جہاں بیٹی ماں کی کوزہ گری کرتی ہے

ایک عجیب سے خلجان میں مبتلا ہیں ہم! سمجھ ہی نہیں پاتے کہ اس سے ہمارا رشتہ ہے کیا؟ ایسا کب ہوا؟ احساس میں تبدیلی کب آئی،کچھ خبر نہیں۔ گزرے برسوں میں پلٹ کے دیکھتی ہوں تو احساس ہوتا ہے کہ بہت نامعلوم طور پہ ہم دونوں نے ایک دوسرے سے اپنی جگہ بدلی ہے…

Read more

عورت کے خلاف جرم کے وکیل ۔۔۔ خود پوشیدہ یا ممکنہ مجرم ہیں

کسی خیر خواہ نے زہرخند مسکراہٹ کے ساتھ استہزائیہ جملہ اچھالا ہے،  "ہمارے ملک کی ہر عورت کاری، ونی یا سوارہ کا شکار نہیں ہوتی۔ہمارے ملک کی ہر عورت ریپ بھی نہیں ہوتی، ہمارے ملک کی ہر عورت کی قران سے شادی بھی نہیں ہوتی۔پھر اتنا واویلا کاہے کو؟ اتنا رونا دھونا کیوں؟” نہہیں معلوم…

Read more

گھر کا راستہ بھول جانے والے کا جنم دن

میری تمہاری یہی کہانی ہے! ہمیں گوجرانوالہ سے محبت سی ہو گئی ہے، شاید کہ پرکھوں کا تعلق اس مٹی سے تھا! یہ وجہ ممکنات میں ہو سکتی ہے لیکن ہم سے پوچھیے تو اس محبت کا تار میرا جی سے جا ملتا ہے، جی وہی میرا سین والے دیوانے فرزانے میرا جی! میرا جی…

Read more

میں (بھی) کرنل کی بیوی ہوں

'میں کرنل کی بیوی ہوں' نامی وائرل ہوتا وڈیو کلپ دیکھ کے دل اندر ہی اندر کلس رہا ہے۔ رہے نا ہم پھسڈی کے پھسڈی! مشہور ہونے کا ایک اور موقع گنوا دیا۔ گھر میں ایک چھوڑ، تین تین کرنل موجود اور ہم اس طنطنے سے بات کرنا سیکھ ہی نہ سکے کہ آج ہماری…

Read more

ٹوکیو کے چھوٹے کیفے میں محبت کی آنچ پر پکا شوارمہ

جاپانی رسم الخط میں لکھے تمام بورڈز میں واحد اس دوکان کا بورڈ تھا جو انگریزی میں لکھا گیا تھا۔ کاماکورا کا عظیم بدھا دیکھنے کے بعد شکم کےاحتجاج پہ ہم اس دکان کی طرف کھنچے چلے جا رہے تھے جہاں کچھ گھنٹے قبل شوارمہ کی خوشبو نے ڈاکٹر فرح کے پاؤں میں بیڑی ڈالنے…

Read more

وبا کے دنوں میں عید کی خریداری

کورونا کی ستم کاریاں اپنی جگہ مگر عید کا تصور دل کو بالکل ویسے ہی گدگداتاہے جیسے ہم بچپن میں بے قراری سے عید کا انتظار کیا کرتے تھے۔ ہفتوں پہلے خریداری شروع ہوتی، رنگ برنگ کپڑے، ہم رنگ جوتے، پرس، کلپ اور جانے کیا کچھ۔ چاند رات گزرنے میں ہی نہ آتی اور اس…

Read more

کاما کورا میں بدھ کے مجسمے تلے رڈ یارڈ کپلنگ سے ملاقات

وہ بھی وہیں کھڑا تھا، جہاں ہم تھے! ہماری طرح ہی مبہوت، بدھا کے اس عظیم مجسمے کو دیکھتے ہوئے! درمیان میں کچھ فاصلہ تھا، کچھ زیادہ نہیں، صرف ایک سو پچیس برس! ہم کاما کورا میں تھے! ٹیکسلا سے ہمارا بندھن بہت سی یادوں سے بندھا ہے۔ بچپن میں ٹیکسلا میوزیم پہلی دفعہ سکول…

Read more

فحش نگار منٹو کی سالگرہ

کہتے ہیں وہ فحش نگار تھا! بات کچھ سمجھ میں آتی نہیں! کیا جو اس نے لکھا وہ ہوا نہیں؟ یا جو کچھ ہوا وہ لکھا نہیں؟ کیوں تھا آخر وہ ایسا؟ ایک معما، اپنے محبت کرنے والوں کے لئے بھی، اور نفرت کرنے والوں کے لئے بھی! کہتے ہیں، کثرت شراب نوشی نے اس…

Read more

آج ہمارا دن ہے!

دل میں کوئی چٹکی بھرتا ہے، کیا واقعی تمہارا دن ہے؟ تمہارا کیا کمال؟ یہ سہرا تو کسی اور کے سر سجتا ہے جس نے تمہیں اس سنگھاسن پہ لا بٹھایا۔ احسان اس ننھی پری کا جو پچیس برس قبل بنا کسی چاہت، خواہش اور تگ و دو کے ہمارے بطن میں آ ٹھہری۔ نتیجہ…

Read more

مولانا ضمیر اختر نقوی عرف ’یہ تو ہو گا‘

رہ رہ کے تاؤ آ رہا ہے اپنے آپ پہ! تیس برس ہو گئے ڈاکٹر بنے، پچیس برس ہو گئے گائنی میں کام کرتے! دنیا کی مختلف یونیورسٹیوں سے سائنس میں ڈگریاں حاصل کر ڈالیں، ہزاروں مریضوں کا علاج کر لیا، لیکن پھر بھی ہم نالائق کے نالائق ہی ٹھہرے! موئے انگریزوں کی کتابیں پڑھ…

Read more