جاوید غامدی اور ڈاکٹر اسرار کی تشریح اور تفسیر کا فرق!

آج کل سوشل میڈیا پہ ممتاز و معروف مذہبی سکالر جاوید احمد غامدی کی مخالفت میں چند حلقے متحرک نظر آتے ہیں۔ یہ حلقے غامدی صاحب کی مخالفت میں جھوٹ اور غلط بیانی پر مبنی اپنی پوسٹوں سے غامدی صاحب کی تیزی سے بڑہتی مقبولیت سے خائف نظر آتے ہیں۔ ایسی ہی ایک پوسٹ پہ جب یہ کہا کہ ”محترم جاوید غامدی کے پائے کا کوئی عالم نظر نہیں آتا، اسلامی احکامات و ہدایات، اسلام کے متمع نظرکے عین مطابق حق اور سچ کی بات کرنے والا عظیم عالم جاوید احمد غامدی، عالم اسلام کا نہایت قیمتی سرمایہ ہے جس پہ مسلمان بجا طور پہ فخر کر سکتے ہیں“۔ اس پر ایک صاحب کا کہنا تھا کہ بلاشبہ غامدی صاحب ایک بڑے عالم ہے تاہم ڈاکٹر اسرار کو بھی ہم اعلی پائے کا عالم کہہ سکتے ہیں۔

Read more

قبائلی عوام اور پاکستان

قائد اعظم نے نئی مملکت پاکستان کا گورنر جنرل بنتے ہی حکم جاری کیا کہ قبائلی علاقوں سے فوج نکال دی جائے۔ پاکستان کے پہلے آرمی کمانڈر انچیف جنرل سر فرینک میسوروی نے قائد اعظم سے کہا کہ ہمیں ( انگریز فوج کو) قبائلی علاقوں میں قبضہ کرنے اور اپنی قلعہ بندیاں قائم کرنے میں دو سو سال لگے ہیں، وہاں سے فوج نکال لی تو صورتحال خراب ہو سکتی ہے۔ اس پر قائد اعظم نے کہا کہ قبائلی علاقوں سے فوج نکلنے سے ہی قبائلیوں کو معلوم ہو گا کہ پاکستان بن گیا ہے اور اب وہ آزاد ملک پاکستان کے شہری ہیں۔ پاکستان کے صوبہ سرحد ( کے پی کے ) بالخصوص قبائلی علاقہ جات کے قبائل کو پاکستان کا بازوئے شمشیر زن کہا جاتا تھا۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ ہر قبائلی اسلحے سے لیس، مسلح لڑائی کی مہارت سے آراستہ اور دلیری میں نمایاں مقام کے حامل رہے ہیں۔

Read more

کشمیر میں آزادی کی جدوجہد جاری ہے، شریعت یا داعش کی نہیں

برطانوی نشریاتی ادارے ”بی بی سی“ نے ایک رپورٹ میں بتایا کہ انڈین فوج نے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں سب سے مطلوب ’قرار دیے جانے والے شدت پسند ذاکر بٹ عرف ذاکر موسی کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔ انڈین فوج کے مطابق انھیں کشمیر کے ضلع ترال کے ایک گھر میں…

Read more

وائس آف امریکا کو ناک آؤٹ کرنے والا عالم دین پی ٹی وی پر ٹھس کیوں ہوا؟

تقریبا اٹھارہ بیس سال پہلے کی بات ہے کہ ’وائس آف امریکہ‘ سنتے ہوئے پاکستان کے ایک عالم دین کا انٹرویو سننے کا اتفاق ہوا۔ وہ عالم دین امریکہ کے دورے پہ گئے ہوئے تھے۔ ’وائس آف امریکہ‘ کے سٹوڈیو میں ان کا تقریبا ڈیڑھ گھنٹے کا انٹرویو کیا گیا۔ ان دنوں دہشت گردی کا…

Read more

فتح جنگ کے بوڑھے سپاہی کو ملکہ برطانیہ نے بلا کر شہریت کیوں دی؟

میرا بیٹا موبائل فون پر گانا سن رہا تھا، ”ہمیں پیار ہے پاکستان سے“۔ اپنے وطن سے، جہاں ہم رہتے ہیں، اس سے محبت کے اظہار کا کیا طریقہ ہوتا ہے؟ کیا یہ کہ جس طرح ہم کسی لیڈر کو پسند کرتے ہیں تو اس سے شخصی محبت کے اظہار کو ہی اس لیڈر سے وفاداری کا تقاضہ سمجھتے ہیں۔ اسی طرح وطن سے کسی عاشق کی طرح اپنی محبت کا لفظی اور جذباتی اظہار ہی وطن سے محبت ہے؟یہ جملہ اکثر عوام سے کہا جاتا ہے کہ ”یہ نہ دیکھوکہ وطن نے تمہیں کیا دیا ہے بلکہ یہ بتاؤ کہ اس وطن کے لئے تم نے کیا کیا ہے“۔ حالانکہ عوام میں سے ہی ایسے لوگ نظر آتے ہیں جنہوں نے اس ملک کے لئے ہر قسم کی قربانیاں دی ہیں۔ پاکستان کے لئے قربانیاں دینے والوں کو ہی پاکستان کی قدر ہے کہ یہ کتنی بڑی نعمت ہے۔ اس بات کا احساس و ادراک ملک کو چلانے والوں میں نظر نہیں آتا۔

Read more

نواز شریف کی حمایت جمہور کی بالادستی کے بیانیے سے جڑی ہے

حامی تو حامی ہوتے ہیں اور مخالف برائے مخالفت۔ کم از کم پاکستان میں تو یہی رواج ہے کہ اپنے سیاسی رہنما کی ہر بات اچھی ہوتی ہے۔ وہ اگر کچھ غلط بھی کرے تو حامی کا کام ہے، اس کی مکمل حمایت کرنا۔ اور مخالف کا کام ہے کہ مخالف سیاسی رہنما کے اچھے…

Read more

شاردا مندر بحالی، ہندوستانی یاتری اور کشمیر!

ہندوستانی حکومت کی درخواست پر پاکستان نے آزاد کشمیر کی وادی نیلم میں شاردا کے مقام پر قائم قدیم مندر کی بحالی اور وہاں تک ہندوستانی ہندو زائرین کو رسائی دینے کے حوالے سے ابتدائی تیاری شروع کی ہے۔ شاردا کے اس قدیم مندر کے ساتھ نالہ مدھو متی اور سامنے کی طرف نالہ سرسوتی…

Read more

ہری پور کا مصیبت زدہ باپ اور بیٹی کی آس!

ہمارے ایک انکل ہوا کرتے تھے جو اپنے سامنے آنے والے ہر بچے کو کچھ پیسے دے دیتے تھے۔ ہم نے پوچھا تو کہنے لگے کہ کوئی بھی بچہ جب آپ کی طرف دیکھتا ہے تو اس کو آپ سے اچھے کی توقع ہوتی ہے، ہم بھی بچپن میں ہر ملنے والے بڑے سے کچھ…

Read more

ڈی جی ‘ آئی ایس پی آر’ کی پریس کانفرنس کے امور و مسائل!

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ '' آئی ایس پی آر'' کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے پیر کو ایک پریس کانفرنس کی۔ انہوں نے ملک کی سیکورٹی کی مجموعی صورتحال سے، مسئلہ کشمیر، انڈیا سے حالیہ کشیدگی، ملکی سیکورٹی صورت حال، آپریشن رد الفساد پر ہونے والی پیش رفت اور اس کے علاوہ…

Read more

اسلام آباد کے کوے اور ماحولیاتی دہشت گردی

چندسال پہلے کی بات ہے کہ میرا گھر سے نکلنا مشکل ہو گیا تھا۔ گھر سے نکلتے ہوئے، تاک میں بیٹھی ایسی مخلوق کے حملے کا خطرہ رہتا جس کی نظروں سے بچ نکلنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ حملے کا یہ خطرہ صرف گھر سے نکلتے وقت ہی نہیں، گھر داخل ہوتے وقت بھی اس حملے کے خطرے سے ہوشیار رہنا پڑتا تھا۔ میں اپنی تحریروں کے موضوعات اور انداز کے پیش نظر کسی متوقع ردعمل پر بھی نظر رکھتا رہا، لیکن یہ سوچا بھی نہ تھا کہ جارحیت اس انداز سے مجھے اپنا نشانہ بنائے گی۔

یہ محض خطرہ ہی نہیں تھا بلکہ کئی بار مجھے اس حملے سے نبرد آزما بھی ہونا پڑا لیکن گھر سے جاتے آتے چوکنا رہنے کی وجہ سے میں ان حملوں میں محفوظ رہا۔ بہت سوچا لیکن مسلسل حملوں کی اس صورتحال سے بچاؤ میں آزادی صحافت یا صحافی کی آزادی پر کسی قسم کی قدغن کا کوئی ایسا پہلو نظر نہ آیا جو مجھے ان حملوں سے محفوظ رکھ سکے۔

Read more