کرونا وائرس مریض کی دہریہ نرس اور مذہبی سسر

جب میں نے زہرا نقوی کا ’جو میری مخلص دوست ہی نہیں ایک ہمدرد سوشل سروس ورکر بھی ہیں‘ ’ہم سب‘ پر کالم پڑھا تو میرے دل میں ان تمام ڈاکٹروں ’نرسوں اور سوشل ورکروں کے لیے احترام اور عقیدت کے جذبات ابھرے جو اپنی جان اور صحت داؤ پر لگا کر بے گھر منشیات…

Read more

کیا آپ تنہائی کو عذاب سمجھتے ہیں؟

آج کل پوری دنیا وبا کے بحران سے گزر رہی ہے، عجب بیماری ہی جس کا علاج تنہائی ہے۔ آپ ماہر نفسیات ہیں یہ بات اچھی طرح سمجھتے ہیں کہ ”تنہائی“ بذات خود کتنی بیماریوں کی جڑ ہے۔ اس وبا کے معاشیات پر جو اثرات ہو رہے ہیں وہ الگ بحث ہے لیکن اس سے انسانی نفسیات پر جو اثرات ہو رہے ہیں ان سے نمٹنے کا راستہ کیا ہے؟

دنیا میں کئی طرح کے لوگ ہیں، قرنطینہ مختلف لوگوں پر مختلف طریقے سے اثر انداز ہو رہا ہے۔ کچھ لوگ اپنے ملک میں اپنے لوگوں کے درمیان ہیں۔ کچھ لوگ دیار غیر میں بالکل اکیلے ہیں اور کچھ غریب الوطن اپنی فیملی کے ساتھ رہ کر بھی اکیلے ہیں۔ جو لوگ کسی نفسیاتی بحران کا شکار نہیں ہیں وہ بھی اس تنہائی میں کئی طرح کے مسائل کا سامنا کر رہے ہیں۔ وہ لوگ جو پہلے ہی کئی طرح کے نفسیاتی عارضوں انزائٹی، ڈپریشن کا شکار ہیں یا زندگی کے کسی موڑ پر ان بیماریوں سے نبرد آزما ہو چکے ہیں ان کے لئے اس تنہائی میں رہنے کا قرینہ کیا ہو؟

Read more

کیا آپ محبت کے رازوں سے واقف ہیں؟

بعض سوال بظاہر بہت آسان لیکن درپردہ بہت مشکل ہوتے ہیں کیونکہ ان کا تعلق انسانی نفسیات اور رشتوں سے ہوتا ہے اور ہم سب جانتے ہیں کہ انسانی نفسیات پیچیدہ ہے اور رشتے گنجلک ہیں۔ میرے ایک دانشور دوست نے اپنے محبت نامے میں کتنی معصومیت سے کتنا گہرا سوال پوچھا ہے۔ لکھتے ہیں…

Read more

کیا آپ جسم اور ذہن کے پراسرار رشتے سے واقف ہیں؟

ڈاکٹر خالد سہیل۔ ہادیہ یوسف ہادیہ یوسف کا خط محترمی ڈاکٹر سہیل! دو دن پہلے آپ کا کالم پڑھا جس میں آپ نے بتایا کہ موجودہ حالات میں ہمیں کنول کا پھول بن کر رہنا ہے۔ یعنی دلدل میں رہنا بھی ہے اور اس سے اٹھے بھی رہنا ہے۔ آپ نے تو یہ بات کہہ…

Read more

مشرقی اور مغربی طرزِ زندگی کا بنیادی فرق کیا ہے؟

زیبا شہزاد بنام خالد سہیل  محترم ڈاکٹر خالد سہیل صاحب! گذشتہ دنوں ویمن ڈے گزرا ہے۔ ویسے تو یہ دن ہر سال مختلف ملکوں کی خواتین اپنے اپنے انداز سے مناتی ہیں۔ لیکن دوسال پہلے یہ ”وبا“ جب پاکستان میں داخل ہوئی تو کسی نے اس پر اتنا دھیان نہیں دیا، لہذا گذشتہ سال اس…

Read more

کیا آپ کنول کا پھول بن سکتے ہیں؟

’ہم سب‘ پر وبا کے دنوں میں ماہرِ نفسیات کی ڈائری کا پہلا ورق چھپنے کے بعد مجھے بہت سے خط ’ای میلز اور فیس بک میسیجز موصول ہوئے۔ ان میں سے ایک مختصر پیغام‘ سوال اور جواب یہ تھا۔ سوال : السلام علیکم سر! امید ہے آپ خیریت سے ہوں گے۔ موجودہ صورتِ حال…

Read more

وبا کے دنوں میں ماہرِ نفسیات کی ڈائری

کینیڈا جیسا ملک، سردیوں کا موسم اور کرونا وائرس کی دہشت اور وحشت گلیاں سنسان، سڑکیں ویران، شہر کا شہر ایک قبرستان میں جب نیا نیا کینیڈا آیا تو مجھے یہ دیکھ کر حیرانی ہوئی کہ پاکستان کے مقابلے میں اس کی آبادی کتنی کم ہے اور گلیوں بازاروں میں پرندے اور جانور نہ ہونے کے برابر۔ یورپ کے مقابلے…

Read more

آپ زندگی کو کس عینک سے دیکھتے ہیں؟

مجھ پر کئی سالوں بلکہ کئی دہائیوں کے تجربے، مشاہدے، مطالعے اور تجزیے کے بعد زندگی کا یہ راز منکشف ہوا کہ دنیا کا ہر کلچر ایک عینک ہے اور ہر زبان بھی ایک عینک۔ ہر مذہب ایک عینک ہے اور ہر روایت بھی ایک عینک۔ انسانی شعور کے ارتقا کے سفر میں ہر عہد اور ہر دور، ہر ملک اور ہر معاشرے کے انسان زندگی کو دیکھنے، سمجھنے اور برتنے کے لیے یہ عینکیں بناتے آئے ہیں۔

جب کوئی بچہ کسی خاندان میں پیدا ہوتا ہے اور کسی معاشرے میں تربیت پاتا ہے تو اس کے والدین اور اساتذہ اسے ایک عینک پہنا دیتے ہیں اور وہ بچہ لاشعوری طور پر زندگی کو اس عینک سے دیکھنے لگتا ہے۔ آہستہ آہستہ وہ بچہ اپنے نقطہِ نطر کو سچ بلکہ اکثر اوقات حتمی سچ سمجھنے لگتا ہے۔ نفسیات کی زبان میں ہم اس عمل کو conditioning کہتے ہیں۔

Read more

اگرچہ میں ایک مرد ہوں لیکن ذہین عورت کے مشورے پر عمل کرتا ہوں

میں پچھلے تین مہینوں سے پاکستان جانے کا پروگرام بنا رہا تھا اور 24 مارچ 2020 کا ٹورانٹو لاہور کا پی آئی اے کا ٹکٹ بھی خرید لیا تھا۔ دوستوں کو اپنے آنے کی خبر بھی دے دی تھی اور انہوں نے مجھے خوش آمدید کہنے کا اہتمام بھی کر لیا تھا۔ لاہور کے امجد…

Read more

تشدد سے امن کا سفر: خوش بخت خان سے انٹرویو

محترمی و مکرمی خوش بخت خان صاحب! سب سے پہلے میں آپ کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں کہ آپ نے انٹرنیٹ پر مجھ سے رابطہ قائم کیا اور مجھ پر اتنا اعتماد اور اعتبار کیا کہ اپنی دکھ بھری کہانی مجھے سنائی۔ میں نے جب آپ کو مشورہ دیا کہ آپ اپنا تشدد سے…

Read more