!کپتان ،تجھ کو پرائی کیا پڑی

بھارت میں عام انتخابات کے پہلے مرحلے کا آغاز ہو چکا ہے۔ نریندرمودی نے پہلے روز ہی بہار میں انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ڈینگ ماری کہ لوک سبھا کے انتخابی نتائج (تقریباًجو ایک ماہ بعد آئیں گے) سامنے آنے کے بعد اپوزیشن کا اتحاد ختم ہو جائے گا۔ مودی کا کہنا تھا کہ…

Read more

بھارتی حملہ: ویلڈن پاکستان

لگتا ہے کہ بین الاقوامی کوششوں کے نتیجے میں پاکستان اور بھارت کے درمیان ’منی وار‘ کا پہلا راؤنڈ ختم ہو گیا ہے۔ امید ہے کہ اس کے بعد بھارت کو پاکستان کو ترنوالہ سمجھ کر یلغار کرنے کی جرات نہیں ہو گی۔ منگل کو علی الصبح بھارتی ائیر فورس نے جو شب خون مارنے کی کوشش کی اس سے اس کی مزید جگ ہنسائی ہوئی۔ نہ جانے کیوں ہماری خارجہ اور سکیورٹی پالیسی کے بزرجمہروں نے اس بات پر اتنا زور نہیں دیا کہ انڈین ائیر فورس کے لڑاکا طیارے 1971 ء کے بعد پہلی بار پاکستان کی بین الاقوامی سرحد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بالاکوٹ کے قریب اپنا پے لوڈ (بم اور دیگر سامان) پھینک کرفرارہو گئے۔

بھارت کی پراپیگنڈہ مشینری نے کہا ہے کہ اس نے جیش محمد کا تربیتی مرکز تباہ کر دیا ہے اور وہاں پر موجود ڈھائی سے تین سو ’دہشت گرد‘ مارے گئے ہیں۔ یہ سراسر جھوٹ تھا جس کی قلعی چند گھنٹوں میں ہی کھل گئی۔ یہ درست ہے کہ بالاکوٹ میں ایک مدرسہ ہے اور اگر یہ واقعی ’بھارتی سورماؤں‘ کا ٹارگٹ تھا تو وہ اس سے کم از کم ایک کلو میٹر دور ہی بم گرا کر بھاگ گئے اگر خدانخواستہ اتنا جانی نقصان ہوتا جتنا بھارت دعویٰ کر رہا تھا تو دنیا بھر میں کہرام مچ جاتا لیکن جھوٹ کے پاؤں نہیں ہوتے۔

Read more

ملک مزید بیڑہ غرق ہونے کا متحمل نہیں ہو سکتا

نیب کو گزشتہ چند ہفتوں میں ”شریفوں“ کا مکو ٹھپنے کی کارروائیوں میں تین بار ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔ قومی احتساب بیورو جو ناقدین کے مطابق اب ایسے طرزعمل کا مظاہرہ کر رہا ہے جس سے احتساب سے زیادہ انتقام کی بو آتی ہے۔ نیب کے تمام تر پاپڑ بیلنے کے باوجود چیف جسٹس…

Read more

مودی کا ہندو قوم پرستی کا ایجنڈا

بھارت میں اگلے ماہ عام انتخابات کے انعقاد کے اعلان کے بعد انتخابی سرگرمیاں عروج پر پہنچ گئی ہیں۔ پاکستان میں ہونے والے عام انتخابات میں سیاسی مہم جوئی کے دوران بھارت کے سا تھ تعلقات کبھی الیکشن ایشو نہیں بنے لیکن مودی سرکار تو پاکستان کے ساتھ جنگجویانہ رویہ کو خوب ہوا دے رہی ہے۔ پلوامہ واقعہ کے بعد پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کر کے بھارتی انتخابی مہم میں پاکستان کو ایک بڑا ایشو بنادیا ہے۔ نریندر مودی کو بھارت کے قریباً 20 کروڑ مسلمانوں کے ووٹوں کی کوئی پروا نہیں، وہ تو انتہا پسند ہندوؤں کی وکٹ پر کھیل رہا ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ مودی نے 2014 ء میں ہو نے والے انتخابات میں بھی اینٹی پاکستان اور اینٹی مسلم کارڈز استعمال کیے تھے۔ اس نے خود کو ایک بزنس فرینڈلی وزیراعظم کے طور پر پیش کیا تھا۔ ان انتخابات میں زبردست کامیابی کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی نے یہ تصور کر لیا تھا کہ عوام نے ان کے ایجنڈے کی بھرپور توثیق کر دی ہے۔ برطانوی جریدے ’اکانومسٹ‘ کے مطابق مودی کا کٹر ہندو قوم پرستی کا تصور جس میں پاکستان کو سٹریٹجک حریف سے زیادہ تہذیب کے لئے خطرہ بنا کر پیش کیا جاتا ہے، انہیں اپنی پارٹی بی جے پی میں الگ تھلگ کرتا ہے۔

Read more

نیا میثاق جمہوریت!

یہ تو وقت ہی بتائے گا کہ پابند سلاسل سابق وزیراعظم میاں نوازشریف سے کوٹ لکھپت جیل میں پیپلزپارٹی کے نوجوان چیئرمین بلاول بھٹو کی ملاقات باسی کڑی میں ابال ہو گی یا تاریخ ساز! پیپلزپارٹی کے مطابق بلاول بھٹو میاں نوازشریف کی مزاج پرسی کے لیے گئے تھے ، اس کے سیاسی محرکات نہیں…

Read more

لیڈر شپ میں کچھ توشائستگی!

جنگ کے بادل ابھی پوری طرح چھٹے نہیں، بھارت کی چھیڑ چھاڑ جاری ہے، لیکن حکومت اور اپوزیشن کے درمیان حالیہ جنگی ماحول کے دوران جو ہم آہنگی نظر آئی تھی وہ اب پھر عنقا ہوتی جا رہی ہے۔ پہلے تو قومی اسمبلی میں منی فنانس بل کو بالکل اسی طرح منظور کرایا گیا جیسا کہ اب پارلیمنٹ میں وتیرہ بن چکا ہے۔ اپوزیشن کی ترامیم کو شامل کیے بغیر اسے منظور کرا لیا گیا۔ ایوان میں دستاویزات کے پرزے اسی طرح اڑائے گئے جیسا کہ گزشتہ برس بجٹ کی منظوری کے موقع پر تحریک انصاف کے ارکان نے اڑائے تھے بلکہ وہ حکومتی ارکان سے دست وگریبان ہونے کو بھی تیار تھے۔

وزیر خزانہ اسد عمر کی پلیٹ پاکستان کو درپیش گوناگو ں اقتصادی مسائل سے بھری پڑی ہے لیکن پھر بھی وہ اپنی جماعت کی روایت کے مطابق فقرے بازی سے باز نہیں رہ سکے۔ انھیں یہ اعتراض تھا کہ بلاول بھٹو نے انگریزی میں تقریر کیوں کی ان کا کہنا تھا کہ ان کی چوری باہر چھپی ہوئی ہے، ان کو بتانے کے لیے اپنا بیانیہ انگریزی میں دیا۔ اسد عمر نے یہ بھی کہا کہ زرداری قبیلہ بڑا غیور ہے معلوم نہیں کیوں بلاول، زرداری کہلوانے میں شرم محسوس کرتے ہیں۔

Read more

افغانستان: خطے میں امریکہ کا پارٹنر بھارت ہے یا پاکستان؟

ہمارے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور خارجہ پالیسی کے کار پردازوں کو یہ امید تھی کہ دوحہ میں طالبان اور امریکہ کو میز پر لاکر واشنگٹن اوراسلام آباد میں ہنی مون کا ایک نیا سلسلہ شروع ہو جائے گا لیکن یہ توقعات نقش بر آب ثابت ہوئیں۔ برادر شاہ محمود شاہ قریشی پہلی مرتبہ وزیر خارجہ نہیں بنے، وہ پیپلزپارٹی کے زرداری دور میں بھی کچھ عرصے تک اسی عہدے پر فائز تھے، اگرچہ ریمنڈ ڈیوس کا کیس مس ہینڈل کرنے کے بعد یہ قلمدان محترمہ حنا ربانی کھر کے حوالے کردیا گیا لیکن جب ان جیسا گھاک آدمی یہ کہہ کہ اب امریکہ اور افغانستان کے تعلقات میں نئی جہت شروع ہو گئی ہے اور سٹرٹیجک تعلقات بحال ہو گئے ہیں تو خاصی حیرانگی ہوتی ہے۔

میں نے اپنے گزشتہ کالم میں ہی اس رویہ پر نکتہ چینی کی کیونکہ میری رائے یہ تھی کہ پاکستان سے ڈومورکے مطالبے کا لامتناہی سلسلہ جاری رہے گا۔ امریکہ کے نیشنل انٹیلی جنس ادارے کے ڈائریکٹر ڈینئل کوٹس کی سال 2019 ء کی رپورٹ میں جنوبی ایشیا کو درپیش خطرات کے بارے میں خاصی چونکا دینے والی باتیں کہی گئی ہیں۔ چونکہ یہ امریکہ کا نقطہ نگاہ پراناہے اس لئے پاکستان کے لیے قطعاً حیران کن نہیں ہونا چاہیے لیکن اسلام آباد اور راولپنڈی کی طالبان اور امریکہ کو ملانے اور اس کے نتیجے میں اصولی اتفاق ہونے کے باوجود اس کی اہمیت خاصی بڑھ چکی ہے۔

Read more

حماقتیں۔۔۔۔ مزید حماقتیں

موجودہ غیر یقینی صورتحال عدالت عظمیٰ، نیب، ایف آئی اے اور حکومتی زعما کی کارروائیوں اور بیانات کے گرد گھوم رہی ہے۔ میاں نواز شریف ہوں یا شہباز شریف، آ صف زرداری ہوں یا ان کے برخوردار بلاول بھٹو اور ہمشیرہ فریال تالپور ہوں سب کرپشن کے مقدمات میں پھنسے ہوئے ہیں۔ نواز شریف اور…

Read more

محترمہ کلثوم نواز کی وفات اور سیاست و صحافت کے نامناسب زاویوں پر نظر ثانی کی ضرورت

محترمہ کلثوم نواز انتہائی سلجھی، سلیقہ مند اور شفیق خاتون تھیں، بہت سے لوگوں پر ان کی خوبیاں ان کی ناگہانی وفات کے بعد ہی آشکار ہوئیں۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ وہ انتہائی پرائیویٹ شخصیت تھیں۔ میڈیا نے ان کے 2000ء میں مشرف آمریت کو للکارنے کے واقعات بیان کیے تو بہت سے…

Read more

انتخابات کی ساکھ پر سوال؟

مسلم لیگ (ن) کے قائد اور سابق وزیراعظم میاں نوازشریف یہ نعرہ مستانہ لگا کر کہ سویلین بالادستی کی جنگ میں جیل ہو یا پھانسی ان کے قدم نہیں رکیں گے،  وطن واپس آ کر سکیورٹی اداروں کے ہاتھوں گرفتاری دے چکے ہیں۔ ان کی آمد کے روز جمعہ کو لاہور سمیت پنجاب بھر میں…

Read more