مجھے ڈر لگتا ہے

مجھے بچپن سے ڈرلگتا ہے۔ اندھیرے سے، سیاہ سائوں سے۔۔۔ بچپن کی کہانیوں کے خوفناک کرداروں سے۔۔۔ یاد ہے جب شام کے سائے ڈھلتے تو میرے آبائی گھر لکھپت بھون میں چارپائیاں ڈل جاتیں اور نانی کہانی سناتیں۔ جب ہمارے شہر لاڑکانہ پر مصیبت آتی تو ہزاروں برس قدیم موہنجودڑو کے کھنڈرات سے بھوت پریت…

Read more

اسلام آباد میں گردش کرنے والی چند سازشی تھیوریاں

ہوٹل لابی سے سیاسی، غیرسیاسی لوگ، اینکرز، صحافی، اب کوہسار مارکیٹ پر مجمع لگاتے ہیں۔ گورے اور گوریاں گھومتے نظرآتے ہیں۔ فیشن ایبل علاقہ، ٹیبل ٹاک اور اسٹریٹ ون کیفے کھلے میں بیٹھنا۔ ہوٹل لابی سے کوہسار مارکیٹ، سازشی تھیوریاں پھر سے لبوں پر۔ اظہار کے لئے وہی کندھوں پر ہاتھ رکھنے والے اشارے۔ عمران خان حکومت سے ”حقیقی لوگوں“ کا دل اٹھتا جارہا ہے، گورننس میں غیر فعال معیشت کے بے لگام گھوڑے کو قابو کرنے میں ناکامی، پنجاب میں بزدار کی تعیناتی اور کارکردگی پر تحفظات۔ نومبر میں بڑی اہم تبدیلیاں، غرض یہ کہ سازشی تھیوریاں عمران خان کے آٹھ ماہ کے اقتدار کے بعد ہی عروج پر۔

اس سازشی شہر میں سازشی تھیوریوں پر کان دھرو تو لگتا ہے کہ الٹی گنتی شروع اور اگر ان سنی کردو تو لوگ آپ کو صحافی ماننے کے لئے تیار نہیں ہوتے۔ چلیں اسی سیاسی دیگ میں جھانگتے ہیں اور اصل بوٹیاں تلاش کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔

Read more

بھٹو خاندان: سیاست سے سولی تک

میرا بچپن ذوالفقار علی بھٹو کی کرشماتی شخصیت کی یاداشتوں سے بھرا پڑا ہے۔ موہنجوداڑو ایئر پورٹ پر شہنشاہِ ایران اور ملکہ فرح دیبا کو گلدستہ پیش کرنے کیلئے میرا چنا جانا، ریڈ کارپٹ پر غلط جانب کھڑے ہونا اور بھٹو صاحب کا مجھے وہاں سے اٹھا کر صحیح جگہ پر کھڑا کرنا۔ پھر ستتر…

Read more

چھوٹا اسکول، بڑا خواب

سامنے ملک کے بڑے سیاسی بھٹو خاندان کی رہائش گاہ۔ المرتضیٰ۔ عقب میں وسیع اسٹیڈیم۔ وسط میں میرا سرکاری اسکول۔ میونسپل ہائی اسکول۔ آبائی شہر۔ قدیم شہر۔ لاڑکانہ۔ سویکارنو ہوں یا یاسرعرفات۔ شنہشاہ ایران ہوں یا معمر قذافی۔ یہ عالمی رہنماء ہزاروں برس کی تہذیب موہن جودڑو کے کھنڈرات کے قریب واقع ایئرپورٹ سے ہوتے…

Read more

سانپ اور سیڑھی کا کھیل

نوازشریف آج کل مزاحمتی لیڈر سمجھے جا رہے ہیں۔ اسٹیبلشمنٹ کے خلاف بیانیہ ہو یا عدلیہ کے خلاف بیانیہ ہو، وہ سمجھتے ہیں ان کے خلاف ملٹری اسٹیبلشمنٹ اور عدلیہ سازشی جال بن رہی ہے۔ ووٹ کو عزت دو کا نعرہ انتخابی نعرہ بن چکا ہے۔ یعنی وہ پارلیمانی بالادستی اور سویلین کی بالادستی چاہتے…

Read more