کھئی کے پان بنارس والا

کل ایک ویڈیو دیکھی جس میں پان چباتے ہوئے ایک شخص دوسری اشیاء کی طرح پان میں ڈالی جانے والی چھالیہ کی مہنگائی کا رونا رو رہا تھا۔ کہ پچھلے سال جو چھالیہ ساڑھے تین سوروپے کلو تھی اب چار ہزار روپے فی کلو تک پہنچ گئی ہے۔ چھالیہ اتنی مہنگی ہوگئی ہے کہ پان…

Read more

بہارو پھول برساؤ

ایٹمی طاقت رکھنے والے ملک کی خواتین کی زبانیں میزائل بن کے گولے داغنے والے موسم کے علاوہ سال کا ہر موسم اور ہر ماہ اپنے اندر کچھ الگ انفرادیت رکھتا ہے۔ پاکستان وہ ملک ہے جسے قدرت نے بہت دلفریب موسموں سے نوازا ہے۔ کبھی موسم سرما ہے تو کبھی گرما، کبھی خزاں ہے…

Read more

آئینہ جھوٹ نہیں بولتا

یوں تو ہرقسم کی محفل میں ہر قسم کا موضوع زیرِبحث لایا جاتا ہے۔ سیاست، ادب، سماج سے لے کر جدید سائنسی ایجادات تک کم سے کم پڑھا لکھا آدمی بھی بات کرنا چاہتا ہے۔ لوگ انٹرنیٹ، اسمارٹ فونز، روبوٹ، اسپیس شٹل، ڈرون اور کن کن اشیاء کا ذکر نہیں کرتے جو ان کی زندگیوں…

Read more

پپو یار جنگ نہ کر

اس حقیقت سے کوئی انکار نہیں کر سکتا کہ دنیا کے کروڑوں افراد سوشل میڈیا کے جادو کے زیر اثر ہیں۔ سوشل میڈیا کو نہ صرف انفرادی طور پر استعمال کیا جا رہا ہے بلکہ اجتماعی طور پر بھی۔ لیکن اس سوشل میڈیا کے دور میں بھی رکشہ، ڈاٹسن، فلائنگ کوچ، بس اور ٹرک میڈیا…

Read more

یہ کہانیاں پڑھنا منع ہے

جب مادی دور کی لعنتوں نے معاشرتی زندگی میں زہر گھول دیا ہو۔ ہوس زر نے نوع انساں کو خود غرضی، انتشار اور بے حسی کی بھینٹ چڑھا دیا ہو۔ مسلسل شکست دل کے باعث بے حسی پیدا ہو چکی ہو۔ عادی دروغ گو اور سادیت پسندی کے مرض میں مبتلا مخبوط الحواس درندوں نے…

Read more

کلماں چھوٹیاں رکھاں کہ وڈیاں؟

صنعت کے بطن سے جنم لینے والے انقلاب کی وجہ سے روایتی پیشے، ہنر، کاروباری مراکز یا پیسہ کمانے کے طریقے بدل گئے اور اس تبدیلی نے ہر معاشرے کو بے چینی اور خلفشار کا شکار کر دیا۔ پیسہ کمانے کے طور طریقے بدلنے سے معاشروں میں روایتی افراد اور پیشوں کی سماجی حیثیت شدید…

Read more

چمچہ

کسی بھی مہذب معاشرے میں فنکار، لکھاری، ادیب، شاعر، موسیقار، گلوکار اور اداکار کو عام انسان کے سانچے سے مختلف سمجھا جاتا ہے کیونکہ مہذب دنیا سمجھتی ہے کہ یہ لوگ وہ ”میوٹیٹیس“ ہوتے ہیں جو کسی بھی معاشرے میں اس لئے پیدا کر دیے جاتے ہیں کہ اس معاشرے کے لوگ کہیں اپنی زندگیوں…

Read more

مرشد! پلیز، آج مجھے وقت دیجیے

کبھی کبھی لگتا ہے مجھ جیسے سفید پوش افراد بلاوجہ زندگی کو سنوارنے کے لئے اپنی خوشیاں تیاگ دیتے ہیں۔ اپنے جذبوں کو دبا دیتے ہیں اور اچھی بھلی دل کو لبھاتی ہوئی خواہشات کا گلہ گھونٹ دیتے ہیں۔ حاصل وہی روایتی سے سمجھوتے ہوتے ہیں، وہی روزمرہ کی ضروریات پوری ہوتی ہیں اور دلی…

Read more

کربلائے کشمیر

کبھی کشمیر اپنے حُسن ِفطرت، دلکش نظاروں، سر سبز پہاڑوں ”بلند و بالا سر سبز چناروں، جھاگ اڑاتے دریاؤں، جھلملاتی برفوں، گنگناتے جھرنوں، شور مچاتی آبشاروں، دل آویز موسموں، سکون و راحت، خوشیوں کے مسکن اور جنت ارضی کے طور پر مشہور تھا۔ مگر اب اُس کی پہچان یہ قدرتی حُسن نہیں، جو آنکھوں کو…

Read more

مرشد! زبان ِ اردو کا دکھ بھی تو کوئی سنے

تین دن پہلے علاقائی ادبی تنظیم اردو بچاؤ تحریک کا ایک اجلاس منعقد ہوا۔ جس میں تمام مقامی ادیب، لکھاری اور شاعر حضرات حاضر تھے۔ معتمد نے تحریک کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی اور کہا کہ یہ علاقے کی واحد ادبی تحریک ہے جو برسوں سے ادب کی خدمت کر رہی ہے۔ آج…

Read more