سوشل میڈیا کا گلا گھونٹ دیجئیے

اطلاعات ہیں کہ وفاقی حکومت سوشل میڈیا صارفین کے حوالے سے کڑی قانون سازی کرنے جا رہی ہے۔ سوشل میڈیا پر مزید گفتگو سے پہلے ایک شاہکار انگریزی فلم کا ذکر کرنا چاہوں گا۔ کیچ میں اِف یو کین (Catch Me If You can) ۔ سسپنس سے بھرپور یہ فلم فرینک ابگنیل کی زندگی پر…

Read more

کیا سیاح کڑاہی گوشت کھانے آئے گا؟

کبھی کبھی خیال آتا ہے کہ خالقِ کائنات نے ہم پاکستانی مسلمان کس افضل مٹی سے پیدا کیے ہیں۔ مسلم امہ کے بزعمِ خود ٹھیکیدار ہم ہیں۔ برادر اسلامی ممالک کی ہر مشکل کا حل ہمارے پاس ہے۔ اغیار کی سازشوں کی بھی ہمیں پوری خبر ہے۔ مردم خیزی ایسی کہ اینٹ اٹھاؤ تو لیڈر…

Read more

عمران خان کا وسیم اکرم اور گوئبلز

کوئی دو عشرے پہلے جب عمران خان نے تحریک انصاف کی داغ بیل ڈالی تھی، اس وقت سے عمران خان کو سپورٹ کیا۔ 2011 کے بعد دلوں میں موجود نرم گوشہ باقاعدہ حمایت میں بدل گیا۔ 2013 اور 2018 کے انتخابات میں پی ٹی آئی کو ووٹ بھی ڈالا۔ اب ایک ووٹر اور سپورٹر کی…

Read more

میرا ساہیوال کُوفے میں ہے!

ساہیوال میں مرنے والے معصومین کی لاشوں کا پُرسہ کسے دیں، پریوں جیسے چہرے والی منیبہ اور ہادیہ کے سامنے نوحہ پڑھیں یا معصوم عمیر جو اس قتلِ عام کا چشم دید گواہ ہی نہیں اپنی دو چھوٹی بہنوں کا واحد مائی باپ بھی ہے، کو انصاف میں پیش رفت سے آگاہ کریں؟ ستم در ستم تو یہ ہے کہ انصاف کا یہ خون اُن روایتی سیاستدانوں کے دورِ حکومت میں نہیں ہوا کہ جن کو ہم ہمیشہ سے کرپٹ قرار دیتے آئے ہیں۔ جن کے دور میں ماڈل ٹاؤن میں چودہ لاشیں گریں تو ہم نے دھرنے دیے۔

مہذب ملکوں کی روایات کے حوالے دیے۔ بدقسمتی سے انصاف کا خون اُس جماعت کے دورِحکومت میں ہوا ہے جس کا نام ہی تحریک انصاف ہے۔ عمران خان کہ گذشتہ سبھی سالوں میں ہر حادثے کا ملبہ شریف خاندان پر ڈال کر استعفیٰ مانگا کرتے تھے، اور اپنی چکنی چپڑی باتوں اور کرشماتی شخصیت کے ساتھ جب مغربی ملکوں کی اعلیٰ روایات کے حوالے دیتے تو کس کافر کو نہ یقین آتا کہ یہ شخص کوئی انقلاب برپا کرے گا۔

Read more

مسیحا کی تلاش اور ہم عوام

ہم برصغیر پاک و ہند کے عوام کے ڈی این اے میں ایک عنصر بقدرِ اضافی پایا جاتا ہے اور وہ ہے مرعوبیت کا۔ ہم بہت جلد کسی سے مرعوب ہو جاتے ہیں۔ اسی وجہ سے اس خطے میں کوئی بھی چورن بیچنا بہت آسان ہے۔ مثلاً کوئی جمہوریت بیچتا ہے تو ہم خرید لیتے…

Read more

میری پیاری اسٹیبلشمنٹ

دوسری یا تیسری کلاس میں پڑھتے تھے جب سے اخبار پڑھنے کا چسکا لگا اور پھر ایسا لگا کہ آج بھی روز چار پانچ اخبار پڑھے بغیر دن مکمل نہیں ہوتا۔ قریب تین عشرے ہونے کو آئے ہیں۔ اس وقت صدر غلام اسحاق خان کا طوطی بولتا تھا۔ صدر صاحب نے جب چاہا جس بات…

Read more

جسٹس ثاقب نثار: تم سے پہلے وہ جو اک شخص یہاں تخت نشیں تھا

کیسا قحط الرجال ہے کہ جسٹس کارنیلئس کی نشست پر جسٹس افتخار چوہدری اور جسٹس ثاقب نثار ایسے لوگ براجمان ہو رہے ہیں۔ جسٹس ثاقب نثار کی ریٹائرمنٹ کے بعد ایک سوال پھر سے سر اٹھا رہا ہے کہ عدلیہ پر تنقید ہو سکتی ہے یا نہیں، جج سے سوال کیا جا سکتا ہے یا…

Read more

منی بجٹ: اسد عمر کی گگلی نے اپوزیشن کی وکٹیں اکھاڑ دیں

  23 جنوری کو وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے اپنے دورِ وزارت کا دوسرا منی بجٹ پیش کیا، اور اس موقع پر قومی اسمبلی سے دھواں دار خطاب کرتے ہوئے طنز کے نشتر بھی برساتے رہے۔ منی بجٹ پر بحیثیت مجموعی مثبت عوامی ردِعمل آیا۔ میڈیا اور تاجر برادری کے بیشتر حلقوں نے مختلف…

Read more

حساس اداروں کو کب احساس ہو گا؟

پتہ نہیں کس ستم ظریف نے خفیہ اداروں کو اخباری اصطلاح میں حساس ادارے کہنے کا سلسلہ شروع کیا تھا۔ خفیہ ادارے کہنے میں کیا مضائقہ تھا؟ اردو لفظ حساس کا لفظی معنی سے دردِدل رکھنے اور زیادہ احساس کرنے والا چہرہ ذہن میں ابھرتا ہے۔ ہم مثبت سوچتے رہیں تو مثبت ہی نظر آتا…

Read more

ارزاں ہے وطن کے سپوتوں کا لہو

گذشتہ دو ہفتوں سے پاکستان اور برادر ہمسایہ ملک افغانستان کے تعلقات سخت سفارتی تناؤ کا شکار ہیں۔ معاملہ ہی ایسا سنگین نوعیت کا ہے جس نے مضبوط برادرانہ تعلقات میں دراڑ ڈال دی ہے۔ افغان شہر جلال آباد کے پولیس چیف داؤد خان جو نجی مصروفیات کی بنا پر کابل میں موجود تھے، کو اغوا کر لیا گیا۔ یہ خبر افغان صدارتی محل پر بجلی بن کر گری۔ افغان صدر اشرف غنی نے فوراً وزیراعظم عمران خان کو فون کر کے معاملے کی سنگینی کا احساس دلایا۔

چند دن لا پتہ رہنے کے بعد داؤد خان کی لاش پشاور سے ملی۔ اس خبر کا سننا تھا کہ افغان صدر نے پاکستان کے خلاف سخت بیانات دینے شروع کر دیے، بھارتی میڈیا جو ایسی پاکستان مخالف خبروں کی ٹوہ میں رہتا ہے، فوراً پاکستان کے دہشت گرد ریاست ہونے کا راگ الاپنا شروع کر دیا۔ افغانستان نے اپنی فوجیں پاکستانی سرحد پر جمع کرنی شروع کر دیں۔ اغوا اور پھر قتل ہونے والا شخص کوئی عام آدمی نہیں تھا، ایک اہم افغان شہر کا پولیس چیف تھا۔

Read more