بہت دیر کی مہرباں آتے آتے! دینی مدارس میں ہائر سکنڈری تک کی تعلیم یقینی بنائی جائے۔ ۔ جمعیت علماء ہند

آج سے 153 سال قبل بانی دارالعلوم دیوبند حضرت مولانا محمد قاسم نانوتوی نور اللہ مرقدہ نے دارالعلوم کی تاسیس کے وقت جو بات کہی تھی وہ آج جمعیت علماء ہند نے اٹھائی ہے۔ اس طویل عرصے تک ارباب مدرسہ سوتے کیوں رہے؟ مولانا نانوتوی نے اغراض و مقاصد کے ضمن میں لکھا کہ ”چونکہ…

Read more

کیا حکومت الہیہ نے ہمیں داروغہ بنایا ہے

ولا تکونوا کالذین نسوا اللہ فانساھم انفسہم اور تم ان لوگوں کی طرح مت ہو جاؤ جنہوں نے اللہ کو بھلا دیا تو وہ اللہ کو کیا بھلائیں گے خود اپنے آپ کو بھلا دیا۔ کیا ہمارا مقصد زیست بس اتنا ہے کہ ملک و بیرون ملک نمودار ہونے والے واقعات پر معقول اور غیر…

Read more

جہیز ایک لعنت ہے۔۔۔ کیا واقعی؟

جہیز کی لعنت کے موضوع پر بے شمار مضامین اور سوشل میڈیا پر پوسٹ پڑھنے کو ملتا ہے لیکن کیا وجہ ہے کہ مسلم سماج میں اس کے خلاف خاطر خواہ بیداری نظر نہیں آتی ’ بیٹیوں کے جہیز کے لئے ایک باپ جتنی کوشش کرتا ہے اگر وہی کوشش ان کی تعلیم کے سلسلے…

Read more

کیا مسلمانوں کا مذہبی مسائل پر بحث کرنا تعمیری شغل ہے؟

ویسے تو یہ زمانہ قدیم سے چلا آرہا ہے کہ مسلمان خواہ ایک ہی مسلک کے کیوں نہ ہوں، دو خانوں۔ 1۔ دقیانوسی بنیاد پرست اور 2۔ روشن خیال لبرل میں بٹے ہوئے ہیں۔ یہ دونوں اپنے کو برتر اور دوسرے کو کمتر ثابت کرنے میں توانائی صرف کرتے رہتے ہیں۔ دونوں میں کبھی تال میل نہیں بیٹھا اور اس طرح مسلم سماج کے دل و دماغ میں تعمیری سوچ پنپنے کی جگہ غیر ضروری موضوعات جگہ لیتے رہے۔ ایک طبقہ دینی تو دوسرا طبقہ دنیوی کے بینر تلے سماج میں سرایت ہے۔

Read more

حجاب چادر اور پردہ پر اعتراض: ذمہ دار کون؟

6 فروری 2019 کو سلم ڈوگ ملیونیر کی دسویں سالگرہ منانے کے لیے ممبئی میں ایک جشن کا انعقاد ہوا تھا۔ اوسکار اور کئی قابلِ قدر ایوارڈ سے سرفراز عالمی شہرت یافتہ شہنشاہِ موسیقی اے آر رحمان نے اس موقع پر لی گئی ایک تصویر جس میں مشہور صنعتکار مکیش امبانی کی اہلیہ نیتا امبانی…

Read more

قلمی دوستی سے فیسبک فرینڈشپ تک کا سفر

تحریر سے تصویر بنانے کے عمل کو قلمی خاکہ کہتے ہیں۔ غالبا ستر کی دہائی میں ادبی میگزین اور رسالوں نے قلمی دوستی کا سلسلہ شروع کیا تھا۔ جس میں خواہش مند شخص مطلوبہ دوست کے بارے میں لکھے گئے قلمی خاکے سے اس کی ایک شبیہ اپنے دماغ میں بساتا تھا اور اس تحریری تفاصیل کی روشنی میں طے کرتا تھا کہ وہ کس قسم کی پرسنیلٹی ہے۔ اس لئے کہ دوستی کے خواہشمند اشخاص کی تفاصیل جیسے عمر، تعلیم، مشغلہ، شوق، ہوبی، پسندیدہ کتابیں، فلمز، خط و کتابت کا پتہ گھر کا پتہ وغیرہ دیے جاتے تھے۔

Read more

انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ملی ادارے

انڈیا اسلامک کلچرل سنٹر نئی دہلی میں مولانا اسرار الحق قاسمی رح ممبر پارلیمنٹ، ممبر شوریٰ دارالعلوم دیوبند صدر کل ہند ملی تعلیمی کونسل اور مرحوم پروفیسر مشیرالحسن ممتاز تاریخ داں سابق وائس چانسلر جامعہ ملیہ اسلامیہ کی اس دارفانی سے رحلت پر ایک تعزیتی پروگرام میں حاضرین کی قلت کا اصل سبب منتظمین کی…

Read more

مسلکی اختلافات پر رائے زنی کا حق

سوشل میڈیا پر لکھنے کی آزادی ایسی میسر ہوئی کہ پڑھے لکھے، کم پڑھے، ان پڑھ، پروفیشنل، عام اور متوسط لوگ سب ماہرِ سیاسیات، ماہرِ اقتصادیات، ماہرسماجیات، ادیب، نقاد، صحافی، عالم، مفتی اور تجزیہ نگار بن گئے اور سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ ان کی تحریروں کی زبان، لہجہ، اسلوب، جملوں کی ساخت، مضمون کی افادیت، موقع، اور مناسبت کو چیک کرنے کے لئے کوئی سنسر بورڈ، ایڈیٹر یا کوئی ذمہ دار شخص نہیں ہوتا جو یہ طے کرے کہ یہ صحیح ہے یا غلط، مناسب ہے یا غیر مناسب، نفرت انگیز ہے یا رواداری کی تلقین کرنے والی، توڑنے والی ہے یا جوڑنے والی۔ اس وقت یہ خبر یا مضمون لگانا مفید ہوگا یا مضر؟ سوشل سائٹس نہ ہوئیں شتر بے لگام ہوئے۔

Read more

ہیں اور بهی غم دنیا میں الیکشن کے سوا

شمالی ہند میں کسی ایک مسلم سیاسی لیڈر یا تنظیم کا نام بتائیں جن کے دس بارہ اسکول دو چار کالج آٹھ دس ووکیشنل ٹریننگ سینٹر ایک دو میڈیکل کالج دو تین انجینئرنگ کالج چل رہے ہوں۔ چندہ سے ہی سہی۔

مسلمانوں کی معاشی تعلیمی اور سماجی ترقی کے لئے مسلم دانشوروں کا ویژن کیا ہے؟ اور اس ویژن کو زمین پر اتارنے کے لیے کیا لائحہ عمل طے کیا گیا۔ اور اس پر عمل کب ہوگا؟ الیکشن میں فتح حاصل کرنا ہی معراج کیوں ہے؟

Read more

قلم فروش بر وزن جسم فروش

پہلے صحافیوں کی عموماً دو تین قسمیں ہوتی تھیں. 1- Yellow Journalism زرد صحافت یعنی وہ صحافی جن کی آنکھوں پر زرد رنگ کا چشمہ لگا ہوتا ہے منفی صحافت مخصوص ذہنیت سے ہر شئی کو دیکهنے والا. یعنی ایسا صحافی جو کسی واقعہ یا حادثہ کو معروضی انداز میں دیکهنے کے بجائے اس اینگل…

Read more