وطن اور محبت کا شاعر — مست توکلی

شاہ محمد مری کہتا ہے کہ روزِ قیامت اس کے داہنے ہاتھ پہ اس کی مست توکلی پہ لکھی کتاب ہو گی۔ وہ سچ کہتا ہے کہ یہ کتاب خود شاہ محمد مری کے جنون کی داستان ہے۔ یہ اس کے نامہ اعمال کی سب سے قیمتی متاع ہے۔ اس کتاب کی ترتیب میں ایک…

Read more

ادبی میلے اور بھتہ خوری

دو سال پہلے میرے انتہائی پیارے دوست اور اسلام آباد میں مادری زبانوں کا ادبی میلہ سجانے والے نیاز ندیم نے فون کیا کہ اس مرتبہ ہم آپ کی شاعری کی کتاب کا مھورت اپنے میلے میں کرانا چاہتے ہیں میرا پہلا سوال تھا کیا آپ تھر میں کوئلہ نکالنے والی کمپنی اینگرو یا تھر…

Read more

کیسوبا کے کارونجھر کا سرمایہ دار کمپنیوں سے سودا کس نے کیا؟

کارونجھر کو پہلی نظر میں دیکھتے ہی سرائیکی زباں کے لیجنڈ شاعر رفعت عباس کے منہ سے بے اختیار نکل گیا کہ ”یہ پہاڑ تو نہیں ہے یہ تو کوئی تہذیب ہے جو پتھرا گئی ہے ہر پتھر ایک حسیں مورت کی طرح ہے“ واقع میں کارونجھر عام پہاڑوں سے مختلف اور دنیا کے حسیں…

Read more

کارونجھر؛ ہنستا و گنگناتا پہاڑ

تھر کے دلکش، پرسوز اور سر سبز صحرا اور گھنے رن کچھ کے سنگم پر موجود برسوں پرانے بے حد حسیں کارونجھر کے پہاڑ سے گرینائیٹ اور دیگر قیمتی ذخائر لینے کے لئے سرمائیدار کمپنیاں لیز لے کے پہاڑوں کو کاٹ رہی ہیں۔ جس کے خلاف مقامی شاعر، لکھاری، صحافی اور سماجی لوگون کے ساتھ…

Read more

مقامی آدمی کا موقف اور رفعت عباس

کبھی کبھار تاریخ میں بڑے بڑے سپہ سالار گم ہو جاتے ہیں، شکست فاش سے دوچار ہوجاتے ہیں، لیکن کسی طوائف کے گھر کی دیوار پر جلتا ہوا چراغ صدیوں تک روشن رہتا ہے، وہ انکار کی علامت بن کر قائم رہتا ہے اور قومیں اسی طوائف کے انکار پر فخر کرتی رہتی ہیں۔ ایسا…

Read more