کراچی میں نرسنگ اسٹاف کا دھرنا، سرکاری اسپتالوں میں طبی سرگرمیاں معطل


\"\"

سندھ بھر کے نرسنگ اسٹاف نے اپنے مطالبات کے حصول کے لئے طبی سرگرمیوں کو معطل کرکے کراچی پریس کلب کے باہر دھرنا دے رکھا ہے۔

جوائنٹ نرسز ایکشن کمیٹی کے رہنما کا کہنا ہے کہ صوبہ سندھ کے علاوہ دیگر تینوں صوبوں میں نرسنگ اسٹاف کی تنخواہیں بہترین  اور انہیں دیگر مراعات فراہم کی جارہی  ہیں لیکن ہمارے ساتھ حکومت کا ناروا سلوک جاری ہے۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ نرسنگ طلبا کا وظیفہ اور دیگر مراعات کو ملک کے دیگر صوبوں کے مساوی کیا جائے اور اہل نرسوں کو ترقی دی جائے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں:  ینگ ڈاکٹرزنے ایک بارپھرہڑتال کردی

دھرنے میں شریک نرسوں کا کہنا تھا کہ نرسنگ اسکولوں کے معطل کئے گئے 13 پرنسپلز کو فوری طور پر بحال کیا جائے اور اگرہمارے مطالبات منظور نہ کئے گئے تو  طبی سرگرمیوں کے بائیکاٹ کے ساتھ ساتھ دھرنا بھی جاری رکھا جائے گا۔

 

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں