سندھ پر برطانوی مفکرین کی کتابیں

گوکہ پیپلز پارٹی کی حکومت کو سندھ میں اس کی خراب کارکردگی پر نشانہ بنایا جاتا ہے اور یہ تنقید بڑی حد تک درست بھی ہے مگر کم از کم کتابوں کی سطح پر سندھ حکومت کی محکمہ ثقافت نے کچھ اچھے کام کیے ہیں جن کا ذکر کیا جانا چاہیے۔ اگر آپ کتابوں کے…

Read more

پاکستان کی تاریخ کا اجمالی جائزہ

اس مارچ کے مہینے میں قرارداد لاہور جسے بعد میں قرارداد پاکستان کہا گیا کو 80 برس پورے ہو رہے ہیں تو موزوں لگتا ہے کہ ایک نظر اپنے حالیہ ماضی پر ڈالی جائے اور دیکھا جائے کہ اس عرصے میں کیا کچھ کیا گیا ہے۔ گوکہ ہماری تاریخ اتنی قابل فخر نہیں کہ اس کے ساتھ ہم دنیا میں سر اٹھا کر کھڑے ہوسکیں لیکن اتنی اہم ضرور ہے کہ اس کا نئی نسل کو ضرور پتا ہونا چاہیے۔ اس مضمون میں کوشش کی جارہی ہے کہ مختصراً تاریخ کو چند صفحات میں سمیٹ دیا جائے۔

جب پاکستان آزاد ہوا تو اس میں رہنے والے مختلف طبقات کے اپنے خواب تھے۔ آج کے نوجوان اکثر یہ سوال پوچھتے ہیں کہ کیا پاکستان صحیح بنا یا ہندوستان کا متحد رہنا ہی اچھا ہوتا۔ اس سوال کا مختصر جواب یہ ہوسکتا ہے کہ اگرمجھ سے 1940 میں پوچھا جاتا تو شاید میں یہ کہتا کہ ہندوستان کو متحد رہنے دو لیکن اگر یہیں سوال مجھ سے 1947 میں پوچھا جاتا تو شاید میں یہ کہتا کہ پاکستان کو اب بن ہی جانا چاہیے۔ اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ 1940 سے 1947 تک کے سات سال میں بات اتنی آگے بڑھ چکی تھی کہ اگر پاکستان نہ بنتا تو غالباً پورا ہندوستان بڑے طویل عرصے تک خون خرابے کاشکار رہتا اور پھر بالآخر ٹوٹ ہی جاتا۔

Read more

میلوش فورمان: چیک فلم ہدایت کار جس نے اپنی ریاست کو للکارا

اس مضمون میں ہم میلوش فورمان کا کچھ ذکر کریں گے جوگزشتہ سال کے اوائل میں امریکا میں فوت ہوئے۔ 1950 اور 1960 کے عشروں کا یورپ ایک مایوس کن نظارہ پیش کررہا تھا۔ دوسری جنگ عظیم کی تباہ کن یادیں ابھی تازہ تھیں اور سرد جنگ کے آغاز نے ان یادوں کو اور تلخ…

Read more

انور جلال پوری۔ شاعر اور مترجم

جنوری 2019 کے پہلے ہفتے میں اردو کے دو بڑے شاعر گزر گیے تھے۔ رسا چغتائی اور انور جلال پوری۔ گوکہ رسا چغتائی کے بارے میں کئی مضامین نظر سے گزرے، انور جلال پوری کو کم و بیش پاکستان میں نظر انداز کیا گیا۔ ان کا اصل نام انوار احمد تھا مگر انہوں نے اپنے…

Read more

اگر تلہ سازش کیس: وہ مقدمہ جس نے تقسیم پاکستان کا عمل تیز کیا

پاکستان کی تاریخ میں کئی مقدمے ایسے گزرے ہیں جنہیں مختلف سازشوں سے موسوم کیا گیا۔ ان میں اکثر مقدمے بغیر کسی نتیجے کے ختم ہوگئے۔ قیام پاکستان کے بعد پہلے دو عشروں میں راول پنڈی سازش مقدمہ 1951 میں اور اگر تلہ سازش مقدمہ 1967 میں قائم کیا گیا۔ ان دونوں مقدموں نے پاکستان…

Read more

فہمیدہ ریاض اپنی نثر کے آئینے میں

جب فہمیدہ ریاض کا تہتر سال کی عمر میں لاہور میں انتقال ہوا تو اکثر ذرائع ابلاغ نے انہیں پاکستان کی ایک بڑی شاعرہ قرار دیا مگر اس بات کا ذکر نہیں کیا گیا کہ وہ ایک اعلیٰ پائے کی دانش ور اور نثر نگار بھی تھیں جنہوں نے نہ صرف افسانے بلکہ ناول بھی…

Read more

پاکستان میں عوامی تحریکیں اور مزاحمتی ادب

پاکستان میں عوامی تحریکوں پر ہمیں زیادہ مواد یا کتابیں اس لیے نہیں ملتیں کہ ان پر بہت کم لکھا گیا ہے۔  مطالعہ پاکستان میں پڑھائی جانے والی تاریخ زیادہ تر حکم ران طبقات اور سیاسی و سماجی طور پر بالادست مقتدرہ کے بیانیے پر مبنی ہے۔  اس کے علاوہ ہماری ستر سالہ تاریخ کے…

Read more

چین اور سوویت یونین کی سیاست پر ایک نظر

سن دو ہزار انیس کے خاتمے کے ساتھ چین اور سوویت یونین کی دو بڑی شخصیات کی زندگی کے سورج بھی ڈوب گئے۔ چین کے سابق وزیر اعظم لی پنگ اور سوویت یونین کی کمیونسٹ پارٹی کے بڑے رہنما اناتولی لوکیانوف دونوں نے 1980 کے عشرے میں چین اورسوویت یونین کی سیاست میں اہم کردار…

Read more

بھٹو، مجیب، اور اندرا کی سیاست۔ دوسرا حصہ

قارئین کے لیے یہ بات یقیناً دلچسپی کا باعث ہوگی کہ جب مجیب الرحمان اور ان کے خاندان کو بنگلا دیشی افواج کے کچھ جونیئر فوجی افسروں نے قتل کیا تو بنگلا دیش کے فوجی سربراہ میجر جنرل شفیع اللہ تھے جن کو نئے صدر مشتاق خوندکر نے برطرف کرکے ضیاءالرحمان کو نیا فوجی سربراہ…

Read more

بھٹو، مجیب اور اندرا گاندھی کی سیاست

بنگلہ دیش کے سابق فوجی آمر جنرل حسین محمد ارشاد چودہ جولائی دو ہزار انیس کو انتقال کر گئے ان کی عمر نواسی سال تھی۔ ان کی وفات نے انیس سو ستر اور اسی کے عشروں کی سیاست کی یاد تازہ کردی۔ وہ عشرے اس خطے میں خاصی سرگرمی کے تھے آئیے ان پر نظر…

Read more