نیوزی لینڈ میں دہشتگردی اور ہماری جانب کا سچ

دہشتگردی کی جڑیں انتہا پسندی سے پھوٹتی ہیں۔ اور یہ ایک تلخ حقیقت ہے کہ انتہا پسندی کی بنیاد راسخ العقیدگی پر استوار ہوا کرتی ہے۔ مذہبی عقائد کے علاوہ ہمارے نظریات بھی کبھی کبھار اپنی شدّت کے باعث عقیدے کا روپ دھار لیتے ہیں۔ اپنے عقائد پر مضبوطی سے جمے رہنا جہاں ایک جانب باعثِ توصیف سمجھا جاتا ہے، تو دوسری جانب اپنی سوچ، عقائد اور نظریات کے متعلق لچک نہ رکھنا انتہا پسندانہ رویّوں کو جنم دیتا ہے۔ یہ انتہا پسندانہ رویّہ تعصب کو ابھارتا ہے۔ اور اسی تعصب کے باعث ہمارا مخالفین کے معاملے میں ردِّ عمل اس قدر شدید ہوتا ہے کہ ہم اپنے سچ کی فتح کی خاطر انسانی جان لینے سے بھی دریغ نہیں کرتے۔

Read more

چند جہنمی عورتیں اور جنتی مرد

چند احمق عورتیں۔ بلکہ جہنمی عورتیں۔ اپنے حقوق کا تعیّن خود کرنے چلی تھیں۔ اس صنف کے ناقص العقل ہونے پر دو رائے تو کبھی بھی نہ تھیں، تو کیا ضروری ہے ہر مرتبہ اپنی کم عقلی کا ثبوت دینا۔ آپ کو کیا معلوم آپ کن مسائل سے دوچار ہیں؟ آپ کے مسائل کو ہم مردوں سے بہتر کون سمجھ سکتا ہے۔ سو ہم آپ کو بتائیں گے کہ آپ کے مسائل کیا ہیں۔ آپ کو کیا حقوق ملنے چاہییں، اس کا تعیّن بھی ہم سے بہتر کون کر سکتا ہے؟

Read more

جنگ چاہیے جناب۔ جنگ

جنگ کے اس ماحول میں امن و سلامتی کی باتیں کس قدر لایعنی معلوم ہوتی ہیں۔ مگر سرحد کے دونوں جانب ایسے احمق موجود ہیں جو یہ بے وقت کی راگنی گاتے نظر آتے ہیں۔ خدا خدا کر کے جنگ کا ماحول بنا ہے۔ کتنی تمنّا تھی جنگ کو اپنی ان آنکھوں سے دیکھنے کی۔ ہم سے پہلی نسل کس قدر خوش نصیب تھی کہ اسے دو جنگیں اپنی آنکھوں سے دیکھنے کا موقع ملا۔ ہم نے تو جب سے ہوش سنبھالا، صرف ان جنگوں کے واقعات سن کر ہی لہو گرمایا کیے۔

کتنے رشک سے اپنے بزرگوں کو دیکھا کرتے تھے۔ ایسا لگتا تھا کہ جنگ دیکھنے کی حسرت دل میں لیے ہی عمر بیت جائے گی۔ بڑھاپے میں اپنے بچوں اور پوتوں پوتیوں کو کیا منہ دکھائیں گے۔ لے دے کر ایک کارگل کی جنگ ہی ہمارے حصے میں آئی تھی۔ یہ بھی بھلا کیا خاک جنگ ہوئی کہ نہ تو شہری آبادی پر گولہ باری ہوئی، نہ بلیک آؤٹ کے سائرن بجے، نہ طیاروں کی زناٹے دار آوازیں فضا میں گونجیں اور نہ بھاگ کر خندقوں میں چھپنے کی نوبت آئی۔ اتنی ہومیو پیتھک قسم کی جنگ بھی کوئی جنگ ہوئی بھلا۔ ایسے میں اگر امید کی ایک کرن پھوٹی بھی تو لگے ان مردودوں کے پیٹ میں مروڑ اٹھنے لگے۔

Read more

سوشل میڈیا: کریک ڈاؤن کیوں ضروری ہے؟

ستم ظریفی یہ ہے کہ تحریکِ انصاف کی حکومت سوشل میڈیا سے خوف زدہ ہے۔ تحریکِ انصاف جس نے کہ سوشل میڈیا کو اپنی سیاسی جدوجہد کے دوران ایک موثر ہتھیار کے طور پر استعمال کیا، اور مخلف سیاسی جماعتوں کو اس قدر زک پہنچائی کہ یہ جماعتیں اپنے اپنے سوشل میڈیا سیل قائم کرنے…

Read more

اچھائی اور برائی کی پہچان: خالص پاکستانی، سادہ اور آزمودہ طریقے

خدا کا کرم ہے کہ ہمارے معاشرے میں حق و باطل کی پہچان آسان سے آسان تر ہوتی چلی جاتی ہے۔ مومن اور منافق کے مابین فرق واضح تر ہوتا چلا جاتا ہے۔ حب الوطنی اور غدّاری کے پیمانے متعیّن کر لیے گئے ہیں۔ دوست اور دشمن کی شناخت کرنا مشکل نہیں رہا۔ ایک سچا…

Read more

نیا وزیرِ اعظم اور اپوزیشن کی شر انگیزی

وزیرِاعظم کے انتخاب کا مرحلہ پایہء تکمیل کو پہنچا۔ حسبِ توقع عمران خان صاحب وزیرِاعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان منتخب ہو چکے ہیں۔ ان کی یہ کامیابی اپوزیشن جماعتوں سے اب تک ہضم نہیں ہو پارہی۔ نتیجتاً ان کی تقریر سے دوران ایسا ہنگامہ برپا کیا کہ خان صاحب کو صبروتحمّل کا دامن ہاتھ سے چھوڑتے…

Read more

تبدیلی بھی کنٹرول میں ہے

یقین مانیے تبدیلی بہت ضروری ہے۔ ایک طویل عرصے کا جمود عوام میں بے چینی پیدا کرتا ہے۔ عوام کو مطمئن رکھنے کے لیے تبدیلی آتی رہنی چاہیے۔ تبدیلی سے پیدا ہونے والی ہلچل نئی امیدوں کو جنم دیتی ہے۔ پرانے خوابوں کی تعبیر سے مایوس ہو جانے والی آنکھیں نئے سپنے سجانے لگتی ہیں۔…

Read more

نیا پاکستان، پرانے کاریگر اور روحانی خاتونِ اوّل

شہباز شریف کی مصلحت کوشی کسی کام نہ آئی۔ الیکشن میں عددی برتری حاصل کرنے کا خواب دیکھنے کی بجائے اگر وہ نوازشریف کے مزاحمتی بیانیے کا ساتھ دیتے تو شاید اپنی پارٹی کی عزّت کسی حد تک بچا پاتے۔ مرکز میں حکومت بنانا تو دور کی بات ہے، اب تو پنجاب کی صوبائی حکومت…

Read more

سر جی! حالات کنٹرول میں ہیں

سیاسیت کی گرم بازاری، الیکش کی گہما گہمی، بد امنی کے اندیشوں اور غیر تسّلی بخش معاشی صوتحال کے باوجود محبِّ وطن حلقوں کے لیے مژدہ ہے کہ اس وقت حالات مکمّل کنٹرول میں ہیں۔ عوام النّاس کے سیاسی شعور کی ناپختگی کو مدِّ نظر رکھتے ہوئے اس بات کا قوی امکان موجود تھا کہ…

Read more

بارے گدھے کا کچھ بیان ہو جائے

مبارک ہو کہ ہماری ملکی سیاست شیروں اور ٹائیگرز سے ہوتی گدھوں تک آن پہنچی۔ اس سے قبل کہ گدھوں کے میدانِ سیاست میں قدم رکھنے کو خوش آئند قرار دیا جاتا، کراچی میں ہونے والے واقعے نے گدھا برادری میں سراسیمگی کی لہر دوڑا دی ہے۔ گدھے اب تک حیران ہیں کہ یہ کون…

Read more
––>