سیاسی قیدی شورش جیسوں کو کہتے ہین

میں بارہ تیرہ برس کا تھا جب پہلی بار کسی سیاسی قیدی کو دیکھا، کسی کے ساتھ میو اسپتال گیا تھا، شدید گرمی کے دن تھے، مریض کی عیادت کے بعد واپس آتے ہوئے ایک لحیم شحیم شخص زنجیروں میں جکڑا ہوا اسپتال کے وارڈ کے دروازے پر لیٹا ہوا تھا، گورے چٹے رنگ کا…

Read more

بات بڑھتی چلی جا رہی ہے

اصل جرم یہ نہیں کہ جج ارشد ملک نے کیا کیا؟ اصل جرم یہ ہے کہ ن لیگ اور شریف خاندان نے ایک انڈر ٹرائل آدمی کو سزا سے بچانے کے لئے جج کو خریدنے کے لئے ہر حربہ استعمال کیا جو مقدمے کی سماعت کر رہا تھا، بد قسمتی یہ بھی ہے کہ میرے…

Read more

مریم نواز اک کالعدم شہزادی اور انتقام

مریم نواز نے احتساب عدالت کے جج کی ویڈیو لیک کرکے یقیناً بہت بڑا جرم کیا ہوگا، اس جرم کو ن لیگ ’’شہزادی کا کھڑاک‘‘ قرار دے رہی ہے، ایک ایسا کھڑاک جو کسی گنڈاسے سے نہیں الیکٹرونک آلات کی مدد سے کیا گیا ،جس کی گونج پوری دنیا میں سنی گئی، ہاں یہ انتقام…

Read more

گوتم سے گستاخی اور لال قلعہ

اوائل عمری میں لکھنا شروع کیا تو اس زمانے میں سب سے زیادہ شائع ہونے والے اخبار کا آفس نسبت روڈ پر لیبر ہال کے قریب ہوا کرتا تھا، میں کبھی کبھی اپنے والد کے دوست اشرف طاہر صاحب کے پاس جا کر بیٹھ جاتا ، جو وہاں نیوز ایڈیٹر تھے، اشرف طاہر صاحب سینئر…

Read more

نیک دل مزدور حسیناؤں کا جذبہ

فنکار برادری نے کینسر کے مرض میں مبتلا کامران کامی نامی نوجوان گلوکار کے علاج کی رقم جمع کرنے کیلئے چیریٹی شو کا اہتمام کیا تو مجھ سے رابطہ کرکے کہا گیا کہ آپ مہمان خصوصی کی حیثیت سے شریک ہوں، ایک نیک مقصد کے لئے ہونے والی اس تقریب میں جانے سے انکار نہ…

Read more

ان پڑھ صحافیوں کی دہشت

پاکستانی صحافت کی تاریخ کے ہر دور میں ہر قسم کے صحافی دستیاب رہے ہیں اورآج بھی ہیں، مگرآج کے دور میں مثبت بات یہ ہے کہ اب کم از کم انگوٹھا چھاپ صحافی خال خال ہیں، ماضی میں تو ہر ادارے میں دو چار اخبار نویس ایسے ضرور موجود ہوتے تھے جو بے چارے خود اخبار بھی نہیں پڑھ سکتے تھے، وہ خبریں جن کے انہوں نے پیسے پکڑے ہوتے تھے ان کے دماغ میں ہوا کرتی تھیں جنہیں لکھوانے کے لئے وہ آدمی ڈھونڈا کرتے تھے، ایسے ان پڑھ صحافیوں کی دھاک بھی بہت ہوا کرتی تھی، وہ دوسرے اخبارات میں اپنی خبریں چھپوانے کی صلاحیت سے بھی مالا مال ہوا کرتے تھے۔

Read more

لوگوں کو چونا لگانے والے فنکار

انگلستان کے بادشاہ جارج پنجم کو گھڑ سواری کا بہت شوق تھا، فرصت کے اوقات میں وہ اپنے پسندیدہ سفید گھوڑے پر سوار ہوتے اور دریائے ٹیمز کے کنارے پہنچ جاتے، دوسرا شوق انہیں ننھے منے بچوں سے دوستی کرنے کا تھا، ٹیمز کے کنارے وہ گھوڑے کو دوڑاتے رہتے جب تھک جاتے تو گھوڑے…

Read more

جارج پنجم اور طوطا فال والا

انگلستان کے بادشاہ جارج پنجم کو گھڑ سواری کا بہت شوق تھا، فرصت کے اوقات میں وہ اپنے پسندیدہ سفید گھوڑے پر سوار ہوتے اور دریائے ٹیمز کے کنارے پہنچ جاتے، دوسرا شوق انہیں ننھے منے بچوں سے دوستی کرنے کا تھا، ٹیمز کے کنارے وہ گھوڑے کو دوڑاتے رہتے جب تھک جاتے تو گھوڑے…

Read more

جو انجو بلاتا تھا ، انجمن کو وہ یاد نہیں آیا ؟

یہ سانحہ دنیا کے ہر انسان پر گزرتا ہے کہ کبھی کبھی وہ اس جگہ بھی نہیں پہنچ پاتا جہاں اس کا جانا انتہائی ضروری ہوتا ہے، ہر انسان رشتوں کے بندھن میں بندھا ہوا ہے، انسانی رشتے نباہنا ایک ایسا عمل ہے جس سے چھٹکارا ممکن نہیں، میں یہ بات آپ کو آسانی سے…

Read more

کیا مسلم لیگ ن میں مسلم لیگ شین کے نام سے ایک نیا دھڑا قائم ہوگا؟

بے شک کالمسٹ کو اسے اپنے موضوع کو انجام دینا پڑتا ہے، لیکن یہ بھی یاد رکھا جائے کہ کسی کہانی کا کوئی انجام ہوتا ہی نہیں ہے، کہانی کبھی ختم نہیں ہوتی، جس کہانی کا اختتام ہو جائے اسے کہانی نہیں محض ایک واقعہ کہا جا سکتا ہے، ہم جس عہد میں جی رہے ہیں اس کا آغاز دو، چار یا دس سال پہلے نہیں ہوا، ہماری کہانی تو اس دن شروع ہوئی جب برصغیر میں پہلے مسلمان نے قدم رکھا تھا، ہمارے عہد میں بانی پاکستان حضرت قائد اعظم بھی موجود ہیں اور مولانا ابو الکلام آزاد، سید عطاء اللہ شاہ بخاری اور مولانا مودودی جیسے جید کردار بھی۔

Read more