نکودر کے تحصیل دار کا جلسہ اور کسان کی تقریر

میرے دادا جان ( 1892۔ 1963 ) ایک سیلانی آدمی تھے۔ غلام محمد نام تھا لیکن بابو غلام محمد مظفر پوری کے نام سے جانے جاتے تھے۔ ہندوستان کا چپہ چپہ دیکھ رکھا تھا۔ اس کے علاوہ بسلسلہ ملازمت برما، ایران، عراق اور مشرقی افریقا کے ممالک (کینیا، یوگنڈا اور تنزانیہ) میں ان کا قیام…

Read more

ٹیکسٹ بک کا استبداد

کوئی ایک عشرہ قبل لاہور میں ایک پرائیو یٹ یونیورسٹی نے مجھے کمپیوٹر سائنس کے طلبہ کو فلسفے کا ایک ابتدائی کورس پڑھانے کی دعوت دی۔ کورس آؤٹ لائن پر گفتگو کرنے کے لیے جب میں ڈین صاحب کے پاس گیا تو انہوں نے مجھ سے سوال کیا کہ میں کون سی ٹیکسٹ بک استعمال…

Read more

ظفر اقبال: لا تنقید سے آب رواں تک

محترم عطاءالحق قاسمی صاحب نے اپنے ایک کالم میں ”خود تشخیصی اسکیم“ کی لاجواب ترکیب استعمال کی ہے جس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے بعض مخلوقات اپنے مقام اور مرتبے کا تعین کر لیتی ہیں۔ ظفر اقبال صاحب کی ”لا تنقید“ پڑھنے کے بعد اندازہ ہوا کہ انہوں نے اس اسکیم کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے…

Read more

وردی پوش ذہن کا مخمصہ اور جمہوریت

اکتوبر 2002 کی بات ہے کہ شعبہ فلسفہ، پنجاب یونیورسٹی، کے صدر شعبہ ڈاکٹر نعیم احمد صاحب کو کمانڈ اینڈ سٹاف کالج، کوئٹہ سے پندرہ روز کے لیے دو کورس پڑھانے کاایک دعوت نامہ موصول ہوا۔ ڈاکٹر صاحب نے اپنی مصروفیات کی بنا پر معذرت کی اور اپنی جگہ میرا نام بھیج دیا۔ وہاں سے…

Read more

یہ باتیں جھوٹی باتیں ہیں، “انگریزوں” نے پھیلائی ہیں

ایک سینیر صحافی اور کالم نگار نے اپنے کالم میں ایک بڑی تاریخی حقیقت بیان کرنے کے بعد ایک استفسار کیا ہے: "ہندو اور مسلمان ایک ہزار سال سے ایک ساتھ پرامن اور خوشحال طور پر رہتے آئے ہیں۔ یہ ایک ہزار سال کا عرصہ کیا جادوئی عرصہ تھا کہ خون خرابے سے بچا رہا۔"…

Read more

سلطان محمود غزنوی اور مسلم مورخین ہند

مسلمانوں کی تاریخ فاتحوں اور لشکر کشاوں کے باب میں ہرگز تہی مایہ نہیں لیکن جس قدر تعریف و توصیف سلطان محمود غزنوی پر نچھاور کی گئی ہے وہ حیرت انگیز ہے۔ اس کا مقام و مرتبہ بیان کرنے میں حد درجہ مبالغہ روا رکھا گیا ہے۔ جوزجانی نے سلطان محمود کی ولادت کا ذکر…

Read more

سومناتھ پر رومیلا تھاپر کی کتاب کا جائزہ

ابن انشا کا اورنگ زیب عالمگیر پر یہ جملہ بہت مشہور ہوا ہے کہ یہ وہ بادشاہ تھا جس نے نہ کوئی نماز چھوڑی اور نہ کوئی بھائی چھوڑا۔ لیکن ابن انشا سے کئی سو سال پہلے سلطان محمود غزنوی کے درباری شاعر فرخی نے اسے خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا تھا سلطان معظم…

Read more

فلسفی، سائنس دان اور خرد افروزی کے پیامبر ماریو بنگے کی صد سالہ سالگرہ

آج ارجنٹائن میں پیدا ہونے والے سائنس دان فلسفی ماریو بنگے کی صد سالہ سالگرہ ہے۔ (اس کے نام کا تلفظ بوں گھے کیا جاتا ہے)۔ کارل پوپر کی کتب کے مطالعے کے دوران میں جن اور صاحبان علم و دانش کے نام سے تعارف ہوا ان میں ایک نام ماریو بنگے کا تھا۔ پوپر…

Read more

بڑودہ میں سیلاب، ریلوے کی تعمیر نو اور بھگت کبیر کا جزیرہ

میرے دادا جان ( 1892۔ 1963 ) ایک سیلانی آدمی تھے۔ غلام محمد نام تھا لیکن بابو غلام محمد مظفر پوری کے نام سے جانے جاتے تھے۔ ہندوستان کا چپہ چپہ دیکھ رکھا تھا۔ اس کے علاوہ بسلسلہ ملازمت برما، ایران، عراق اور مشرقی افریقا کے ممالک (کینیا، یوگنڈا اور تنزانیہ) میں ان کا قیام…

Read more

تاریخ: حقیقت یا افسانہ؟

سکول کے زمانے میں نسیم حجازی کا ناول محمد بن قاسم پڑھا۔ اسی زمانے میں مولانا غلام رسول مہر کی کتاب تاریخ اسلام ہاتھ لگی تو اسے بھی پڑھنا شروع کیا۔ محمد بن قاسم کے حالات پڑھتے ہوئے اس بات کا افسوس ہوا کہ مولانا مہر نے محمد بن قاسم کے اس دوست کا کوئی…

Read more