موت سے سرگوشیاں کرنے والے

نسترن فوت ہو گئیں نسترن خانم فوت ہو گئیں ہماری عزیز دوست نسترن خانم فوت ہو گئیں نسترن کو پچھلے چند ماہ سے ایک تخلیقی بارش اورایک ادبی طوفان کا سامنا تھا۔ کبھی وہ صبح کے وقت اپنی سوچوں میں ڈوب جاتیں ’کبھی وہ شام کے وقت خیالوں کی دنیا میں کھو جاتیں اور کبھی…

Read more

کیا نفسیاتی مسائل کا شکار لوگوں کو شادی کرنی چاہیے؟

میری والدہ جب اپنے سسرال سے بہت ناراض ہوتی تھیں تو غصے میں کہا کرتی تھیں ’میرے گھر والوں نے میری شادی ایک پاگلوں کے خاندان میں کر دی تھی‘ اب مجھے یہ جان کر حیرانی ہوتی ہے کہ اس دور کے بہت سے جوڑوں کی طرح میرے والدین شادی سے پہلے نہ تو ایک…

Read more

کیا آپ جانوروں اور پرندوں سے محبت کرتے ہیں؟

بعض لوگ انسانوں سے محبت نہیں کرتے اور بعض جانوروں اور پرندوں اسے بھی محبت کرتے ہیں۔ آج میں آپ کو اپنی زندگی میں ایک بھیڑ ، چند کبوتروں اور بہت سے کچھووں سے محبت کی کہانی سناتا چاہتا ہوں۔

یہ ان دنوں کی بات ہے جب آتش جوان نہیں بچہ تھا اور سادہ لوح تھا۔ اس نے یہ محاورہ نہیں سنا تھا۔ غم ندادی بز بخر۔ سن بھی لیا ہوتا تو اسے اس کی اہمیت کا اندازہ نہ ہوتا۔جب میں بچہ تھا تو اپنے والدین کے ساتھ پشاور شہر سے باہر چارسدہ روڈ پر رہتا تھا۔ ہمارے گھر کے قریب ایک بہت بڑی عیدگاہ تھی جس میں ایک باغ تھا۔ سال میں دو دفعہ تو عید کی نماز پڑھی جاتی تھی اور باقی دن ہم وہاں فٹ بال کھیلتے تھے۔ ہر ہفتے وہاں ایک گڈریا سمندر خان اپنی بکریاں اور بھیڑیں چرانے آتا تھا۔ مجھے وہ بھیڑیں بہت پسند تھیں۔ میں انہیں دور دور سے دیکھتا رہتا تھا کیونکہ میں ان کے ساتھ کھیلنا چاہتا تھا۔

Read more

درویش، عورت اور خدا

محترمہ و معظمہ و مکرمہ جنابہ مریم صاحبہ! جب لاہور میں رابعہ الربا نے مجھے بتایا کہ ایک فنکارہ مریم مجھ سے ملنا چاہتی ہیں تو میں نے کہا ’بصد شوق‘ ۔ چنانچہ اپنی بہن عنبر کے ہاں آپ سے ملاقات ہوئی اور مختلف موضوعات پر تبادلہِ خیال ہوا۔ آپ نے بڑی اپنائیت سے اپنی…

Read more

جب مسیحا خود بیمار ہو جائے

دو سال قبل جب ڈاکٹر لبنیٰ مرزا مجھ سے ملنے کینیڈا اتشریف لائیں تو انہوں نے چند دن میرے کلینک میں گزارے تا کہ وہ نفسیاتی مسائل اور گرین زون تھیریپی کے بارے میں اپنی معلومات میں اضافہ کر سکیں۔ کلینک سے جاتے جاتے انہوں نے مجھے مشورہ دیا کہ میں اپنے کلینک میں میڈیسن اور نفسیات کے طلبا و طالبات کو سائیکو تھیریپی سکھاؤں۔ چنانچہ پچھلے سال میرے کلینک میں ایک پاکستانی میڈیکل سٹوڈنٹ ماریا نفسیاتی مسائل اور سائیکوتھیریپی سیکھنے آئیں۔

ماریا اس تجربے سے اتنی خوش ہوئیں کہ انہوں نے اپنی سہیلی رافعہ کو مشورہ دیا کہ وہ بھی میرے کلینک میں ٹریننگ حاصل کرے تا کہ ایک بہتر ڈاکٹر بن سکے۔ ڈاکٹر مسیحا ہوتے ہیں۔ وہ دوسروں کی جسمانی اور ذہنی صحت کا خیال رکھتے ہیں۔ میری نگاہ میں اچھے ڈاکٹر اور مسیحا بننے کے لیے ضروری ہے کہ ہم اپنی ذہنی صحت کا بھی خیال رکھیں۔

رافعہ نے میرے پاکستان کے تجربات کے بارے میں پوچھا تو میں نے انہیں بتایا کہ پاکستان کے ڈاکٹروں نے مجھے یہ خبر دی کہ پچھلے چند ہفتوں میں پاکستان میں کئی میڈیکل کالج کے طلبا و طالبات نے خود کشی کر لی ہے۔

Read more

جب طب نے مذہب کو خدا حافظ کہا

پاکستان کے سفر کے دوران جب میرے عزیز دوست ڈاکٹر علی ہاشمی نے ’جو فیض احمد فیض کے نواسے بھی ہیں اور ایک ماہرِ نفسیات بھی‘ مجھے دعوت دی کہ میں ان کے میڈیکل کالج کے طب اور نفسیات کے طالب علموں سے ملوں تو میں نے اپنے لیکچر کے دوران طلبہ و طالبات کو طب کی تاریخ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ آج سے 2500 سال پیشتر یونان میں ایک طبیب پیدا ہوئے تھے جنہیں مغربی دنیا HIPPOCRATES اور مشرقی دنیا بقراط کے نام سے جانتی ہے۔ بقراط وہ پہلے سائنسدان اور دانشور ’طبیب اور ڈاکٹر تھے جنہوں نے جدید طب کی بنیاد رکھی اور طب کی روایت کو مذہب کی روایت سے جدا کیا۔بقراط کے دور میں لوگ یہ سمجھتے تھے کہ وہ اپنے گناہوں کی وجہ سے بیمار ہوتے ہیں اسی لیے صحتمند ہونے کے لیے وہ گڑگڑا گڑگڑا کر اپنے گناہوں کی معافی مانگتے تھے ’دعائیں کرتے تھے اور اپنے خداؤں کو خوش کرنے کے لیے طرح طرح کی قربانیاں دیتے تھے۔

Read more

کیا اکیسویں صدی میں انسانیت ایک دوراہے پر کھڑی ہے؟

ایک امن پسند انسان دوست ہونے کے ناطے جب میں انسانوں کے صدیوں کے ارتقا کے بارے میں سوچتا ہوں تو مجھے یوں محسوس ہوتا ہے جیسے انسانیت اکیسویں صدی میں ایک دوراہے تک آ گئی ہو اور اب اسے فیصلہ کرنا ہو کہ وہ ان دو راہوں میں سے کس راہ کا انتخاب کرے۔…

Read more

ہم اپنا پورا سچ کیوں نہیں لکھ پاتے؟

میں اپنی زندگی میں نجانے کتنے شاعروں‘ ادیبوں اور دانشوروں سے مل چکا ہوں جنہوں نے مجھے بتایا کہ وہ کبھی بھی اپنا پورا سچ نہیں لکھ پائے کیونکہ انہیں ڈر تھا کہ کہیں کسی کے جذبات مجروح نہ ہو جائیں انہیں شہر بدر نہ کر دیا جائے انہیں جیل میں نہ ڈال دیا جائے…

Read more

جب آپ محبت کی بارش سے اندر تک بھیگ جاتے ہیں

  نجانے وہ کون سے ادیب اور شاعر، افسانہ نگار اور دانشور ہیں جو ساری عمر ناقدری اور ناشناسی کے دکھ سہتے رہتے ہیں۔ میرا ذاتی تجربہ ان شاعروں اور ادیبوں سے بہت مختلف ہے۔ میں نے زندگی میں جب بھی تھوڑا سا جینون ادبی کام کیا مجھے میرے حق سے کئی گنا زیادہ داد…

Read more

ہم سب دھرتی ماں کے بچے ہیں

ڈاکٹر سید عظیم کا ڈاکٹر خالد سہیل سے انٹرویو

نوٹ :ڈاکٹر سید عظیم نے ’جو آج کل LUMS یونیورسٹی میں اسسٹنٹ پرفیسر ہیں‘ چند سال پیشتر اپنے کینیڈا کے قیام کے دوران ڈاکٹر خالد سہیل سے مندرجہ ذیل انٹرویو لیا تھا۔

عظیم: آپ نے پاکستان کب چھوڑا ’کینیڈا کب تشریف لائے اور ٹورانٹو میں کب سے ہیں؟

Read more