ہم عرض کریں گے تو شکایت ہوگی

نیوزی لینڈ کی مسجد میں پچاس نمازیوں کی دردناک شہادت سب پر قیامت بن کر ٹوٹی۔ ہر آنکھ اشک بار ہے اور ہر دل درد سے پُر۔ انسان ہونے کی سب سے بڑی دلیل یہ ہے کہ ہمیں دوسرے انسان کی خوشی میں خوشی ملتی ہے اور دوسرے کے غم میں دکھ کا احساس ہوتا ہے۔ اس طرح کی بےوقت، بےرحمانہ اور تکلیف دہ موت پر تو صرف دکھ کا احساس نہیں ہوتا بلکہ ایک ایک شہادت کی بے بسی پر نظر کر کے اور ان کے چاہنے والوں پر ٹوٹے پہاڑ کو سوچ کر پل پل دل ڈوبتا ہے۔

پاکستان میں بھی اس دہشت گردی پر انتہائی غم و غصہ تھا۔ اور ہونا بھی چاہئیے تھا، مگر اس غم و غصے میں جو منافقت کا پہلو تھا اس پر لکھنا میں نے کچھ دن تک ادھار رکھا کہ وقت کے ساتھ ساتھ ہم سب کے سوچنے سمجھنے کی صلاحیت واپس آ جائے جو کہ اس ظالمانہ دہشتگردی کی وجہ سے کہیں کھو بیٹھے تھے۔

Read more

فیاض الحسن چوہان ہمارے معاشرے کی ہی تمثیل ہے

فیاض الحسن چوہان نے کل ہندو برادری کے بارے میں جو الفاظ استعمال کیے ان پر بڑی لے دے ہو رہی ہے۔ فیاض الحسن کو فارغ کر دینے کی بات کی جا رہی ہے وغیرہ وغیرہ جو کہ میرے نزدیک بہت پہلے ہی ہو جانا چاہیے تھا اور بات یہاں تک پہنچنی ہی نہیں چاہیے تھی مگر فیاض الحسن نے ایسا کیا کہا ہے جو پاکستان میں ہماری اکثریتی کا خیال نہیں ہے؟ چوہان نے تو وہی کچھ بولا ہے جو ہمارے ملک کے اکثریتی لوگوں کا خدائی فوجدار ہونے کے ناتے یقین ہے۔ہمارا تعلق عوام الناس سے ہے اور جن گلی محلوں سکولوں مدرسوں میں ہم سب پروان چڑھے ہیں وہاں ایسا کون سا درس دیا جاتا ہے جو ہمیں دوسرے مذہب کے بانیان، ان کے مذہبی پیشواؤں اور ان کے عقائد و اعمال کی تضحیک کرنے سے روکتا ہو؟ ہندوؤں کو تو چلو ہمارے توحید پرست پکے مسلمان نجس مشرک سمجھتے ہیں مگر اپنے ہی سرکاری و غیر سرکاری مسلمان کہلائے جانے والے فرقوں کے آبا و اجداد کے بارے میں بھی ہمارا مجموعی رویہ انتہائی تحقیر آمیز ہے۔

Read more

مشکل اردو میں انشا پردازی

ہمیں ایک دوست نے انتہائی صائب مشورہ دیا تھا کہ عوام الناس کے پڑھنے کے لئے لکھ رہے ہو تو عوام الناس کی زبان میں ہی لکھنا، دہائیوں قبل کی اردو زبان کے مشکل اور بھاری بھرکم الفاظ لکھ کر عوام الناس کو گمراہ و بددل کرنے کی قطعاً ضرورت نہیں ہے۔ ہماری کوشش ہوتی…

Read more

لمبی زندگی رحمت کی بجائے زحمت نہ بن جائے

ہم لوگ اکثر اس جملے کو کئی بزرگوں کی زبان سے سن چکے ہیں کہ پتر اللہ لمبی حیاتی دے (بیٹا اللہ لمبی زندگی دے)۔ پہلے تو خیر میں نے کبھی اس پر غور نہیں کیا اور اسے بزرگوں کے حسن اخلاق کے کھاتے میں ڈال دیا کرتا تھا مگر جیسے جیسے مرور زمانہ عمر…

Read more

شیخ نذیر، طنز و مزاح شاعری کا بھولا ہوا باب

کیسے کیسے نابغے ہم میں تھے جن کو ہم نے پہچانا نہیں ، جو کسی وجہ سے مشہور و معروف نہ ہو سکے اور زمانے کی بھول بھلیوں میں ہم سے کہیں کھو گئے۔ شیخ نذیر کی شاعری کسی بھی طور سے اپنے ہمعصروں سے کمتر نہیں تھی مگر شائد ان کا کلام رسائل میں…

Read more

جماعت احمدیہ، چوہدری ظفراللہ خان اورباؤنڈری کمیشن میں گورداسپور کی بحث

ہٹلر کے ایک وزیر پال جوزف گوئیبل سے ایک فقرہ منسوب ہے (جو کہ اصل میں اس کا ہے نہیں) کہ جھوٹ کو اگر بار بار بولا جائے تو کچھ لوگ اس جھوٹ کو سچ سمجھنا شروع ہو جاتے ہیں۔ سائیکولوجی میں اسے Illusory Truth Effect کہتے ہیں۔ ہمارے معاشرے میں یہ رواج پڑ گیا…

Read more

مولانا زاہد الراشدی کے سر ظفراللہ خان پر ناروا الزامات

حکومت پاکستان کی طرف سے جناب عاطف میاں کی اقتصادی مشاورتی کونسل میں بطور ممبر تقرری سے ایک بھونچال آیا ہوا ہے۔ عاطف میاں صاحب احمدی ہیں لہذا ہر کس و ناکس اپنی اپنی بساط کے مطابق احمدیوں کو پاکستان کا دشمن اور غدار ثابت کرنے پر تلا ہوا ہے۔ مولانا زاہد الراشدی صاحب نے…

Read more

توہین آمیز کارٹونز اور اسوہ حسنہ

انبیاء و رسل کا تمسخر اڑانا تاریخ میں اتنا ہی قدیم ہے کہ جتنا انبیاء و رسل کی آمد کا سلسلہ۔ قران میں اس تمسخر کی تاریخ کا ذکر کچھ یوں ہے کہ: 'اے محمد، ہم تم سے پہلے بہت سی گزری ہوئی قوموں میں رسول بھیج چکے ہیں ۔ کبھی بھی ایسا نہیں ہوا…

Read more

میں یوتھیا نہیں ہوں

کسی بھی معاشرے کی اقدار کی تنزلی ایک ایسا عمل ہے جو آہستہ تو ہوتا ہے مگر مسلسل جاری و ساری رہتا ہے۔ پھر دہائیوں بعد ایک ایسا موقع آتا ہے کہ وہ لوگ بھی اسی طرح یاوہ گوئی میں لتھڑے نظر آتے ہیں جن کو اس تنزلی کے مخالف بند کے طور پر سمجھا…

Read more

یوسفی صاحب، بینک کی نوکری اور نئے نوٹوں کی گڈیاں

کہتے ہیں کہ مشبہ اور مشبہ بہ میں مشابہت سو فیصد نہیں ہوتی، کسی ایک صفت میں مشابہت پر بھی تشبیہ کا اطلاق کیا جا سکتا ہے، مثلاً مشتاق احمد یوسفی صاحب کے نام کے درمیان میں احمد آتا ہے، ہمارے نام کے درمیان میں بھی احمد آ تا ہے۔ وہ بھی بینک میں کام…

Read more