آہ ابرار علی تنویر بھائی

عید کے دوسرے دن اچانک یہ خبر ملی کہ پاکستان پیپلزپارٹی کے لاہور میں چند مخلص کارکنان میں سے ایک محترم ابرار علی تنویر بھائی کا لاہور میں انتقال ہوگیا (انا للہ وانا الیہ راجعون) ۔ابرار بھائی سے میری پہلی روبرو ملاقات سنہ 2013 میں اس وقت ہوئی جب ہم یوم تاسیس کے سلسلے میں لاہور گئے ہوئے تھے، لاہور میں عابد اقبال، علی وقاص اولکھ، احمد گھمن، علی امداد سومرو، عثمان کامریڈ اور ابرار بھائی وہ چند دوست تھے جن سے ہمارا تعلق واٹس ایپ گروپس کے بالکل شروعاتی دنوں میں ہوا تھا۔

Read more

سوشل میڈیا پر صحافی حضرات کی کردار کشی

دیگر کئی وجوہات کے علاوہ اس میں کوئی شک نہیں کہ موجودہ حکومت سوشل میڈیا کے ذریعے ہی وجود میں آئی۔ جب جب کسی کام کے لئے گراؤنڈ تیار کیا جانا ہو تو سب سے پہلے سوشل میڈیا کا سہارا لیا جاتا ہے۔ موجودہ حکومت کے آتے ہی حکمرانوں نے عوام کو بہت خواب دکھائے، ایسا لگ رہا تھا کہ موجودہ حکومت کے ہاتھ میں الہ دین کا چراغ ہے، الیکشن کے وقت جو جو وعدے کیے گئے تھے کچھ ہی دنوں میں پورے ہوجائیں گے، بیرونی قرضے ہوں مہنگائی ہو یا بیروزگاری تمام مسائل حکومت کے آتے ہی ختم ہوجائیں گے

Read more

جھونپڑیوں میں بسنے والا دل آج بھی بھٹو کے لئے دھڑکتا ہے

پاکستان پیپلزپارٹی کی صوبائی حکومت پر کرپشن، عوامی مسائل پر عدم توجہ اور بیڈ گورنس کے الزامات لگائے جاتے ہیں، لیکن سندھ کے عوام بھٹو خاندان سے لازوال محبت کرتے ہیں۔ بلاول بھٹو زرداری کے ساتھ کراچی سے لاڑکانو تک سفر کیا اور یہ سفر مکمل کرنے کے بعد میں اس نتیجے پر پہنچا ہوں…

Read more

عوام کے بنیادی حقوق اور اداروں میں ٹکراؤ کا سوال

ریاست کے تین اہم ستون ہیں، جس میں پارلیمنٹ، حکومت اور عدلیہ شامل ہیں، ملک میں بہتر حکمرانی کے لئے تینوں ستونوں کا آپس میں گہرا تعلق ہونا لازم ہے، آئین میں ہر ادارے کے لئے حدود کا تعین بھی کردیا گیا ہے، جس کے تحت تمام ادارے اپنے حدود میں رہتے ہوئے بہتر حکمرانی…

Read more

سندھ میں تعلیمی انقلاب کی شروعات

کچھ سال قبل کی الف اعلان اعلان کی رپورٹ کا مطالعہ کررہا تھا، جہاں تعلیمی انڈیکس میں صوبہ سندھ کو آخر میں رکھا گیا تھا، فاٹا، بلوچستان اور خیبر پختون خواہ سے بھی نیچے دیکھ کر کچھ حیرانی ہوئی، حالانکہ فاٹا میں جنگ کی صورتحال ہے، اسی طرح بلوچستان میں بھی امن و امان کی صورتحال کچھ بہتر نہیں، لیکن ان سب کے باوجود انڈیکس میں سندھ میں تعلیم کی صورتحال کو سب سے نیچے دکھایا گیا ہے۔

صوبہ سندھ میں سابق دور میں صحت کے شعبے میں بہت نمایاں کام ہوا تھا، جس کے ثمرات سامنے آ رہے ہیں، بچوں اور دل کے امراض کے لئے بہت سارے مراکز بن چکے، این آئی سی وی ڈی کراچی کو ایشیا کا سب سے بڑا سینٹر قرار دیا جارہا، کورنگی، شہید بینظیر آباد (نوابشاھ) میں پاکستان کے سب سے بڑے چائلڈ سینٹرز کا قیام عمل میں لایا جاچکا، ایشیا کا سب سے بڑا ٹراما سنٹر کراچی میں فنکشنل ہے۔

اب لگ رہا صوبہ سندھ نے ترقی کا رخ تعلیم کی طرف کردیا ہے۔

Read more

ارشاد رانجھانی قتل اور پولیس کا رویہ

سانحہ ساہیوال کے بعد کچھ روز قبل سوشل میڈیا پر ایک اور دل دہلانے والے مناظر دیکھنے کو ملے، بھینس کالونی کے قریب عوام کا ہجوم سپر ہائی وے پر موجود تھا، ہجوم کے بیچ میں خون میں لت پت ایک انسان پڑا تھا، جو کراہ رہا تھا، آہ و زاری کررہا تھا، مدد کی…

Read more

جنرل ریٹائرڈ حمید گل کی نرسری اور تحریک انصاف

بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم عمران خان کی 22 سالہ جدوجہد والے بیان کو تاریخی حوالہ دے کر 22 سال سے بنائے ہوئے غبارے میں پن مارکر ہوا نکال دی۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عمران خان کی سیاست میں سے اگر جنرل ریٹائرڈ حمید گل کو نکال دیا جائے تو عمران خان…

Read more

سندھ کے سمندر سے نکلنے والے گیس اور تیل کے ذخائر پر کس کا کنٹرول ہوگا؟

وفاقی حکومت نے گزشتہ سال چپکے سے دو عالمی کمپنیوں ایکسن موبل اور ای این آئی کو سندھ کے سمندر مین تیل اور گیس کی ذخائر کی تلاش کے ٹھیکے دیدیے، ایک کمپنی امریکی اور دوسری اٹلی کی ہے، دونوں کمپنیاں تیل اور گیس کے ذخائر کی تلاش میں مہارت رکھتی ہیں، چونکہ تیل اور گیس دنیا بھر کی بہت بڑی معیشت ہے اور ایکسن موبل اور ای این آئی مانی ہوئی کمپنیاں ہیں، ان کی اپنی ریسرچ ہے، یہ کمپنیاں تیل اور گیس کے ذخائر کی تلاش میں مہارت رکھتی ہیں، اس بات کا حتی الامکان ہے کہ ایک ڈیڑھ سال کے اندر بہت بڑی خوشخبری ملنے والی ہے، سندھ کے سمندر میں ملنے والے امکانی ذخائر کو دنیا کے بہت بڑے ذخائر کہا جارہا ہے، اس غیر معمولی کام میں ان لوگوں کو معلوم ہے نہیں جن کے سمندر میں ایسے ذخائر موجود ہیں، اور ان کی تلاش شروع ہوچکی ہے۔

دنیا بھر میں جن ممالک کے پاس انرجی (تیل اور گیس) وافر مقدار میں موجود ہے وہ ممالک ترقی یافتہ کہلاتے ہیں، کیونکہ ان ممالک کی صنعتوں، بجلی اور گاڑیوں کے لئے فیول سستا ملتا ہے، جس سے ترقی کی رفتار تیز ہوجاتی ہے، تیل اور گیس کی ایکسپورٹ سے بہت بڑا سرمایہ ملک میں آتا ہے، قطر، کویت، سعودی عرب، ایران روس اور اب امریکہ اس دولت سے مالا مال ہیں، اس لئے سندھ کے سمندر سے ملنے والے تیل اور گیس کے ذخائر اگر کویت اور قطر سے زائد ہیں، جس کا امکان بہت زیادہ ہے تو یہ خطہ بھی ترقی یافتہ ہوسکتا ہے۔

Read more

لمبی لمبی ہانکتے مشیر اور وزیر کس کے مہرے ہیں؟

مملکت خداداد پاکستان میں طاقتور اداروں کو ایک کمزور حکومت قابل قبول رہتی ہے، کیونکہ وہ سوال کرنے کی طاقت نہیں رکھتی، اور بنا روک ٹوک کے وہ سب کچھ کرجاتی ہے جو مضبوط حکومت پسندیدہ کام کرنے سے کرنے سے پہلے سوال کرتی ہیں۔ مگر اعلیٰ حکام سوال پوچھنے کی جسارت کرنے والوں کو جواب دینے کے بجائے سبق سکھاتی ہیں۔

اس وقت ایف آئی اے کے دو شاہکار موضوع بحث ہیں۔ ایک اصغر خان کیس سے راہ فرار اور جعلی بنک اکاؤنٹ کیس میں پُھرتیاں۔

سپریم کورٹ آف پاکستان میں وزیراعظم پاکستان عمران خان کے زیر انتظام ایف آئی اے نے لکھ کر دیا ہے کہ مشہور اور معروف ”اصغر خان کیس“ کو بند کردیا جائے، کیونکہ شواہد ناکافی ہیں اور اصغر خان کیس 25 سال پرانا کیس ہے دوسرے طرف وہی ایف آئی اے جعلی بنک اکاؤنٹ کیس میں پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو 1989 کے ایک مقدمے میں سمن کرتا ہے جس میں بلاول بھٹو زرداری کی اس وقت عمر ایک سال تھی۔ مزید یہ کہ ایف آئی اے جعلی بنک اکاؤنٹ میں پاکستان پیپلز پارٹی کی ٹاپ لیڈرشپ کو چیئرمین آصف علی زرداری، چیئرمین بلاول بھٹو زرداری (جو پہلی بار رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے ہیں۔

Read more

کرتارپور کوریڈور احسن قدم، لیکن۔ ۔ ۔

ایک طرف حکومت کے سو دن مکمل ہونے پر جہاں حکومت وقت سے سخت ترین سوالات پوچھے جارہے ہیں، میڈیا پر حکومتی ترجمانوں کو اپنی حکومت کو اپنا دفاع کرنے میں سخت دشواری ہورہی ہے، تو دوسری طرف حکومت کے لئے کرتارپور کوریڈور (راہداری) کا سنگ بنیاد رکھنا تازہ ہوا کے جھونکے سے کم نہیں، کیونکہ جہاں حکومت سے اپنی کارکردگی بارے سوالات ہورہے تھے اب ہر طرف کرتارپور کوریڈور چھایا ہوا ہے، جیسے حکومتی سو دن کی کارکردگی پس پشت چلی گئی ہو۔

Read more