ہر قبیلے کا اپنا بت

ناک کی درمیانی ہڈی سے لے کر بالائی ہونٹ تک زخم کا نشان تھا! صاف نظر آ رہا تھا کہ کسی وقت چہرے کے اس حصّے کو چِیرا گیا تھا۔ اُس سیاہ فام کلاس فیلو سے، جو یورپ میں ہم جماعت تھا، پوچھا کہ یہ کیسا نشان ہے؟ اس نے بتایا کہ یہ قبیلے کی…

Read more

بیماری پرانی ہے مگر مہلک نہیں

سوال دو روپے کا نہیں، سوال یہ ہے کہ ہمارا کوئی ضابطہ، کوئی قانون، کوئی اصول ہے یا نہیں؟بِل جمع کرانے ملازم کو بینک بھیجا تو بتایا کہ ایک سو بارہ روپے واپس ملیں گے۔ وہ ایک سو دس روپے لایا۔ پوچھنے پر لاپروائی سے کہا کہ دو روپے اس کے پاس نہیں تھے۔ ملازم…

Read more

اے طائرِ لا ہوتی ! تو کہاں ہوتا ہے؟

لاہور سے سوا چھ ہزار کلو میٹر دور‘ لندن میں مسلم لیگ نون کا اجلاس منعقد ہوا ہے۔ لاہور میں درجۂ حرارت سولہ اور لندن میں نو ہے! اقبالؔ نے کہا تھا ؎ زمستانی ہوا میں گرچہ تھی شمشیر کی تیزی نہ چھوٹے مجھ سے لندن میں بھی آدابِ سحر خیزی تاہم پارٹی لندن کی…

Read more

تیری مجبوریاں درست؛ مگر

یہ باغ ہرا رہے گا۔ یہ حُسن دامنِ دل کھینچتا رہے گا۔ یہ ملک سلامت رہے گا!
یہ چراغ بجھنے کے لیے نہیں جلا۔ بہت سے پھونکیں مار چکے! اپنی سی کوشش بہت سوں نے کی۔ مگر خلّاقِ عالم نے اس کی حفاظت کی۔ وہ حفاظت کرتا رہے گا! جنوبی ایشیا کے مسلمانوں کی یہ شناخت ہے اور پناہ گاہ۔

Read more

صرف زمین نہیں، ملکیت بھی گردش میں ہے

پجارو تھی یا لینڈ کروزر! جو بھی تھی فاخرہ سواری تھی! اور بالکل نئی نویلی! نئی نویلی گاڑی رواں دواں تھی، قصبوں، قریوں اور بستیوں کے درمیان، فراٹے بھرتی، ڈرائیور چلا رہا تھا، مالک گاڑی کا نشست پر یوں بیٹھا تھا جیسے گاڑی ہی کا نہیں، کرۂ ارض کا بھی مالک وہی ہو، لباس اس…

Read more

اور اب ریلوے!!

کھانا آپ نے کرسی پر رکھ دیا اور خود میز پر بیٹھ گئے۔ حجام کے پاس جوتے مرمت کرانے چلے گئے۔ انگریزوں کے زمانے میں والیانِ ریاست اسی طرح کے کام کرتے تھے۔ چیف انجینئر رخصت پر گیا تو اس کی جگہ پر چیف میڈیکل افسر کو تعینات کر دیا۔ چیف انجینئر واپس آیا تو…

Read more

سانحۂ ناروے…ایک پہلو یہ بھی ہے

ناروے میں قرآن پاک کے مقدس نسخے کو جلانے کی جو کوشش کی گئی، اس پر، اُسی شہر میں رہنے والے ایک صاحب محمد الیاس نے صورتِ حال پر روشنی ڈالی ہے۔ ہم اس سے اتفاق کریں یا نہ کریں، مگر بات سُن لینی چاہیے۔ الیاس صاحب رقم طراز ہیں: ’’ناروے کے شہر کرسٹین سینڈ…

Read more

اُٹھ! بھارت کے مسلمان! اُٹھ

نام تو اس کا رمضان خان ہے مگر وہ ”مُنّا ماسٹر“ کہلانا پسند کرتا ہے۔ مسلمان ہے۔ ساتھ ہی آرتی میں بھی شریک ہوتا ہے۔ ہارمونیم بجاتے ہوئے بھجن بھی گاتا ہے۔ گؤشالہ میں ایک ایک گائے کو اپنے ہاتھ سے کھلاتا ہے۔ ”گائے سیوا“ سرانجام دیتا ہے۔ مندر میں جاتا ہے۔ کرشن بھگتی کرتا…

Read more

اور اب آگرہ بھی بھارتی انتہاپسندی کی زد میں

”یہ بالکل ہو جانے والی بات ہے۔ یہ نہ سمجھیے گا کہ جو ہسپانیہ میں ہوا تھا اور جو بوسنیا میں ہو رہا ہے وہ یہاں (بھارت) میں نہیں ہو سکتا اس لئے کہ بھارت کے ہندو کا یہ Declared Objectiveہے کہ اس سرزمین کو پاک کرنا ہے۔ یہ نجس ہیں۔ یہ ملیچھ ہے مسلمان۔…

Read more

دو پاکستان

جاپان کا دارالحکومت ٹوکیو، اٹھ کر ہزاروں میل کا سفر کر کے، برازیل کا شہر بن سکتا ہے۔ ہمالیہ صحرائے عرب میں منتقل ہو سکتا ہے۔ یورپ اور امریکہ کے درمیان حائل بحراوقیانوس، شمالی چین اور جنوبی منگولیا میں بچھے ہوئے صحرائے گوبی کو نگل سکتا ہے۔ ٹرمپ کا امریکہ، سری لنکا کی کالونی بن…

Read more