دخل اندازی کا کفارہ کیا ہو سکتا ہے؟

وزیر اعظم عمران خان کی حکومت ان معاشی مشکلات سے نمٹنے میں لگی ہوئی ہے، جو سب کی سب اس نے پیدا نہ کی ہوں، تو بھی ان میں اضافہ ضرور کیا ہے۔  ہر شخص کو معلوم تھا کہ پاکستان کرنٹ اکاؤنٹ کے خسارے میں مبتلا تھا۔ اس کی درآمدات زیادہ اور برآمدات کم ہیں۔ …

Read more

مٹی کے کھلونے

وزیر خزانہ اسد عمر کی سبکدوشی کی خبر انتہائی دھماکہ خیز تھی۔ رات کو کامران خان صاحب کے نیوز شو میں انہوں نے ایک گھنٹہ طویل انٹرویو دیا، اور مستقبل کے حوالے سے اپنے لائحۂ عمل پر بھی روشنی ڈالی۔ وہ مطمئن تھے کہ مشکلات کم ہو گئی ہیں اور آنے والے دن گزر جانے…

Read more

مجھ کو بھی شرمسار کر

بھارت میں 17ویں لوک سبھا چننے کے لئے انتخابی عمل چند روز پیشتر شروع ہو چکا ہے۔ یہ مئی کے تیسرے ہفتے میں مکمل ہو گا اور چوتھے ہفتے میں ووٹوں کی گنتی کی جائے گی۔ 23 مئی کو اعلان ہو جائے گا کہ آئندہ پانچ سال کے لئے بھارتی وزیر اعظم کس کو بننا…

Read more

کرائسٹ چرچ سے بہاول پور تک

نیوزی لینڈ کی 39 سالہ خاتون وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے سانحۂ کرائسٹ چرچ کے بعد جس طرزِ عمل کا مظاہرہ کیا، اس نے اُنہیں ممتاز عالمی مدبرین کی صف میں لا کھڑا کیا ہے۔ اِس وقت کوئی بھی صدر یا وزیر اعظم اُن کے برابر نظر نہیں آ رہا۔ اُن کا قد اتنا بڑھ گیا ہے کہ بڑے بڑوں کو اُنہیں دیکھنے کے لئے آنکھیں دور تک اوپر اٹھانا پڑتی ہیں۔ دو مسجدوں میں نمازِ جمعہ کے دوران کیے گئے حملوں نے متعدد کلمہ گوؤں کو تو شہید کیا، بہت سوں کو زخمی کر دیا، لیکن نسلی انتہا پسندی اور دہشت گردی کے خلاف جو بند محترمہ نے باندھا، اس نے بھی ایک نئی تاریخ رقم کر دی ہے۔ جس طرح انہوں نے اپنے مسلمان شہریوں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کیا، اور اپنے ہم وطنوں کو اپنے ساتھ شریک کیا، اس نے دُنیا بھر کے مسلمانوں کے دِل تو جیتے ہی، خود نیوزی لینڈ ہی کو نہیں پورے یورپ، بلکہ پوری مغربی دُنیا کو خود حفاظتی کے ایک نئے لائحہ عمل سے روشناس کرا دیا۔

Read more

دو نہیں۔ ۔ ۔ ایک عمران خان

اس میں کوئی شک نہیں کہ پلوامہ حملے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے جو اقدامات بھی کیے ، ان سے نہ صرف جنگ کا خطرہ ٹلا بلکہ دُنیا بھر میں ایک ریاست کے طور پر پاکستان کا اور ایک سربراہِ حکومت کے طور پر عمران خان کا امیج بلند ہوا۔ پاکستانی افواج نے جن دفاعی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا، اور ہماری فضائیہ نے جس طرح ایک بار پھر اپنی برتری ثابت کی، اس کا اعتراف دُنیا بھر میں کیا گیا۔ غیر جانبدار مبصرین اور تجزیہ کار بھارتی حکومت اور اس کے فوجی ترجمانوں کے دعووں کو مضحکہ خیز قرار دیتے رہے، اور ایک بار پھر بھارت کے بلند بانگ دعووں کا پول کھل گیا۔

Read more

صندوق اور ”بندوق“ کے سامنے

گزشتہ دو اڑھائی مہینوں کے دوران پاکستان اور بھارت کے درمیان جو کچھ ہوتا رہا، بظاہر تاریخ کا حصہ بن چکا ہے، لیکن یہ تاریخ ایسی ہے جو بار بار خود کو دہرانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ پردھان منتری نریندر مودی کی انتخابی سیاست نے بھارتی معاشرے میں جنگی جنون کو جس طرح ہَوا دی، وہ کسی بھی وقت کچھ کرکے دکھا سکتا ہے۔ انہوں نے ایک بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کھلم کھلا کہا ہے کہ جو کچھ کیا گیا وہ ”پائلٹ پروجیکٹ“ تھا۔گویا یہ انجام نہیں آغاز تھا۔ اِس آغاز کا انجام کیا ہو گا، وہ اِس بارے میں زیادہ غور و خوض پر تیار نہیں ہیں۔ دُنیا بھر کے مبصرین کہہ رہے ہیں کہ مودی انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کے لیے کسی بھی حد تک جا سکتے، اور کوئی بھی کرتب دکھا سکتے ہیں۔ پاکستان کی پوری کوشش ہے کہ جذبات کی آگ کو ہَوا نہ دی جائے، اس پر پانی ڈالا جائے، دونوں مُلک ایک دوسرے کے ساتھ ایک ہی میز پر بیٹھیں، اور مسائل حل کرنے کی پُرامن کوششوں کا آغاز کریں۔

Read more

پاک سعودی ”پارٹنرشپ“

سعودی عرب کے ولی عہد اور مردِ آہن شہزادہ محمد بن سلمان کی آمد آمد ہے۔  جس وقت آپ یہ سطور پڑھ رہے ہوں گے، تو ان کی آمد میں محض چند گھنٹے باقی بچے ہوں گے۔  اُن کے شاہانہ استقبال کی تیاریاں جاری ہیں۔  پروٹوکول کے روایتی تقاضوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے وزیر…

Read more

اپوزیشن کی اپوزیشن

اس میں کوئی شبہ نہیں کہ وزیر اعظم عمران خان نے احتجاجی سیاست میں بڑا نام پیدا کیا ہے۔ انہوں نے دو عشروں کے لگ بھگ اس کی پریکٹس کی اور بالآخر اپنے حریف اول نواز شریف کی تینوں وکٹیں اڑانے میں کامیاب ہو گئے۔ ایک کرکٹر کے طور پر تو دنیا ان کا اعتراف…

Read more

ساہیوال سانحے کے قابل غور پہلو

سانحہ ساہیوال کو سات روز گزر چکے لیکن اس کے خلاف غم و غصہ ابھی تک کم نہیں ہوا۔ اِس سانحے کو واردات کہا جائے تو بھی غلط نہ ہو گا۔ ایک بے گناہ شہری اور اُس کے خاندان کے کئی افراد کو اُس کے بچوں کے سامنے بھون کر رکھ دینا ایسی بات ہے…

Read more

چھیالیس سال کا لمحہ

نماز عصر ادا کی جا چکی تھی، جماعت اسلامی کے سابق امیر سید منور حسن کراچی سے آئے تھے، شاہ خالد کے معالج ڈاکٹر غلام اکبر خان نیازی بھی موجود تھے۔ لیاقت بلوچ، منفرد دانشور احمد جاوید، الخدمت کے سربراہ عبدالشکور، برادران حفیظ اللہ نیازی اور وحید چودھری، ڈاکٹر فرید پراچہ، ڈاکٹر حسین احمد پراچہ،…

Read more