ڈئیر زندگی جیسی فلمیں ہمیں کیا سکھاتی ہیں

صبح ہوئی۔ آپ اٹھے۔ دن کے معمولات کو ترتیب دیا اور ان میں جڑ گئے۔ ایک تھکا دینے والا طویل دن۔ الجھن بھری شام۔ ڈھلتی رات۔ تھکاوٹ اور نیند۔ یا دوسری طرف ایک متبادل صبح۔ آپ اٹھے۔ دن کے بے ترتیب کام۔ فراغت بھرا دن۔ آوارہ شام۔ گہری رات، کچھ بیداری اور پھر نیند۔ زندگی…

Read more

وہ جو اپنے ہی وطن میں پردیس کاٹ رہے ہیں

یہ اپنے، اپنے آبائی شہروں سے آنے والے چار لوگوں کا قافلہ ہے جن کی منزل ایک ہے۔ یہ سب لوگ روزگار کی تلاش میں اپنے آباد گھروں کو چھوڑ کر بظاہر دشت میں نکل آئے ہیں۔ انہوں نے اعلیٰ تعلیم حاصل کی۔ سب کے سب گریجویٹس ہیں لیکن اپنے علاقوں میں نوکریاں نہ ملنے پر گھروں سے سینکڑوں میل دور روزی، روٹی کی تلاش میں سرکرداں ہیں۔

معیز 24 سالہ جواں، چاک و چوبند لڑکا ہے جو ننکانہ صاحب سے ہے۔ بظاہر مذہبی دکھتا ہے لیکن ملتے، جلتے خیالات کا مالک ہے۔ حال ہی میں اس کی نئی، نئی شادی ہوئی ہے۔ گھر میں سب سے بڑا ہے۔ تین چھوٹی بہنیں اور دو بھائی۔ باپ کسی زمانے میں ترکھان تھا لیکن اب بوڑھا ہو چکا ہے لہذا ترکھان نہیں بن سکتا۔ معیز کے سامنے زندگی نے ہمیشہ دو ہی آپشن رکھے۔ میٹرک پھر مزید پڑھائی یا کام، انٹرمیڈیٹ پھر مزید پڑھائی یا کام، گریجویشن پھر مزید پڑھائی یا کام، ماسٹر اور پھر مزید پڑھائی یا کام۔

Read more

مینوں لے چلو اوئے لاہور

2017 ء کے دوران انڈین پنجابی سینما سے ریلیز ہونے والی فلم ”لاہوریے“ کے ایک مشہور ڈائیلاگ ”او مینوں لے چلو اوئے لاہور“ کو لکھتے وقت فلم کے ڈائریکٹر و لکھت امبردیپ سنگھ نے شاید یہ نہیں سوچا ہوگا کہ ان کا لکھا یہ ڈائیلاگ بٹوارے کے درد کی عکاسی کرنے کے ساتھ ساتھ موجودہ دور کی کسی کہانی میں بھی نوحے کا کام کرسکتا ہے۔

Read more

باوفا عاشق، بے وفا شوہر اور اضافی روٹیاں

یہ بات تب شروع ہوتی ہے جب ایک دن سکول جاتے ہوئے اچانک سے وہ اس کے سامنے آگیا تھا۔ وہ ہچکچائی، ڈری اور سہمی نظروں سے اسے دیکھ رہی تھی۔ اس نے آہستہ سے ایک کاغذ کا ٹکڑا اس کے ہاتھ میں تھما دیا۔ ٹکڑا پکڑنے کی دیر تھی کہ وہ دیکھتے ہی دیکھتے گلی کی آخری نکڑ سے یوں اوجھل ہوا کہ جیسے چند منٹ پہلے وہ یہاں موجود ہی نہیں تھا۔عنبرین کو جنید ایک آنکھ نہیں بھاتا تھا حالانکہ وہ اس کے چچا کا لڑکا تھا لیکن اس کی کچھ عادتیں تھی ہی ایسی۔ وہ عنبرین کو ہمیشہ یہ باور کرانے کی کوشش کرتا تھا کہ وہ اس کی معشوقہ ہے اور اس کو اسی کے ساتھ شادی کرنی ہے۔ زبانی باتوں تک تو یہ باتیں عنبرین بھی سہتی آرہی تھی لیکن آج یوں جنید کی طرف سے بیچ رستے رک کر رقعہ پکڑانے والی حرکت پر وہ تھوڑا ڈر گئی تھی۔

Read more

سسی آج بھی روتی ہے

اتوار کی چھٹی ان دفتری حضرات کے لیے کسی نعمت سے کم نہیں ہوتی جو چھوٹے شہروں سے ہوتے ہیں اور اپنے گھروں سے دور کسی بڑے شہر میں روزی، روٹی کی خاطر تگ و دو میں مصروف رہتے ہیں۔ انہیں کم از کم ایک موقع میسر آجاتا ہے کہ وہ اپنے گھروں کو لوٹ سکیں۔ اپنی فیملی، اپنے دوستوں کے ساتھ ایک دن گزار سکیں اور اگر اس ایک چھٹی کے ساتھ مزید ایک اور رخصت عنایت ہو جائے تو مزہ دوبالا ہو جاتا ہے۔ اس دفعہ بھی ہفتے کے آخر میں دو چھٹیاں اکٹھی آرہی تھیں اور میں نے سوچ رکھا تھا کہ جمعہ کی شام ملتان کو خیرباد کہہ کے فوری گھر کے لیے رخت سفر باندھا جائے گا۔

Read more

ایک جنگ کے بعد کا خواب

میں کہیں بچوں کو سکول چھوڑنے میں لیٹ تو نہیں ہوگیا تھا کیونکہ میری آنکھیں کھلی تھی لیکن آنکھوں کے سامنے اندھیرا تھا جیسے کمرے کی لائٹ ابھی تک آف ہو اور پردے نے کھڑکی کو مکمل ڈھانپ رکھا ہو۔ غنودگی تھی یا کچھ اور سمجھنا تھوڑا مشکل تھا لیکن آہستہ آہستہ کانوں نے کچھ آوازیں سنیں۔ سماعت نے جب دھیان دینا شروع کیا تو کچھ دھندلا منظر نظر آیا۔ کچھ لوگ ایک بھاری بھرکم پتھر کو ہٹانے کے لیے مدد پکار رہے تھے۔ شاید یہ وزنی پتھر ایک اور پتھر کے سہارے میرے اوپر تھا۔

آنکھیں جوں، جوں کھلتی جا رہی تھیں منظر تھوڑا واضح ہو رہا تھا۔ میں ایک کنکریٹ کے بڑے پتھر کے نیچے مٹی میں اٹی سانسوں سے آکسیجن کشید کر رہا تھا۔ ٹانگیں سن لیکن جسم کا باقی حصہ درد سے اتنا چور تھا کہ سمجھ نہیں پا رہا تھا، زیادہ تکلیف جسم کے کس حصے میں ہے۔ میرا سر اس قدر درد سے لبریز جیسے زمین کے ساتھ سلائی کر دیا گیا اور اسے اٹھانے کی کوششیں میں حرام مغز کی کھال کھینچتی محسوس ہو۔ یہ سب کیا تھا، ابھی بھی سمجھ نہیں آرہا تھا۔

Read more

میرے شہر کا ”پرانا شہر“۔

ہر شہر میں کئی ایسے علاقے ہوتے ہیں جو جدت کی نئی دنیا میں نہیں ڈھلتے، وہاں زندگی ہمیشہ سادہ رہتی ہے۔ وہاں کی گلیاں، در و دیوار، رنگ و نور، روشنیاں، شامیں، راتیں غرض ہر ایک چیز متغیراتی عمل کی اس دوڑ میں شامل ہونے سے دور ہوتی ہے جسے وہ مصنوعی سمجھتی ہے…

Read more

تیسری جنس کا انتم سنسکار

اس کے پیدا ہونے پر سب سے زیادہ غصہ اس کے باپ کو تھا جبکہ ماں کے پہلو میں لیٹی وہ ابھی بھی ماں کے پیار کا لمس محسوس کر رہی تھی۔ نرم گذار گالوں کو اپنے ہی نرم و ملائم ہاتھوں سے چھونے پر وہ اس نئی دنیا کو محسوس کرنے کی کوششوں میں تھی۔…

Read more

ایک ریہرسل روم کا احوال

یہ 12X10 کا ایک چھوٹا سا کمرہ ہے جس میں لگا ایک ٹن کا اے سی (AC)دن کے دس بجے اپنی 16 سولہ سینٹی گریڈ والی کولنگ سے یہاں آنے والے لوگوں کا مزاج ذرا ٹھنڈا رکھتا ہے لیکن پھر بھی کبھی کبھی دوپہر کے قریب سخت گرمی میں کمرے کے اندر کی ٹھنڈک ماند…

Read more

جب زمین انسانوں سے چھین لی گئی

2008ء میں ہالی ووڈ کی ایک مووی ریلیز ہوئی جس کا نام "The Day the earth stood still" تھا۔ اس فلم میں دنیا ختم ہونے کے چند مناظر دکھائے گئے اور دکھایا گیا کہ اس سیارے کا خاتمہ دوسرے تمام سیاروں کی مخلوقات ملکر کرنا چاہتی ہیں کیونکہ انہیں لگتا ہے کہ اس زمین نامی…

Read more