قوم کو تاریخی بجٹ مبارک

بلاشبہ اس سال خطِ غربت سے نیچے چلے جانے والے پاکستانیوں کی تعداد غیر معمولی ترقی ہو گی۔ قوم کو مبارک ہو ”وژنری“ حکمرانوں نے اپنے ملکی و غیر ملکی آقاوں کی مکمل اشیرباد سے تاریخ کا سب سے ”بہترین اور انقلابی“ بجٹ پیش کر دہا پے۔  ٹیکس کے اہداف ہی کامرانی کا اعلان فرما…

Read more

انسان، سماج اور معاش

معاش، انسان اور سماج کا مادی چہرہ ہے۔ جس طرح روپے کے رُخِ زَرد پر انسانی خون لگا ہوا ہے۔ بعینہٖ سماج کا مادی چہرہ بھی اسی خون سے لت پت ہے۔ زر انسان کی وہ تخلیق ہے جو خود انسان پر بھاری پڑ رہی ہے۔ انسانی سماج، رسوم و رواج، دین و دھرم، اخلاق…

Read more

خصوصی توجہ اور شفقت کے طالب افراد

تھامس ایلوا ایڈیسن کے حوالے سے میرا کالم ”کند ذہن؛سائنسی جادوگر“ گذشتہ دنوں شائع ہوا تو لاہور میں مقیم میرے دوست، فزکس کے نامور استاد ڈاکٹر اعجاز الرحمن درانی نے اس پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ ایسے ہی ”سلو لرنر“ نے دنیا میں بہت نام کمایا۔ آئن سٹائن بھی سیکھنے میں ایسا ہی سست…

Read more

سب کچھ محنت ہی پر منحصر ہے

زندگی صرف کامیابی کا نام نہیں بلکہ مسلسل محنت، جدوجہد اور جنگ کا نام ہے جو شخص محنت و مشقت کو اپنا لیتا ہے فتح و کامیابی کا تاج اسی کے سر پر سجتا ہے۔ شاہراہئی حیات مصائب و مشکلات اور نشیب و فراز سے بھری ہوئی ہے۔ صرف محنت و مشقت ہی کے ذریعے…

Read more

درد دِل کے واسطے

حضرت ابوذرؓ سے روایت ہے کہ میں نے نبی کریمؐ سے پوچھا، اے اللہ کے رسولؐ، کون سا کام افضل ہے۔ آپؐ نے فرمایا، اللہ پر ایمان لانا اور اس کی راہ میں کوشش کرنا۔ حضرت ابو ذرؓ کہتے ہیں، میں نے پوچھا کون سا غلام آزاد کرنا افضل ہے؟ آپ نے فرمایا جو اپنے آقا کے نزدیک سب سے عمدہ اور دام میں سب سے اونچا ہو۔ ابو ذرؓ کہتے ہیں میں نے پوچھا اے اللہ کے رسولؐ اگر میں کوئی بھی بھلا کام نہ کر سکوں؟ آپ نے فرمایا، لوگوں کو تم سے کوئی تکلیف نہ پہنچے۔ یہی تمہاری طرف سے تمہارے حق میں صدقہ قرار پائے گا ”۔

Read more

قرآنی انسائیکلو پیڈیا: ایک جائزہ

علامہ ڈاکٹر طاہر القادری کا مجموعہ مضامین قرآن ”قرآنی انسائیکلو پیڈیا“ شائع ہوا تو بارسلونا سپین میں مقیم منہاج القرآن کے راہنما اسد اقبال قادری نے یہ تحفہ مجھے بھجوایا۔ میں اس بابرکت تحفہ پر ان کا شکر گذار ہوں۔ میرا یقین ہے کہ قرآن حکیم انسانوں کے لیے خدا کی ابدی راہنمائی اور تعارفِ خدا ہونے کے ساتھ انسانیت کا دستورِ حیات اور قانونِ فطرت ہے۔ آیات قرآنی کا اعجاز ہے کہ ان میں باربار تفکر و تدبر نئے نئے معنی و مفاہیم سامنے لے کر آتاہے۔

قرآن حکیم نے ہر دور میں لوگوں کے بند ذہنوں کو کھولا ہے۔ قرآن نے تقلید ی فکر کی بجائے اجتہادی فکر پیدا کی ہے۔ آج بھی عالمی فکر ی تحریک پر قرآن کی گہری چھاپ ہے۔ حقیقت میں قرآن کو شامل کیے بغیر انسانیت کے فکری سفر اور اس کے ارتقاء کی تاریخ کو سمجھا نہیں جا سکتا۔ اس ضمن میں علامہ طاہر القادری ایسے خوش نصیب ہیں کہ مالک کائنات نے انہیں قرآن مجید سے عوام و خواص کو مستفید کرنے کے لیے چن لیا ہے۔ باشبہ ڈاکٹر طاہر القادری کا شمار عالم اسلام کی نمایاں ترین شخصیات میں ہوتا ہے اور ان کے علمی و قلمی کارنامے اہل علم سے ہرگز پوشیدہ نہیں۔

Read more

قاسم علی شاہ کی اونچی اڑان

تعلیم ایک معاشرے کے اجتماعی شعور کو اگلی نسلوں تک منتقل کرنے کا ایک منظم عمل ہے۔ یہ محض معلومات کے ابلاغ کا نام نہیں بلکہ متعلم کی چھپی ہوئی قابلیتوں کو تحریک دے کر ماضی کی دانش کو مستقبل کی تعمیر میں صرف کرنے کے قابل بنانے کا عمل بھی ہے۔ بدقسمتی سے ہمارا…

Read more