جو کیڑی سو کائی

وہ لمبا آدمی لمبی سی گندی قمیض پہنے ہوئے تھا، گندی سی شلوار، گندی سی قمیض کے نیچے پھنسی ہوئی تھی۔ سر پر گندی سی پگڑی ٹکی ہوئی تھی۔ قمیض اور شلوار پر بہت سارے دھبّے لگے ہوئے تھے لگتا تھا کہ پہننے کے بعد سے شلوار اور قمیض دھوئی نہیں گئی ہے۔ آنکھوں پر…

Read more

ایک پُرانی غلطی

میں نے ساجدہ کو غور سے دیکھا۔ تھکی ہوئی کسی دیوی کی طرح معصوم لگ رہی تھی وہ۔ چہرے پر تھکن کے ساتھ ساتھ ایک عجب طرح کا اطمینان تھا۔ وہ بے حس، بے ہوش، بے خبر سورہی تھی۔ دنیا و مافیہا سے لاعلم گہری نیند میں نہ جانے کن خوابوں کی نگری میں کھوئی…

Read more

سندھی کسان اور کتّے کی گواہی

وہ قبر ذرا سی مختلف تھی۔ عام قبروں سے ہٹ کر بالکل سڑک کے ساتھ لگی ہوئی۔ میں تو اسے قبر نہیں سمجھا تھا۔ بس مٹی کا ایک ڈھیر تھا وہ کسی بھی طرح کوئی قبر نہیں لگ رہی تھی۔ اسی قبر نما مٹی کے ڈھیر کے سامنے میری گاڑی خراب ہوگئی تھی۔ میں جیکب…

Read more

چھوٹا دماغ اور بڑا مسئلہ

وہ مجھے کوئٹہ میں ملا۔ ٹیکسی میں بیٹھتے ہی مجھے پتہ چل گیا تھا کہ ٹیکسی ڈرائیور مذہبی آدمی ہے۔ کوئٹہ میں داڑھی رکھنا ایک عام سی بات ہے لیکن ہر داڑھی والے کا مذہبی ہونا کوئی ضروری نہیں۔ بے شمار بلوچ اور پٹھان داڑھی والے مل جائیں گے جن کی زندگی میں مذہب کا…

Read more

کلین لڑکی کلین ٹوائلٹ

ہوٹل بہت شاندار تھا۔ شاندار کے ساتھ ساتھ کچھ اور بالکل نئی نئی، بلکہ اگر یہ کہا جائے کہ عجیب وغریب چیزیں تھیں تو کہنا غلط نہیں ہوگا اوروں کے لئے شاید عجیب وغریب نہ ہوں مگر کم ازکم میرے لئے تو عجیب وغریب ہی تھیں۔

بات یہ ہے کہ اپنے کام کے سلسلے میں مجھے بہت سے یورپ اور امریکہ کے بڑے بڑے ہوٹلوں میں رہنے کا موقع ملا تھا مگر یہ ہوٹل بہت ہی مختلف تھا بالکل مختلف۔ یورپ اور امریکہ کے ہوٹلوں، موٹلوں اور مہمان خانوں سے۔

Read more

امی کا جنازہ اور بدعت

امی کی میت آغا خان اسپتال کے برف خانے میں رکھی ہوئی تھی۔ برف کی طرح ٹھنڈی، جذبات خواہشات تضادات سے مبرّا، پیار سے بھری ہوئی آنکھیں بند تھیں۔ چوڑی پیشانی پر پڑی ہوئی شکنیں کہیں کھو گئی تھیں۔ مسکراتے ہوئے ہونٹوں سے ان کے سامنے کے دو چمکتے ہوئے دانت نظر آرہے تھے اورہمیشہ…

Read more

ماں کا آخری خط

پیارے بیٹے

خوش رہو، جو بھی کرو خوشی سے کرو۔ تمہاری زندگی طویل ہو، میری زندگی بھی تمہیں لگ جائے۔ تم جیو پھلو پھولو اور اللہ تعالیٰ کی رحمتیں تمہارے ساتھ ہوں۔

میں اورتمہارے ابو تمہارے لئے پریشان رہتے ہیں۔ ہماری تو یہی خواہش ہے کہ تم جلداز جلد اپنی تعلیم پوری کرلو اور اس قابل ہوجاؤ کہ دنیا میں سر اٹھا کر اچھے سے جیو، ہماری تو جیسی گزرگئی اچھی ہی گزرگئی۔ سستا زمانہ تھا۔ تمہارے ابو نے بغیر رشوت اور بے ایمانی کے گزارا کر ہی لیا اور کر ہی لیں گے، پر اب زمانہ خراب ہے، مہنگائی ہے، بے ایمانی رشوت عام ہے۔

Read more

محبت کی خاطر

میں نے اس کے سرخ و سفید جاذب نظر چہرے پر چوڑی پیشانی اور دونوں خوبصورت ذہین آنکھوں کے درمیان گولی ماری تھی۔ اس کا خوفزدہ اور پیلا ہوتا ہوا چہرا اب تک میرے سامنے ہے۔ پہلے اس کے چہرے پہ حیرت ہی حیرت نظر آئی اس نے سوچا بھی نہیں ہوگا کہ میں وہاں…

Read more

عبدالسلام کی بچی اٹلی نہ جا سکی

انہیں میں نے انٹرنیشنل فارمرز مارکیٹ میں دیکھا۔ انٹرنیشنل فارمرز مارکیٹ بہت بڑی دکان ہے، یہاں زندہ مچھلی سے لے کر ہر قسم کا گوشت ہر قسم کے لوگوں کے لئے اور دنیا بھر میں اُگنے والی ہر طرح کی سبزی، دنیا کے ہر ملک نسل اور اقوام کے مصالحہ جات اور تقریباً ہر قسم…

Read more

راستہ بھولنے کے بعد خوشی کا سوال کیسا؟

”خوش کیسے ہوسکتی ہوں؟ “ اس نے اپنی بھاری بھاری پلکوں والی آنکھوں سے میری آنکھوں میں جھانکتے ہوئے کہا۔ اس کے چہرے کا کرب، اس کے من کا دکھ، اس کے اندر کی بے چینی سب کچھ جیسے میرے سامنے آگیا۔ مجھے شدت سے احساس ہوا کہ یہ سوال مجھے نہیں کرنا چاہیے تھا۔…

Read more