ان الله مع الصابرين

پیٹرول، بجلی، گیس، ادویات اور روز مرا کی اشیاء خردنوش کی قیمتوں مں تیزی سے اضافہ ہونے کے بعد حکومت پاکستان کی جانب سے غریب عوام کو درخواست کی جارہی ہے کہ عوام پریشان مت ہوں، بس تھوڑا ’صبر‘ کریں۔ مگر نوکری پیشہ غریب پاکستانی، جن کی تعداد اکثریت میں ہے اور ان کا اپنی…

Read more

محب وطن ٹھیکیداروں کو مہوش حیات کا تمغہ امتیاز ہضم نا ہونے کی چند وجوہات

محب وطن ٹھیکیدار وہ پاکستانی ہیں جنہوں نے اپنے نازک کندھوں پر اپنی زندگی کے علاوہ دوسروں کی زندگی کا بھی ٹھیکہ اٹھا رکھا ہے، ان محب وطنوں کی جانب سے مہوش حیات کو گالیاں دینے کا مقصد ان ہزاروں ماؤں بہنوں کو گالیاں دینا ہے جو چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے مختلف…

Read more

نئے پاکستان میں چرسیوں کا مستقبل

نشے میں مبتلا چرسی بھی ایک زمانہ میں عام انسانوں کی طرح ماں کے پیٹ سے باہر آنے کے بعد اپنی ماں کا دودھ پیا کرتا تھا مگر افسوس کہ وقت و حالات نے اسے چرس پینے پر مجبور کر دیا کیونکہ برا وقت ان چرسیوں کو بتا کر نہیں آیا۔ جناح یونیورسٹی کراچی میں…

Read more

چست پائے جامہ اور سست لڑکے

بے شک پجاما تو پجاما ہی ہوتا ہے، چاہے چست ہو یا سست۔ یہ کہانی ایک نیک و معصوم طالب علم کی ہے جو اعلی تعلیم حاصل کرنے کی نیت سے ایک یونیورسٹی میں داخلہ لیتا ہے اور پہلے دن اپنی یونیورسٹی میں تیار ہو کر پہنچ جاتا ہے۔ اندر داخل ہونے کے بعد پہلی…

Read more

غریب کا کام تو بس صبر کرنا ہے

مولانا جلال الدین رومی کے مطابق، اپنا دل اس وقت تک توڑتے رہو جب تک یہ کھل نا جائے۔

غریب بچے کے صبر کا امتحان تب شروع ہوجاتا ہے جب وہ اپنے باپ کی انگلی پکڑ کر پرانا یونیفارم پہن کر مٹی سے آلودہ جوتوں کے ساتھ پہلے دن اسکول پہنچتا ہے اور دیکھتا ہے کہ باقی بچے تو اپنے باپ کی بڑی بڑی گاڑیوں سے اتر کر نئے یونیفارم پہن کر چمکتے ہوئے جوتے کے ساتھ سکول تشریف لارہے ہیں۔ مگر غریب کا بچہ گھر آکر اپنے والدین سے شکوہ نہیں کرتا کیونکہ اس کو معلوم ہوتا ہے کہ غریب کا کام تو صرف صبر کرنا ہے۔

Read more

لیڈر، میرٹ اور پرچی

لیڈر وہ شخص ہوتا ہے جو کسی بھی ادارے یا قوم کی ترقی کے لیے ہونا نہایت ہی ضروری ہے کیونکہ اس کے بغیر ترقی کے سفر پر گامزن ہونا صرف اور صرف ایک خواب ہی ہے۔ بنیادی طور پر بہترین لیڈر کے لیے ضروری ہے کہ وہ ہمت و حوصلے کا باعث بنے، انصاف…

Read more

ہوٹل مینیجمنٹ کی تعلیم

حالیہ بڑھتی ہوئی مہنگائی، غربت اور بیروزگاری کے دور میں تعلیم یافتہ نوجوان طبقہ نوکری کی تلاش میں دربدر کی ٹھوکریں کھا رہا ہے اور ہر قسم کی نوکری کرنے کے لیے تیار ہے کیونکہ اس کے علاوہ غریب نوجوان کے پاس کوئی اور آپشن موجود نہیں۔ نوکری چاہے جیسی بھی ہو بس تنخواہ ایک…

Read more

شریف تو وہی ہے جسے موقع نہیں ملا

ایک موصول ہونے والے ایس ایم ایس کے مطابق : ”حقیقی پاک دامن وہی ہے جس کے پاس گناہ کے لیے وسائل اور مواقع بھی ہوں اور وہ پھر بھی گناہ نہ کرے“۔

ہمارے معاشرے میں دو قسم کے شریف حضرات پائے جاتے ہیں، جن میں ایک ’گڈ شریف‘ افراد ہیں اور دوسری جانب ’بیڈ شریف‘ افراد ہیں۔ جیسا کہ وطن عزیز میں کسی زمانے میں گڈ طالبان اور بیڈ طالبان ہوا کرتے تھے۔

گڈ شریف افراد وہ ہیں جنہیں مسلسل مختلف مراحل پر مختلف نوعیت کے مواقع میسر ہو رہے ہیں مگر وہ حقیقی پاک دامن انسان ان مواقعوں سے فائدہ نہیں اٹھا رہے کیونکہ انہوں نے اپنے نفس پر قابو پانا سیکھ لیا ہے اور اب وہ اس خوشی میں اپنا نام گڈ شریفوں کی فہرست میں لکھوانا چاہتے ہیں۔ بڑھتی ہوئی فحاشی کے باعس اس طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد کی تعداد میں دن بدن کمی آتی جارہی ہے۔

Read more

ملنگ بھی انسان ہوتا ہے

ملنگ انسان وہ ہے جس کے جسم میں موجود نام کا دل تو موجود ہوتا ہے مگر اس کے اندر عام انسانوں کی نثبت بہت بڑا دکھ اور درد کا پہاڑ ہوتا ہے اور اس پہاڑ میں موجود ایک ایسا لاوا ابھر رہا ہوتا ہے جو ہر گزرتے دن کے ساتھ شدت اختیار کرتا رہتا ہے۔ ملنگ نشے کر کر کے اس لاوے کو ٹھنڈا کرنے میں لگا رہتا ہے کیونکہ ملنگ کے پاس نشے کرنے کے علاوہ کوئی اور آپشن موجود نہیں ہوتا۔ ملنگ اپنے جان پر تو ظلم کر رہا ہوتا ہے مگر غیر ملنگوں کی طرح دوسروں کی جان پر ظلم نہیں کرتا۔

Read more

قانون برائے لوہے کی چڈی

گزشتہ کئی دہائیوں سے سال نو کا اغاز دنیا بھر کے تمام چھوٹے بڑے ممالک میں شور شرابے اور بینڈ باجے کے ساتھ کیا جاتا ہے، جب کہ ہر گزرتے سال کے ساتھ نئے سال کی خوش آمد کرنے کے لیے شور شرابے اور بینڈ باجے میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ اس عظیم خوشی کے موقع پر دنیا بھر کے مختلف چھوٹے بڑے شہروں میں کانسرٹس کا انعقاد کیا جاتا ہے، جس میں معزز گھرانوں سے تعلق رکھنے والے شہری اپنے پسندیدہ موسیقار کو سننے کے لیے نہا دھو کر، چہرے پر اچھی سے لاپا پوچی کرنے کے بعد فیشن سے بھرپور لباس میں ملبوس ہو کر لطف اندوزی حاصل کرنے کے لیے پہنچ جاتے ہیں۔ ایسے موقع کو سنہری موقع سمجھتے ہوئے چند آٹے میں نمک برابر معزز گھرانوں سے تعلق رکھنے والوں میں ایسے افراد بھی شامل ہو جاتے ہیں جو دراصل ہوس کے پجاری ہوتے ہیں۔

Read more