کشمیر پر امریکی ثالثی کا خطرناک آپشن

5 اگست کے دن جب چوّن سالہ امیت شا نے 245 اراکین پر مشتمل راجیہ سبھا کے سامنے جموں کشمیر کی حیثییت بدلنے کی قرارداد پیش کی تو دراصل یہ پاکستان اور بھارت دونوں کی سفارتی طاقت کی آزمائش کی ابتدا تھی۔ چند دنوں میں ہی دونوں ممالک اندرونی و بیرونی طور پر دباؤ کا…

Read more

عالمی نظم کے زوال کے تناظر میں ہماری سفارتی ناکامی

ریاست کے باہمی تعلقات کا تعین بلاشبہ ان کے مفادات سے وابستہ ہے۔ ویسٹ فیلین ڈھانچے میں قوم پرستی کی روح نے اس امر کی گنجائش ہی نہیں چھوڑی کہ ریاستیں مفادات کو یکسر نظرانداز کر کے محض نیک نامی کی غرض سے تعلقات نبھائیں۔ گزشتہ تین صدیوں میں ریاستوں نے اس رویے کو بلا روک ٹوک بھرپور طور پر اپنے اپنے انداز میں استعمال کیا۔ نتیجتاً غیر یقینی اور غیر مستقل حالات نے جنگ کو ارزاں کردیا یہاں تک کہ معمولی علاقائی تنازعات عالمی جنگوں کا پیش خیمہ بن گئے۔

Read more

کشمیر کو عالمی عدالت میں لے جانا سنگین غلطی ہو گی

یہ بات اب تک محاورتاً ہی مشہور تھی کہ ایک صبح اٹھے تو دیکھا کہ دنیا ہی بدل چکی تھی لیکن مقبوضہ کشمیر کا حالیہ منظر نامہ ہمارے لئے کچھ ایسا ہی چونکا دینے والا پیغام لایا ہے۔ بی جے پی کے دماغ امیت شاہ نے بیک جنبش کشمیر کی ستر سالہ حیثییت کو ختم…

Read more

کشمیر کے حالیہ بحران کے تین ذمہ داران

بی جے پی سے برائی کے علاوہ اور کیا توقع کی جاسکتی ہے۔ جس سیاسی جماعت کا جوہر مذہبی انتہاپسندی اور جبر کو جائز قرار دینے پر ہو، اس کے لئے اخلاقیات، جمہوری طرز عمل، معتدل پالیسی سازی کے کیا معنی ہوں گے۔ اس سیاسی غنڈوں کے طرز عمل پر بات کرنا ہی وقت کا…

Read more

کلبھوشن کیس سے جڑے چند غیر جذباتی سوالات

بین الاقوامی عدالت انصاف نے سترہ جولائی کو کلبھوشن کیس کا فیصلہ سنانے کا اعلان کیا ہے۔ یہ کیس دونوں ممالک کے لئے سفارتی سطح پر اہمیت رکھتا ہے۔ قبل اس کے کہ کیس کا فیصلہ سنتے ہی طرفین میں جذباتی و سیاسی بحث میں حقائق چھپ جائیں، کیوں نہ اس پورے معاملے کو سمجھنے…

Read more

مودی کے بعد ٹرمپ اور عمران خان بھی اگلا الیکشن جیتیں گے

نریندر مودی کی فقیدالمثال کامیابی نے ثابت کردیا ہے کہ بھارت سے نظریاتی سیاست کا بستر گول ہوچکا اور پاپولزم نے اڑان بھر لی ہے۔ یہ لہر صرف بھارت ہی میں نہیں، پوری دنیا میں پھیل چکی ہے۔ایک اوسط درجے کی سیاسی سوجھ بوجھ رکھنے والا شخص عوام کے سامنے یہ بیانیہ رکھتا ہے کہ سماج دو طبقوں میں تقسیم ہو چکا ہے۔ ایک بے چارے عوام اور دوسرا کرپٹ رولنگ ایلیٹ۔ وہ عام آدمی کو اپنے منہ پھٹ اور نسبتاً غیر اخلاقی انداز میں نظام کو برا بھلا کہتے ہیں۔ سیاستدان ہوتے ہوئے بھی خود کو غیر سیاسی قرار دیتے ہیں اور دعوی کرتے ہیں کہ بس اب اس نظام کی سڑاند سے چھٹکارا حاصل کرنے کا وقت آچکا۔ وہ سیاسی داؤ پیچ کو آسان الفاظ میں بیان کرکے سیاسی بحث کو عوامی سطح تک لے جانے کا شعور دینے کا کریڈٹ تو لیتے ہیں لیکن اپنے منشور اور منصوبہ سازی کو مبہم رکھتے ہیں۔

Read more

فنکار اور کھلاڑی حضرات! چیریٹی کرنی ہے تو گھر سے شروع کریں

کہتے ہیں حسن وہ ہے جو دیکھنے والے کو حیران کردینے کی صلاحیت رکھتا ہو۔ اس تعریف کے مطابق پاکستان بے پناہ حسن سے مالامال ملک ہے۔ ایک ایسا ملک جس کی چھتیس فیصد معیشت غیردستاویزی ہو، کل آبادی کا ایک فیصد سے بھی کم ٹیکس ریٹرن فائل ہوتا ہو، جہاں ایک بھرپور متوازی معیشت بغیر کسی ٹیکس کٹوتیوں اور آڈٹ کے چل رہی ہو، لگ بھگ چوبیس فیصد آبادی خط غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزار رہی ہو اور جو باقی ہیں وہ دن رات مہنگائی کا رونا رو رہے ہوں، اس ملک میں اسٹنفورڈ سوشل انوویشن ریویو کی رپورٹ کے مطابق اٹھانوے فیصد آبادی صدقہ، فطرانہ اور زکوۃ کی مد میں سالانہ دو سو چالیس ارب روپے سے زائد کی رقم فلاحی کاموں میں خرچ کرتے ہوئے جی ڈی پی میں تناسب کے اعتبار سے پاکستان کو دنیا کے صف اول کے خیرات دینے والی اقوام میں شامل کرتے ہے۔ یہ بلاشبہ پاکستان کے مثبت تاثر میں سے ایک ہے۔

Read more

ایوینجرز سیریز کے سپر ولن تھینوز اور ہٹلر میں مماثلت

والٹ ڈزنی کے بینر تلے مارول کامکس کی حالیہ ریلیز فلم ”ایوینجرز، اینڈگیم“ نے محض پہلے پانچ دنوں میں ہی دنیا بھر سے ایک ارب بیس کروڑ ڈالرز کی کمائی کرکے سب کو ورطہ حیرت میں ڈال دیا۔ اس فلم نے سنیما کی تاریخ میں بنے گزشتہ ریکارڈز کو میلوں پیچھے چھوڑتے ہوئے یہ روشن امکان پیدا کردیا ہے چند ہفتوں میں ہی اوتار کا سب سے زیادہ دو ارب ڈالرز کے لائف ٹائم ریکارڈ کو بھی پیچھے چھوڑ دے گی۔ مارول اسٹوڈیوز نے بلاشبہ کامکس کی دنیا میں عمدہ ڈائریکشن اور حقیقت کے قریب ترین گرافکس کے استعمال کے نئے معیار قائم کرتے ہوئے ایک تاریخ رقم کی ہے۔ مقبولیت کا یہ عالم ہے کہ محض گیارہ برس کے قلیل عرصے میں ایک ہی موضوع سے بالواسطہ اور بلاواسطہ طور پر جڑی بائیس مختلف فلمز کے ذریعے اب تک اٹھارہ ارب ڈالرز کا بزنس ہو چکا ہے۔

Read more

کون سے صدارتی نظام کا ماڈل پاکستان کیلئے مناسب ہے

صدارتی نظام اگرچہ جمہوریت ہی کی ایک شکل ہے لیکن پاکستان میں اس کی حمایت اور مخالفت کو شک کی نگاہ سے ہی دیکھا گیا ہے۔ جس کی کلیدی وجہ آمروں کی اس نظام سے خصوصی دلچسپی ہے جنہوں نے اسے طاقت کے ارتکاز کے لئے استعمال کیا۔ حالیہ منظرنامے میں یہ صدا کسی آمر…

Read more

جدید حکایات سعدی

ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ نیشا پور میں دو متوسط لیکن مغرور ہمسایے ہنسی خوشی رہنے کی کوشش کر رہے ہوتے تھے کہ اچانک ان کے محافظین کے درمیان کسی بات پر لڑائی بھڑک اٹھتی۔ عموماً مہینے کے آخری دنوں میں ایسا ہوتا۔ ایسا شدید ہیجان پیدا ہوتا کہ بات الزام تراشی سے شروع ہوتی ہوئی پکڑ دھکڑ تک پہنچتی اور آخر میں ایٹمی بندوق چلانے تک چلی جاتی۔ باہمی لڑائی کا جوش و خروش عروج تک پہنچ جاتا۔ طبل جنگ بجنے سے عین پہلے ان گھروں کے بچے صلح کے بدلے ہر طرح کی جانی و مالی قربانی دینے کی یقین دہانی کروا دیتے۔ خون خرابے سے بچنے کے لئے مالی قربانی پر اکتفا کر کے لڑائی موخر کرنا پڑ جاتی۔

Read more