کیا پھپھو واقعی بہت بری ہوتی ہے؟

”تم زیادہ پھپھو بننے کی کوشش نہ کرو“۔
یہ وہ جملہ ہے جو ہمارے ارد گرد بے جا روک ٹوک اور نکتہ چینی کرنے والے فرد کو خاموش کرانے کے لیے عام بولا جانے لگا ہے۔ چاہے غیر ضروری تنقید کرنے والا فرد کوئی مرد ہی کیوں نہ ہو، اسے تشبیہ پھپھو سے ہی دی جاتی ہے۔ حتی کہ قومی یا بین الاقوامی معاملات میں بھی کوئی بڑی شخصیت مسلسل ناراضگی اور ہٹ دھرمی پر مبنی رویہ دکھائے تو اسے بھی سوشل میڈیا پر اکثر پھپھو کے خطاب سے ہی نوازا جاتا ہے۔

Read more

ہم ایک بد تہذیب قوم ہیں

ہم ایک بد تہذیب قوم ہیں۔ ہمیں یہ بات مان لینی چاہیے۔ ماننا اس لئے ضروری ہے کہ خامی دور کرنے سے پہلے خامی کو تسلیم کرنا پڑتا ہے۔

رقم نکلوانے کے لیے نصب کسی بھی آٹو میٹڈ ٹیلر مشین (اے ٹی ایم) کے کیبن میں جائیں آپ کو اس معاشرے میں بنیادی آداب کا معیار زمین پر پڑا مل جائے گا۔ بستر میں لیٹے ہوئے پورے اطمینان سے موبائل فون پر ”راستے میں ہوں، بس پانچ منٹ میں پہنچ جاوں گا“ کہہ دینا ہمارے لیے معمولی بات ہے۔

Read more

دس سالہ چیلنج کا عالمی بخار

دنیا بھر کے سوشل میڈیا پر آج کل ”دس سالہ چیلنج“ کے نام سے ایک نئے رجحان کا بہت چرچا ہے۔ اس سادہ سے چیلنج میں صارف اپنی تازہ ترین اور دس سال پرانی تصاویر کا موازنہ پیش کرتا ہے اور اس کے آن لائن حلقہ احباب میں شامل لوگ ان تصاویر کو لائک کرتے…

Read more

بانجھ نسلیں

کسی بھی جگہ جہاں چند عمر رسیدہ یا ادھیڑ عمر افراد کی محفل جمی ہو نئی نسل ضرور زیر عتاب آتی ہے۔ کوئی نوجوانوں کی آرام طلبی پر تنقید کرتا ہے اور کوئی ان میں بڑھتی ہوئی بے راہ روی پر فکرمند دکھائی دیتا ہے۔ کسی کو طالب علموں کی بے ادبی اور گستاخی کا گلہ ہوتا ہے اور کوئی ان کی دین سے دوری کا رونا روتا ہے۔

ایسی گفتگو کے دوران محفل میں موجود بزرگ اپنی جوانی اور اپنے زمانے کی ایسی ایسی خوبیاں بھی گنواتے ہیں کہ انسان سوچتا ہے خدائے بزرگ و برتر نے دنیا میں ایسی بھولی بھالی ہستیوں کا مزید نزول آخر موقوف کیوں کر دیا ہے۔

Read more

پاکستان کی کِشو بائی ”سو با اثرخواتین“ کی فہرست میں شامل

بلند سوچ، وسیع حوصلہ اور گہرے احساس کی مالک کِشو بائی تھر کے بے رحم صحرا کی باسی ہیں۔ جس دھرتی پہ رہنے والوں کے لیے پیاس کی شدت اور خوراک کی کمی سے مر جانا معمول کی بات ہو۔ جہاں عام سی بیماریوں کا علاج بھی موت کی صورت ملتا ہو اور جہاں کے…

Read more

بیٹی سے نجات کا نادر نسخہ

دنیا کے ہر خطے میں بسنے والے نوجوانوں کو مختلف قسم کے مسائل کا سامنا رہتا ہے، تاہم ہمارے معاشرے میں نوجوان نسل بالخصوص لڑکیوں کو درپیش مسائل کی نوعیت پوری دنیا سے الگ ہے۔ یہاں انھیں تعلیم، شعور اور ترقی کے یکساں مواقع کے لیے جدوجہد کے ساتھ ساتھ اپنے وجود سے جڑے "بوجھ"…

Read more

کیا عمران خان کھوٹے سکوں سے نیا پاکستان بنا سکتے ہیں؟

عمران خان کا دعوی ہے کہ وہ بے اصول سیاست کی گرد سے دھندلائے ہوئے مفاد پرست چہروں کی مدد سے اس ملک میں تبدیلی لے آئیں گی۔ ایسا کیسے ہو گا؟ تحریک انصاف کے چیئرمین کی کرشماتی شخصیت کے سحر میں گرفتار کسی بھی نوجوان سے یہ سوال پوچھیں تو جواب آتا ہے کہ…

Read more

امت مسلمہ کے تصور کا ظالمانہ استعمال

مسلم اُمّہ کا جو خوشگوار تصور اسلامی تعلیمات میں ہمیں ملتا ہے اسے ہماری مذہبی سیاسی جماعتوں نے ایک بوجھ بنا دیا ہے۔ ایسا بوجھ جس کے تلے پہلے برصغیر اور پھر پاکستان کے مسلمان مسلسل پستے آئے ہیں۔ پیسنے والوں کے تو خیر اپنے مفادات تھے لیکن پسنے والوں نے جس رضامندی سے اپنا…

Read more

ہمارے خاندانی نظام کی حقیقت

"آپ کے یہاں خاندان کا ادارہ اس لئے مضبوط ہے کیونکہ آپ کے ریاستی ادارے کمزور ہیں" یہ جملہ تین سال پہلے بین الاقوامی امور کے ماہر امریکی پروفیسر سٹیفن پی کوہن نے ایک مباحثے میں ادا کیا اور میں آج تک اس جملے کی گہرائی میں الجھا ہوا ہوں۔ دو ہزار پندرہ میں ابھرتے…

Read more

بیٹیوں کو بوجھ سمجھنا چھوڑ دیجیے

بابا بابا ادھر دیکھیں ۔ میں اس وقت گھر کے قریب ایک پارک میں بیٹھا کتاب پڑھ رہا تھا جب میری بیٹی کا یہ جملہ مجھے سنائی دیا۔ میں نے توجہ کتاب سے ہٹا کر اس کی جانب منتقل کی تو دیکھا کہ وہ پارک میں گرنے والے املتاس کے بہت سے پیلے پھولوں کو…

Read more