صلا ح الدین منہ مت چڑاؤ

اے صلاح الدین! تم منہ کے چڑا رہے ہو ان بینکوں کو جو قاتل مسیحا ہیں جو اربوں روپے کے قرضے تو معاف کر سکتا ہے مگر ہزاروں روپے والے نہیں۔ تمھیں پتہ ہے صلاح الدین قومی روزناموں میں ایک دن پورے صفحے کا اشتہار چھپا تھا اس میں ان لوگوں کے نام تھے جو…

Read more

کردار کشی اور گالی کی سیاست

سیاسی یتیم تو اپنے دلاتل میں جان ڈالنے کے لئے عورتوں کی کردارکشی کا سہارا لیتے ہیں۔ ہماری سیاسی تاریخ بھی اور غیر سیاسی تاریخ بھی ایسے مجرب نسخوں سے بھری پڑی ہے کہ جہاں آپ کی کسی مضبوط عورت کا کچھ نہیں بگاڑ سکے وہاں اس کی کردار کشی کر دیں آپ کا پلڑہ…

Read more

ہم لبرل ہیں

عورت مارچ نے تو گویا آگ لگادی ہے معاشرے کے چند گروہ جن الفاظ میں ان عورتوں کو یاد کر رہے ہیں مانو لعن طعن کی ڈگری حاصل کر کے آئے ہوں کون سی گالی ہے جو ان کے توشہ خانے میں موجود نہیں اگر الفاظ کے ذریعے ریپ کیا جاتا تو شاید یہ ریپ تاریخ میں سب سے بڑی تعداد میں عورتوں کے ریپ کے طور پر یاد رکھا جاتا۔ مگر حیرت ہے اس سائبر کرائمز کے قانون پر جسے چند افراد کی شان میں لکھے گئے جملے تو نظر آجاتے ہیں اور جن کی بنیاد پر وہ لوگوں کو اٹھا کر بھی لے جاتے ہیں مگر اس معاملے کو ایسے نظرانداز کرتے رہے جیسے یہ کسی اور ملک کے بسنے والوں کی بات ہورہی ہو

Read more