اردو کا جنازہ ہے، ذرا دھوم سے نکلے

 اردو جیسی مہذب زبان کا جب اپنوں کے ہاتھوں ہوا حشر دیکھتا ہوں تو میں 8 جولائی 1972 والے فسادات بھول جاتا ہوں۔ اردو جس نے بڑے بڑے نام پیدا کیے ہیں۔ مرزا غالب لے کر انشاء تک اردو ادباء کی ایک نا ختم ہونے والی تاریخ ہے۔ لکھنوی ادب تو اپنی مثل آپ تھا۔…

Read more

میاں صاحب سے شکوہ و جوابِ شکوہ

میاں صاحب کی بگڑتی ہوئی صحت کی فکر مجھ سمیت ہر پاکستانی کو تھی لیکن اچانک پارٹی کی طرف سے یو ٹرن لیتے ہوئے غیر اعلانیہ یک طرفہ جنگ بندی کرنا۔ مریم نواز صاحبہ کے ٹویٹر اکاؤنٹ کا خاموش ہوجانا۔ مرد آہن خواجہ آصف کی دھواں دھار تقاریر کا دھیما پڑ جانا۔ اسلام آباد آزادی…

Read more

لڑو اپنے حق کے لئے

اُس وقت میری عمر اتنی زیادہ نہ تھی، لڑکا تھا، اور پہلی بار حالات کے جبر سے ٹکر لے رہا تھا۔ گھر کے لیے بجلی کا کنکشن منظور کروانا تھا، ایس ڈی او واپڈا غلام نبی ملک سے ملا انہوں نے حسب دستور ہیڈ کلرک سندر کمار کھتری کی طرف بھیجا، اس نے کہا کہ…

Read more

کارونجھر کی سیر، سہولیات کا فقدان اور تھر پروپیگنڈہ

ننگرپارکر سندھ کا ایک تاریخی مقام ہے جہاں کارونجھر کی چوٹی، بھوڈیسر کی مسجد، جین دھرم کے مندروں سمیت درجنوں تاریخی اور سیاحتی مقامات ہیں۔ لیکن سندھ حکومت نے حسب روایت اس کی ترقی اور سیاحوں کی آسائش کے لیے کوئی خاطر خواہ قدم نہیں اٹھایا ہے۔ صرف ایک ہی ریسٹورنٹ ہے ”روپلو کولہی“ ریسٹورنٹ، جس…

Read more

علما اور دانشور حضرات سے اپیل

سندھ کے ہندو صدیوں سے یہاں آباد ہیں، خصوصاً شیڈول کاسٹ کے ہندوؤں کو تو سندھ کے مالک کہا جاتا ہے، باقی ذاتیں سید، قریشی، ہاشمی، بلوچ ہجرت کرکے سندھ منتقل ہوئی ہیں یا ان میں سے کنورٹ ہوئی ہیں۔ میرے کافی احباب ہندو ہیں جو روزے بھی رکھتے ہیں اور کچھ کو تو اسماء الحسنی…

Read more

میرا گاؤں، سیاست اور ٹیکنالوجی

یہ ان دنوں کی بات ہے۔ جی ہاں یہ ان دنوں کی بات ہے، جب گاؤں کی نوے فیصد آبادی ان پڑھ تھی اور باقی کے دس فیصد کوئی گریجویٹ نہیں تھے، بس نماز کا طریقہ، اور تھوڑا بہت جمع تفریق کا حساب جانتے تھے۔ جب گھر کچے تھے، اور رشتے مضبوط تھے۔ نہ ریڈیو…

Read more

استاد کا کردار نہ ہو تو مراعات کا مطالبہ کیسا

استاد، معلم معاشرے کا وہ مہذب انسان ہے جس کے کردار اور گفتار سے تہذیب کے پھول جھڑتے ہیں۔معلم کی شان بڑھانے کے لئے آپ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایامجھے معلم بنا کر بھیجا گیا ہے۔پیارے، استاد وہ تھے جو بے غرضی سے قوم کی خدمت کرتے تھے۔ ان کی نظر قصر شاہی پر نہ تھی وہ کبھی صفہ میں تو کبھی درخت کی چھاؤں کے نیچے بیٹھ کر شاہین بچوں کو پرواز سکھاتے تھے۔

Read more

شکوہ بے جا بھی کرے کوئی تو لازم ہے شعور

پی ٹی ایم والوں کے احتجاج اور کچھ لبرلز کے ایک ہی اعتراض کہ اس ملک میں وردی والے کوئی بھی جرم کریں انہیں جائز ہے، ان کا کوئی بال بیکا نہیں کر سکتا وہ ہر قسم کے احتساب سے مستثنیٰ ہیں وہ کسی کے سامنے جوابدہ نہیں۔ کو باربار سننے کے بعد میں نے…

Read more

تعلیم کی تباہی اور اس کا حل

مرحوم محمد خان جونیجو (سابق وزیر اعظم) وہ انسان تھے جس نے سندھ کی تعلیم کی بربادی کی بنیاد رکھی۔ مرحوم کے دور میں ہر ایرے غیرے کو ماسٹر بنایا گیا، سلیکشن کا کرائٹیریا میٹرک پاس، (وہ بھی جعلی ڈگری) نہ این ٹی ایس کے ذریعے ٹیسٹ اور نا ہی انٹرویو کا جھنجھٹ، امیدوار شام…

Read more

فاطمہ علی کینسر کے ساتھ جنگ میں جان کی بازی ہار گئی

‏سابق اٹارنی جنرل اشتر آوصاف کی بیٹی فاطمہ علی کینسر کے ساتھ جنگ میں جان کی بازی ہار گئی ہیں یہ بین الاقوامی طور پر مشہور شیف تھیں۔ خبر۔ پتا ہے میں نے یہ خبر کیوں شیئر کی؟ سوشل میڈیا پر متحرک رہنے کے لئے؟ نہیں، اس خبر کے نیچے 500 کے قریب کمینٹس پڑھ…

Read more