رونق بڑی بی اور ایک خوف

آشیانہ رحمت کی تیسری منزل میں ثمر صاحب اپنے اہل خانہ کے ساتھ رہائش پذیر تھے۔ پرانی بوسیدہ سی منزل، چھوٹے چھوٹے سے دو کمرے، ایک باورچی خانہ، بیٹھک نما ایک کمرہ اور ایک غسل خانہ۔ گھر کی دیواروں سے پینٹ اکثر جگہ سے اکھڑا ہوا تھا۔

سیمنٹ اور سیم کے سنگم نے اکثر جگہ تجریدی آرٹ بنا رکھا تھا۔ ان دیواروں کے آرٹ کو سمجھنے کے لیے کوئی خاص مہارت درکار نہ تھی بس افلاس سے آگاہی ساری الجھن سلجھا دیتی تھی۔

Read more

سچی اور مختصر کہانی

بادل تھمنے کو تیار نہ تھے۔  ندی نالوں میں پانی کی روانی میں بلا کی تیزی تھی۔ پانی کی سطح بلند ہوتی جا رہی تھی۔ سیلاب کے آنے کی اطلاع لاؤڈ اسپیکرز پر دی جا رہی تھی۔ ہنگامی حالات میں فوج کو الرٹ رہنے کا حکم تھا۔ سیلابی ریلے کے خوف سے اکثر مکین اپنے…

Read more

حرام خور کی بیٹیاں

حرام خور کو اپنا اصل نام یاد نہ تھا۔ گھر میں پیار سے بلانے کا رواج نہ تھا پرحقارت سے اس کو آواز دینے والوں کی کمی نہ تھی۔ دن رات حرام خور گھر والوں کے سامنے ہاتھ باندھے زر خرید غلام کی طرح ان کے حکم کی منتظر رہتی۔ وہ حرام خور اس لیے تھی کیونکہ وہ شادی کے بعد یکے بعد دیگرے تین بچیوں کو جنم دینے کا جرم کر چکی تھی۔ پہلی بار ہی بیٹی پیدا کرنے کے گناہ میں اس کو حرام خور کے لقب سے نوازا گیا تھا۔ گھر کا ہر فرد بس اتنا جانتا تھا کہ یہ کھا کھا کے حرام کرتی ہے کہ اس سے تو ایک بیٹا بھی جنا نہیں جاتا۔

Read more

نافرمان پردیسی بیٹے کی سچی کہانی

خوابوں کی دنیا کا حقیقی دنیا سے گہرا تعلق ہوتا ہے۔ کہتے ہیں جو ہمارے شعور اور لا شعور میں کہیں دفن ہو وہ ہمارے خواب کی شکل اختیار کر لیتا ہے۔ ان میں سے کچھ یاد رہ جاتے ہیں اور کچھ ذہن سے محو ہو جاتے ہیں۔ کچھ برس پہلے میں نے ایک خواب…

Read more

گول روٹی نہ پکانے والی انیقہ خالد کا جنت سے اپنے والد کے نام خط

میرے پیارے بابا یہاں وقت کا پتہ نہیں لگتا پر سنا ہے ایک سال گذر گیا ہے۔ پر میں ایک پل کو بھی اس دن کو بھولی نہیں ہوں۔ پتہ ہے اس دن میں بہت خوش تھی کہ آج میں اپنے بابا کو اپنے ہاتھ سے روٹی بنا کر کھلاؤں گی اور مجھے اس بات…

Read more

مجھے محبت ہو گئی ہے

رات کا پچھلا پہر تھا ۔ نگاہ آسماں کی جانب اٹھی تو گہرے نیلے امبر پر نصف چاند نے میرے وجود پر سکتہ طاری کر دیا۔ ایک نامکمل شئے کی دلکشی اتنی پر اثر کیسے ہو سکتی ہے۔ پہلی نظر میں کسی کی چاہت میں گرفتار ہونا شاید اس ہی کا نام ہے ۔ پل…

Read more

مرد بھی مظلوم ہوتے ہیں

لوگوں کا خیال ہے کہ ہم خواتین کے لیے دل میں ایک نرم گوشہ رکھتے ہیں۔  ان کے حق میں لکھتے ہیں۔ ارے جناب آج اس غلط فہمی کو ہم دور کئے دیتے ہیں۔ ہم اس خیال کی پر زور مخالفت کرتے ہیں کہ ہم صرف عورتوں کے حق کی بات کرتے ہیں۔ ہم تو…

Read more

کیا طوائف کا دل بھی دھڑکتا ہو گا؟

کنول پھولوں کی سیج پر پیدا ہوئی۔ پیدائش بھی ایسے گھر جہاں بیٹی کے آتے ہی ڈھول بجتے ہیں۔ بیٹی کے نزول کے بعد خوشی کی لہر دوڑ جاتی ہے۔ جہاں بیٹی کو خوش قسمتی کی کنجی سمجھا جاتا ہے۔ بیٹیوں کو پیدا ہوتے ہی ادب آداب سکھائے جاتے ہیں۔ ان کی تربیت میں کسی…

Read more