اب جو کرنا ہے وہ کورونا نے کرنا ہے

شہر کی ویرانی دیکھ کر جس قدر افسردگی ہوئی تھی۔ اس سے کہیں بڑھ کر شہر کی رونق دیکھ کر حیرت ہوئی ہے۔ حیرت اس لیے نہیں کہ یہ رونق اور چہل پہل کیوں ہے۔ ۔ ۔ یہ بازاروں میں سجی سنوری دکانیں، خریداروں کا رش، لوگوں کی آنیاں جانیاں، ایک موٹرسائیکل پر میاں بیوی بچوں سمیت پورے پورے لدے پھندے خاندان، فراٹے بھرتے چنگ چی رکشے، سڑکوں پر بے ہنگم ٹریفک، بے تکے ہارنوں کا شور اور لوگوں کا ہجوم بے کراں یہی تو شہروں میں زندگی کی علامت آن ٹھہرے ہیں۔

Read more

یقینی اور غیر یقینی

”مشکلات ضرور آئی ہیں سئیں۔ ۔ ۔ پھر بھی بہت اچھا نہ سہی مگر اچھا گزارہ ہو ہی جاتی ہے۔“ دیہات سے تعلق رکھنے رکھنے والے ایک سادہ سے شخص کی زبان سے نکلنے والے ان الفاظ سے متاثر ہوئے بغیر نہ رہ سکا۔ میری اس سے کوئی جان پہچان نہیں تھی وہ دکان سے…

Read more

امداد کی تقسیم اور کورونا کا پھیلاؤ

ایک افسوس ناک خبر کے مطابق ملتان کے قاسم پورہ سنٹر میں احساس پروگرام کے تحت مستحقین میں امداد کی نقد رقوم کی تقسیم کے دوران بھگدڑ مچنے کے نتیجے میں ایک بزرگ خاتون جان بحق اور 20 خواتین زخمی ہو گئیں جبکہ راجن پور سمیت مختلف شہروں میں احساس سنٹرز پر بدنظمی کی وجہ…

Read more

ہمیں کورونا نہیں ہو سکتا!

زندگی پھر سے لوٹ آئی۔ رونقیں بحال ہو گئیں۔ روشنیاں جگمگا اٹھیں۔ خوشیاں در آئیں۔ چہرے کھلکھلا اٹھے۔ زندگی نے موت کو شکست دے دی۔ یہ سب حوصلے سے ہوا۔ ہمت سے ہوا۔ عزم اور یقین کے ساتھ ممکن ہوا۔ چین کے صوبے ووہان کو 76 روز کے لاک ڈاون کے بعد مکمل طور پر…

Read more

وہ لوٹ رہا ہے۔۔۔

وہ بھاگ رہا تھا۔ اس کی سانس پھولی ہوئی تھی۔ مگر پھر بھی اس کی رفتار کم نہیں ہو رہی تھی۔ وہ بہت جلدی میں تھا۔ تمام حدیں کراس کر جانا چاہتا تھا۔ وہ بھول گیا تھا کہ یہ زندگی ایک سفر ہے اور سفر میں ناتے، رشتے، تعلق، واسطے، رابطے، باتیں اور سب کچھ…

Read more

بیانات اور اعلانات بجا مگر اقدامات؟

کورونا وائرس کے خلاف پوری قوم ایک عزم، یقین اور جذبے کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے منزل زیادہ دور نہیں بس ہمت اور حوصلے کی ضرورت ہے۔ یقیناً آگے آنے والا ہر دن انتہائی اہمیت کا حامل ہے ہمیں ہر قدم پھونک پھونک کر رکھنا ہے۔ بے خوف ہو کر آگے بڑھنا بے مگر…

Read more

لاک ڈاون کے بعد!

یہ لاک ڈاون کا تیسرا روز تھا میں ایک ضروری کام کے سلسلے فوارہ چوک پہنچا۔ یہ لیہ سٹی کا مصروف ترین چوک ہے جہاں ہر وقت ٹریفک کا بے انتہا رش رہتا ہے باہر سے آنے والوں کو شہر میں کسی جگہ جانے کے لیے یا شہر سے باہر کسی قصبے علاقے یا پھر بیرون سٹی جانے کے لیے فوارہ چوک سے گزر کر جانا پڑتا ہے۔ مگر آج یہاں ہو کا عالم تھا پبلک ٹرانسپورٹ بالکل بند تھی چند ایک پرائیویٹ گاڑیاں یا موٹر سائیکل بائیک نظر آئیں جبکہ اکا دکا پیدل لوگ بھی دکھائی دیے جو شاید کسی ضروری کام سے نکلے ہوں۔ میں متعلہ سپر سٹور پہنچا جہاں سے مجھے گھر کی ضرورت کے لیے چند اشیا خریدنی تھیں۔ باہر بیٹھے ایک شخص نے مجھے روک کر سائیڈ پر رکھی ایک پانی کی ٹینکی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا۔

سر جی ہاتھ دھو لیں

Read more