طاعون سے کرونا وائرس تک

گزشتہ ایک ہفتے سے کرونا وائرس کی وجہ گھرمیں قید ہوں اور اس دوران کتب بینی زوروں پہ ہے۔ عام دنوں میں کبھی اتنی فرصت نصیب نہیں ہوئی کہ اتنی یکسوئی سے مسلسل کتب پڑھی جائیں جس کتاب نے مجھے متاثر کیا وہ سٹیفن جے سپگنیس کی کتاب ”سو بڑے حادثات“ ہے۔ یہ کتاب اس…

Read more

آزادی عورت کا بنیادی حق ہے مگر؟

پاکستان میں اس وقت سب سے زیادہ زیرِ بحث موضوع ”عورت مارچ“ ہے۔ آٹھ مارچ کو خواتین کے عالمی دن پر پورے پاکستان میں یہ مارچ کیا گیا۔ ناقدین کا خیال ہے کہ یہ مارچ کرنے والی محض وہ پانچ یا دس فیصد خواتین ہیں جو مادر پدر آزاد معاشرہ چاہتی ہیں اور جب ان…

Read more

امریکہ افغان معاہدہ

امریکہ اور طالبان معاہدہ بالاخر ہو گیا جسے فوجی انخلا اور امن سے مشروط کیا گیا۔ معاہدے کی رو سے طالبان اپنی سرزمین کسی بھی دہشت گرد جماعت کے ہاتھوں استعمال نہیں ہونے دیں گے اور مزید دونوں ممالک اس معاہدے کی پاسداری کریں گے۔ اگر کوئی ملک اس کی خلاف ورزی کرے گا تو…

Read more

ُٓادبی و ثقافتی ادارے اور کانفرنسیں

12 ؍ 13 جنوری ساہیوال آرٹس کونسل کی سالانہ کانفرنس تھی اور ہر سال کی طرح اس سال بھی یہ کانفرنس ایک نئے انداز اور نئے موضوعات کے ساتھ منعقد ہوئی جس میں پاکستان بھر کی یونیورسٹیز سے اردو کے اساتذہ، اسکالرز اور تشنگانِ علم و ادب شریک ہوئے اور یہ دو روزہ میلہ بہت…

Read more

فیض امن میلہ اور انقلاب کا منجن

میں اتوار کے روز فیض امن میلے میں شریک ہوا اور ہمیشہ کی طرح اس دفعہ بھی اس میلے میں انقلاب کا راستہ ہموار کرنے اور جاگیرداری کلچر کے خاتمے کے لیے لمبی لمبی تقاریر کی گئیں۔ ایک سیشن انتہائی اہم تھا جس کی وجہ سے مجھے وہاں کچھ دیر رہنا پڑا وہ سٹوڈنٹس یونین…

Read more

پانچ روزہ کتاب میلہ اور حکومتی رویہ

چھے فروری سے ایکسپو سنٹر میں شروع ہونے والا انٹرنیشنل کتاب میلہ دس فروری بروز پیر کو اپنے اختتام کو پہنچ گیا اور یہ میلہ بھی ہمیشہ کی طرح کئی ان گنت کہانیاں اور واقعات ہمارے دامن میں بھر گیا۔ ہمیشہ کی طرح اس دفعہ بھی حکومتی سنجیدگی بالکل صفر رہی۔ گزشتہ برس تو سننے…

Read more

عشق میں اس سے کروں گا جسے اردو آئے

میں عام طور پر تقریبات پہ بہت کم ہی قلم اٹھاتا ہوں کیونکہ ہمارے ہاں یہ سمجھا جاتا ہے کہ جس کالم نگار کے پاس کوئی موضوع نہ ہو وہ تقریبات کا سہارا لے کر کالم سجا لیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ عمومی طور پر تقریبات پر کالم سے گریز کرتا ہوں مگر کچھ…

Read more

استاد کو عزت دو

میں گزشتہ کئی ماہ سے ایک نجی نشریاتی ادارے میں اعزازی طور پر بطور ”انچارج انٹرویوز سیکشن“ کے کام کر رہا ہوں اور مجھے اس دوران کئی اہم تجربات سے گزرنے کا اتفاق ہوا۔ میں نے اس عہدے پہ آنے کے بعد یہ فیصلہ کیا تھا کہ ایسے لوگوں کے انٹرویوز کیے جائیں جنہوں نے…

Read more

زینب الرٹ بل:حکومت کے لیے چند تجاویز

15 جنوری 2020 ء کی ٹھنڈی صبح دفتر پہنچا ہی تھا کہ ایک ای میل موصول ہوئی۔ آپ پہلے وہ ای میل ملاحظہ فرمایئے۔ ”محترم جناب آغر ندیم سحر! میرا تعلق جھنگ کے ایک نواحی قصبہ سے ہے۔ میں آپ کے کالموں کا مستقل قاری ہوں اور آج میں آپ سے اپنا ایک دکھ شیئر…

Read more

شفقت محمود اور فواد چودھری سے مکالمہ

یہ دو روزہ ”تھنک فیسٹ“ کے نام سے اپنی نوعیت کا ایک منفرد فیسٹول تھا جس کا ٹائٹل ”آئیں، سوچیں اور سوال اٹھائیں“ تھا۔ میں اس دوروزہ فیسٹیول میں بطور مندوب شریک تھا اور بہت سارے سیشنز کو سننے کا موقع ملا۔ ان دو دونوں میں اگرچہ درجنوں سیشنز تھے مگر دو سیشن ایسے تھے…

Read more