توہینِ مذہب کیسز میں مذہبی طبقے کی تشفی کیسے ہوسکتی ہے؟

پاکستان کے موجودہ وزیر اطلاعات فواد چودھری نے بیان دیا ہے کہ پاکستان میں شدت پسندی اور انتہا پسندی کا مستقل حل تلاش کرنے کی ضروت ہے۔ وزیر موصوف کے بیان میں انتہا پسندی کی نسبت صرف مذہبی طبقہ کی طرف کی گئی ہے۔ یہ بات اُصولاً غلط ہے۔ پاکستان میں مذہبی اور سیکولر دونوں طبقے پائے جاتے ہیں۔ مذہبی افراد پاکستان میں مکمل طور پر پاکستان کا نفاذ چاہتے ہیں اس کے برعکس سیکولر طبقات چاہتے ہیں کہ ملک سیکولر ہو۔ ہر دو طبقوں میں معتدل اور انتہا پسند دونوں قسم کے افراد اور گروہ پائے جاتے ہیں۔ پاکستان کو صرف مذہبی انتہا پسندی کا سامنا ہی نہیں بلکہ سیکولر انتہاپسندی کا بھی سامنا ہے۔

Read more