ڈاکٹر کی ڈائری: چیف جسٹس نے غلط نہیں کہا

کرونا کی عالمگیر وبا اور موجودہ ملکی حالات پر ڈاکٹرز شاید واحد طبقہ ہیں جو مسلسل فکر مند اور پریشان ہیں کیونکہ حالات کی سنگینی کا درست ادراک بھی میڈیکل کے شعبہ سے وابستہ افراد ہی کر سکتے ہیں۔

پچھلے دو مہینے کے حالات اور واقعات کا سنجیدگی سے جائزہ لیا جائے تو تعلیمی اداروں کی بندش سے لاک ڈاؤن، پھر جزوی لاک ڈاؤن، پھر سمارٹ لاک ڈاؤن پھر مرحلہ وار اداروں اور کاروبار کا کھلنا اور پھر مکمل کاروباری اور سماجی سرگرمیوں کا آغاز۔

Read more

ڈاکٹر کی ڈائری۔ زندگی اور رشتے ناتے

زندگی کی رہ گزر جتنی طویل ہوتی ہے، تجربات، حالات واقعات، کی تعداد بھی اسی حساب سے ہوتی ہے۔

بہت کم لوگ دنیا میں ایسے ہوتے ہیں جو طویل عمر پائیں اور معمول کی رفتار سے زندگی کو گزار لیں، ورنہ عام طور پر لوگوں کی زندگی تغیر سے بھرپور ہوتی ہے، مدوجزر کے درمیان، یہ تغیر پرسکون اور خوشگوار حیرتوں کے ساتھ ساتھ جسمانی تکلیفوں، ذہنی الجھنوں اور جذباتی صدموں سے بھرپور ہوتے ہیں۔

Read more

ڈاکٹر کی ڈائری

محنت دیسی ماؤں کی فطرت میں کوٹ کوٹ کر بھری ہوتی ہے۔ ہم سب نے ہی گھروں میں اپنی ماؤں کو بے تحاشا کام کرتے دیکھا ہوا ہے۔ اور وقت گزرنے کے ساتھ یہ خیال بھی پختہ ہوتا جاتا ہے کہ اکثر انتہائی ضروری سمجھے جانے والے تہایت محنت طلب کام بالکل غیر ضروری تھے۔ یا کم…

Read more

سندھی ڈاکٹر کی ڈائری

پچھلے کچھ عرصے سے مسلسل اندرون سندھ سے نوعمر ہندو بچیوں کے جبراً قبول اسلام اور مسلم لڑکوں سے شادیوں کی خبریں گردش میں رہی ہیں۔ میرا تعلق اندرون سندھ سے ہے بچپن کا بڑا حصہ ہندو سہیلیوں کے ساتھ کھیلتے کودتے گزرا، پھر میڈیکل کالج میں کتنے ہی ہندو کلاس فیلوز لڑکے لڑکیاں جن…

Read more

ڈاکٹر کی ڈائری۔ ٹی وی شو میں بچوں کا استحصال

معاشرے کو بگاڑ کی طرف ڈالنے والے راستے انجانے نہیں ہوتے، بلکہ بہت دیکھ بھال کر، سوچ سمجھ کر، روایتوں کو تبدیل کیا جاتا ہے۔ کوئی دور تھا پی ٹی وی کا سنہرا دور، معاشرتی روایتوں سے بھر پور پروگرام، مشرقی حسن اور ریتی رواجوں سے مزین ڈرامے اور تفریحی پروگرام۔ معین اختر اورطارق عزیز…

Read more

ڈاکٹر کی ڈائری: خدا نے مجھے ہر روپ میں بہترین مردوں سے نوازا

ایک ایسا معاشرہ جہاں ہر وقت عورت پر ظلم، جبر کی کہانیاں منظر عام پر آ رہی ہوں، جہاں کی ہر عورت اعلٰی تعلیم یافتہ اور انتہائی پسماندہ بھی۔ کیا سیاستدان، کیا بیوروکریٹ، کیا پروفیسر، کیا سرکاری پرائیوٹ نوکریوں میں افسر یا ماتحت، کیا اسٹوڈنٹ، کیا خاتون خانہ اور کیا گھر میں کام کرنے والی…

Read more

ڈاکٹر کی ڈائری

میرے ایک کولیگ، الائیڈ میڈیسن میں کوئی ڈپلومہ کر کے، ایک نیک نام سرکاری کیرئیر گزار کر ریٹائرڈ ہو کر پرائیویٹ میڈیکل کالج میں آ گئے۔ جاب کے ساتھ شام میں اپنی سالوں سے قائم جی پی ٹائپ کلینک کرتے، 61 سال کی عمر میں اچانک بیمار ہوئے، پے در پے ٹیسٹ اور مسائل کے بعد رینل فیلیر، وینٹی لیٹر اور پھر خالق حقیقی سے جا ملے۔

بیشک موت برحق ہے اور ہر ذی روح کو آنی ہے۔ ایک بیٹی میرڈ، بیٹا پرائیویٹ یونیورسٹی میں انجینرنگ اورچھوٹی بیٹی پرائیویٹ کالج میں میڈیکل اسٹوڈنٹ۔ ڈاکٹرزکا ایک مسئلہ یہ بھی ہے کہ آسودگی نہ ہونے، پوسٹ گریجویشن، جیسے مسائل کی وجہ سے شادیوں میں تاخیر اور ریٹائرمنٹ کی عمر تک بچے تعلیم سے فارغ نہیں ہو پاتے۔

Read more