انقرہ: ایک مقبرہ، کچھ مسجدیں اور بہت سے مے خانے

بچپن میں جن مسلم ممالک کا سب سے زیادہ ذکر سننے کو ملا وہ ترکی اور ایران تھے۔ سعودی عرب کا ذکر سوائے حج کے اور کسی معاملے میں سننے کو نہیں ملتا تھا۔ گاوں کی فضا میں سعودیوں کو وہابی ہونے کے ناتے زیادہ پسند بھی نہیں کیا جاتا تھا۔ ترکی اورغازی مصطفیٰ کمال…

Read more

سکولوں میں تاریخ نہ پڑھائی جائے

پاکستان، بھارت اور بنگلہ دیش میں عامۃ الناس کی سطح پر حقیقی اور خیالی دشمنوں کے خلاف ذہنوں میں نفرت کا جو لاوا پک رہا ہے اس کا بڑا سبب سکولوں میں پڑھایا جانے والا تاریخ کا نصاب ہے۔ پاکستان کے نصاب میں پائے جانے والے نفرت انگیز مواد کی طرف متعدد صاحبان علم وقتاً…

Read more

خبر اور روایت کو کیسے پرکھا جائے؟

جب ہم کوئی خبر سنتے ہیں یا تاریخ کی کسی کتاب میں کوئی واقعہ پڑھتے ہیں تو حیوان عاقل ہونے کے ناتے یہ دو سوال پوچھنا لازم ہو جاتا ہے: 1۔ کیا یہ خبر یا واقعہ سچ ہے؟ 2۔ کیا یہ خبر سچ ہو سکتی ہے؟ ہمیں معلوم ہے کہ تاریخی کتب میں واقعات کو…

Read more

انتقاد فکر کی روایت بمقابلہ مذہبی روایت

بیسویں صدی کے ایک بہت ممتاز فلسفی کارل پوپر نے دو روایات کا تذکرہ کیا ہے۔ ایک انتقاد فکر کی روایت اوردوسری مذہبی روایت۔ مذہبی روایت میں اصل فریضہ ہے: بانی مذہب کی تعلیمات کو من و عن محفوظ رکھنا اور ان کو کسی تغیر و تبدل کے بغیر آئندہ نسلوں کو منتقل کرنا۔اس روایت…

Read more

عزت نفس کا احساس

میرے آبا و اجداد کا تعلق مشرقی پنجاب کے ضلع جالندھر کی تحصیل نکودر کے چھوٹے سے گاؤں مظفر پور سے تھا۔ اس گاوں کا ایک فرد بیسویں صدی کے آغاز میں بارہ برس کی عمر میں گھر سے نکلا اور امریکہ چلا گیا۔ کمال اس نے یہ کیا کہ وہاں جا کر پڑھائی کی…

Read more

بیت گیا یہ سال بھی

اس وقت عمر عزیز 68 سال، سات مہینے اور سات دن بنتی ہے۔ ان گزرے مہ و سال پر نظر ڈالتا ہوں تو ایسا لگتا ہے کہ ان برسوں میں صدیوں کا فاصلہ طے کیا ہے۔ پتہ نہیں اس کو خوش نصیبی کہا جائے گا یا نہیں کہ اس عمر میں ہجری صدی کو تبدیل…

Read more

اقلیتوں کے مساوی حقوق کا مسئلہ

تیس برس سے زیادہ پرانی بات ہے وی سی آر پر مشہورزمانہ سیریز سٹارٹریک کی ایک قسط دیکھنے کا اتفاق ہوا۔ اس قسط میں ایک شخص سپیس شپ میں آ جاتا ہے جس کی سر سے پاوں تک ایک سائیڈ سفید اور دوسری سیاہ ہوتی ہے۔ وہ پناہ کا طالب ہوتا ہے۔ کچھ دیر کے…

Read more

کارل پوپر کا خطبہ: رواداری اور فکری ذمہ داری

کارل پوپر   *** اردو ترجمہ: ڈاکٹر ساجد علی سقراط کا یہ بصیرت افروز قول سقراط کے اپنے زمانے کی بہ نسبت موجودہ زمانے کے زیادہ مناسب حال ہے کہ ” میں جانتا ہوں کہ میں کچھ نہیں جانتا اور اتنی سی بات کا عرفان بھی بہت مشکل سے ہوا ہے۔ “ ہمارے پاس بہت عمدہ جواز…

Read more

آج رات کے بے نوا مسافر ناصر کاظمی کا یوم پیدائش ہے

ناصر کاظمی کی شاعری کے دو بنیادی موتیف اداسی اور تنہائی ہیں۔ ناصر کے دوستوں اور نقادوں نے اداسی کا سبب ہجرت کو قرار دیا ہے۔ یہ بات اس قدر زور شور سے پھیلائی گئی ہے کہ آج ناصر ہجرت کا شاعر بن کر رہ گیا ہے۔ میرا ناصر کاظمی سے تعارف صرف ان کی…

Read more

میں نے سنہ 71ء کے لہو لہو دسمبر میں کیا دیکھا؟

اڑتالیس برس بیت چکے ہیں مگر جب بھی دسمبر کا مہینہ آتا ہے تو دل میں کرب و الم کی ٹیس اٹھنے لگتی ہے مگر زیادہ رنج اپنی حماقتوں کو یاد کرکے ہوتا ہے کہ انسان اگر ایک بیانیے، بالخصوص سرکاری بیانیے، کا اسیر ہو جائے تو کس طرح سامنے کی حقیقتوں کو جاننے اور…

Read more