ہندو، سکھ اور مسیحی کب اپنے نام سے پکارے جائیں گے؟

1947 میں قائداعظم محمد علی جناح نے پہلی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے اقلیتوں کو برابر کا شہری قرار دیا۔ قائداعظم محمد علی جناح نے فرمایا، ”آپ آزاد ہیں۔ آپ آزاد ہیں اپنی م سجدوں میں جانے کے لیے اور ریاست پاکستان میں اپنی کسی بھی عبادت گاھ میں جانے کے لیے۔ آپ کا تعلق کسی بھی مذہب، ذات یا نسل سے ہو ریاست پاکستان کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں۔ “ گذشتہ برس کی مردم شماری کی تحت 207 ملین آبادی والی ملک میں 96 فیصد مسلمان، 1.59 فیصد عیسائی، 1.6 فیصد ہندو، 0.22 دیگر طبقات کے لوگ اور 0.07 فیصد باقی عقیدوں والے لوگ ہیں۔

Read more
––>