کی طرح اس کی…

Read more

نادان لڑکی

زندگی نشیب و فراز کے ایک ایسے اندھے کنویں کے گرد گھومتی رہتی ہے جس میں خواہشات اور خوشیوں کے حصول کے لیے انسان کو اپنا وجود تو ایک بار اس کنویں کے سپرد کرنا پڑتا ہے اس کنویں کا پانی بعض لوگوں کے لئے تو آب حیات ثابت ہوتا ہے اور کچھ بدقسمت لوگ…

Read more

شبِ دید

جانتے ہو کہ کل شب پھر تم رات کے اسی آخری پہر میں خواب میں آئے تھے، جب تم سے ملاقات کی تمام امیدیں مایوسی میں ڈھل جاتی ہیں۔ تمہارا مجھے اس وقت آکر چونکا دینا میرے دل کے ہر خانے کو مسرتوں کے سرخ گلابوں سے مہکا دیتا ہے۔ جانتی ہوں یہ تاخیر میری…

Read more

افسانہ بدروح

یہ تم سے نفرت کی انتہا ہی تو ہے جو مجھے ہر وہ لڑکی جو خود سے بے نیاز آپنے خیالوں کی دنیا سجائے، ہتھیلی میں اپنا چہرہ تھامے، فضا میں موجود بادلوں سے مختلف تصویریں بناتیں رہتی ہے میں اس معصوم چہرے کے اندر چھپے بچپنے کو کھوجنے کے بجائے اس میں چھپی حرص…

Read more