ہندو لڑکیاں، ہری لال کے اچھوت جوتے اور کرشن چندر کی کھڑکی

سندھ کے ضلع گھوٹکی کی تحصیل دہڑکی کی دو ہندو بہنیں رینا اور روینا کے مذہب تبدیلی کے معاملے پر ہر ذی شعور سراپا احتجاج نظر آ رہا ہے کہ کیسے کم عمر لڑکیاں مذہب تبدیل کر کے شادی کر سکتی ہیں اور کیوں اس معاملے کو مذہبی رنگ دے کر بڑھاوا دیا جا رہا ہے۔ سندھ سمیت ملک بھر میں شادی اور مذہب تبدیلی کے واقعات ہوتے رہے ہیں اور ان واقعات پر احتجاج، انصاف کی اپیلوں کے بعدیہ معاملے ایک دم خاموشی اختیار کر جاتے ہیں۔ اکثر یہ مذہب تبدیلی والی شادیاں ناکام نظر آئی ہیں کہیں پر ان کے پکے سچے مسلمان ہونے پر شک کیا جاتا ہے تو کہیں ان کے بیٹوں کو رشتہ دینے سے انکار کیا جاتا ہے کہ وہ ایک ہندو کا بیٹا ہے۔

Read more

سندھ میں ہندو لڑکیوں کے اغوا کے معاملات

متحدہ ہندوستان کے بٹوارے کو اقلیتوں اور اکثریتوں کے درمیان نفرتوں، اونچ نیچ، دنگے فسادات اور مذہبی منافرت میں اضافے کا سبب مانا جا سکتا ہے۔ جس طرح پاکستان میں موجود اقلیتوں کے حقوق کو پامال کیا گیا, ٹھیک اسی طرح ہندوستان میں موجود مسلمانوں کو ظلم و ستم کا نشانہ بنایا گیا اور ہندو…

Read more

بھٹو کے نواسے سے ضیاء کے بیٹوں تک

آج کے دن ملک بھر میں ایک طرف ہندو برادری ہولی کا تہوار خوبصورت رنگوں کو لگا کر منا رہے ہیں تو دوسری طرف یوم پاکستان کی تقریب کی ریہرسل کرنے والے جیٹ اسلام آباد کی ہواؤں میں اپنی طاقت کا مظاہرہ کرتے نظر آ رہے ہیں۔ لاہور میں کئی روز سے لیڈی ہیلتھ ورکرز اپنی مستقلی کے لیے دھرنا دیے بیٹھی ہوئی ہیں تو کہیں پاکستان سمیت دنیا بھر کا میڈیا نیوزی لینڈ کی اعتدال پسندی اور روشن خیالی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے السلام علیکم سنا رہی ہیں۔

Read more

ایک جمہوری ملک کے آئینی سربراہ کی ساتھ تضحیک آمیز رویہ کیوں؟

وزیر اعظم عمران خان اپنے سیاسی بیانوں میں ہمیشہ سے ہی پاکستان مسلم لیگ ن اور پاکستان پیپلز پارٹی کو تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں کہ ان پارٹیوں میں خاندانی بادشاہت قائم ہے جس کی وجہ وہ اپنے پارٹی پالیسی اور حکومتی عہدے داران پر اثر انداز ہوتے رہے ہیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق وزراء اعظم یوسف رضا گیلانی اور راجہ پرویز اشرف پر یہ نقطہ چینی ہو تی رہی کہ وہ تو صدر زرداری کے اشاروں پر اٹھتے بیٹھتے ہیں۔

Read more

مادری زبانوں کے ادبی میلے کہ جب مصنفین اپنی کتابیں گھر بھول آئے

بین الاقوامی مادری زبانوں کا دن ہر سال 21 فروری کو منایا جاتا ہے۔ یہ دن 1952 کے 21 فروری کی وجہ سے منتخب گیا ہے جس دن ڈھاکہ یونیورسٹی، جگن ناتھ یونیورسٹی اور ڈھاکہ میڈیکل کالج کے طلبہ ملک میں اردو کے ساتھ بنگالی کو بھی قومی زبان بنانے کے لیے احتجاج کر رہے تھے کہ پولیس نے گولی چلا کر انہیں ہلاک کر دیا اور جس کے نتیجے میں شہید مینار بنا جس نے مینار پاکستان میں دراڑ ڈالی اور بنگلہ دیش بن گیا۔ ہمیشہ سے ہی میلے ہماری ثقافت کا وہ رنگ رہے ہیں جن کے انعقاد سے معاشرے میں ہر سو خوشبو پھیلتی رہی ہے۔

میلے چاہے ہمارے روایتی کھیل سے سجے ہوں یا کتب بینی سے یا پھر راگ رنگ سے ان کے اثرات ہمیشہ معاشرے پر مثبت ہی نظر آئے ہیں۔ گزرتے وقت کے ساتھ ان میلوں کے طور طریقے اور اغراض و مقاصد تبدیل ہوتے رہے ہیں اور اب یہ میلے کروانے والے پر منحصر ہے کہ ان کے میلے کا ایجنڈا کیا ہے۔ آج کل روایتی کھیلوں اور راگ رنگ کی جگہ ادبی، صوفی اور لاہوتی میلوں کا انعقاد زور و شور سے ہو رہا ہے۔ میلوں کا انعقاد، فنڈنگ اور پبلسٹی بھی ایک فن ہے جو ہر کسی کی بس کی بات نہیں ہے۔

Read more

سعودی شہزادہ اور تحریک انصاف کی فلاحی ریاست

سعودی شہزادے کی آمد سے پہلے ہی اسلام آباد اور راولپنڈی کے راستوں پر رنگ روغن اور بڑے بڑے پوسٹر لگا کر اسے دلھن کی طرح سجانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ دوسری طرف شہزادے کی آمد پر اسلام آباد کی ایک صحافتی تنظیم سعودی صحافی جمال خاشقجی کے بیہمانہ قتل پر احتجاج کرنے…

Read more

رمشہ کا قتل، نفیسہ شاہ کی پی ایچ ڈی اور منظور وسان کا خواب

  عورت بھی انسان ہے، رمشہ وسان کے قاتلوں کو گرفتار کرو اور رمشہ وسان کا قتل غیرت کے نام پر بے غیرتی ہے آج یہ نعرے نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے سامنے گونجتے رہے۔ ضلع خیرپور کے گاؤں حاجی نواب علی وسان کی آٹھویں کلاس کی طالبہ رمشہ وسان کے حوالے سے کہا…

Read more

موہنجو داڑو کے فقیر کوے

موہنجو داڑو کی تہذیب و تمدن کے قصے اور کہانیاں پوری دنیا میں مشہور ہیں۔ قصبہ بلھڑیجی جسے سوشلسٹ تحریکوں کے گیت گانے والے کامریڈیوں کی وجہ سے لٹل ماسکو بھی کہا جاتا ہے کے کنارے واقع موہنجو داڑو مٹی کا ڈھیر بن رہا ہے۔ کوّوں کو ہمارے لوگ گیتوں میں کافی اہمیت حاصل ہے۔ توہم پرستی پر اعتقاد کی وجہ سے کبھی کوے کی کاں کاں کو مہمان کی آمد کا ذریعہ بھی مانا جاتا رہا ہے اور کبھی کبھی بے اولاد مائیں میٹھی روٹی دے کر کوّوں سے اولاد کی دعا کرنے کو بھی کہا کرتی ہیں۔

Read more

کیا ہسپتال کے مریضوں کا پیسہ ڈیم فنڈ میں دینا جائز ہے؟

پاکستان بننے کے بعد اس ملک میں کئی اختلافات اور تضادات نے جنم دیا جس سے چھوٹے اور بڑے صوبوں میں نفرتیں بھڑکتی نظر آئیں۔ ملک کے بڑے صوبے پنجاب کے بارے میں یہ تاثر دیا گیا کہ یہ چھوٹے صوبوں سندھ، خیبر پختونخواہ اور بلوچستان کے حقوق سلب کرتا رہا ہے۔ اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد کراچی کے جناح پوسٹ گریجویٹ سینٹر کو سندھ حکومت کے حوالے کرنے کے حوالے سے اب ایک نیا تضاد جنم لیتا نظر آ رہا ہے۔ اس آئینی ترمیم کے بعد تعلیم اور صحت سمیت کئی وزراتیں صوبوں کو منتقل ہوئیں۔

مگر جناح پوسٹ گریجویٹ سینٹر کراچی جسے لوگ جناح اسپتال کراچی کے نام سے جانتے ہیں اس کی موجودہ ایگزیکٹو ڈائریکٹر محترمہ سیمی جمالی کی قیادت میں اس منتقلی کو نہ مانتے ہوئے سندھ ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کی گئی اور کئی سالوں کے بعد اب اس کیس کی شنوائی سپریم کورٹ آف پاکستان میں ہو رہی ہے۔ محترمہ سیمی جمالی پر یہ الزام ڈاکٹر برادری اور سندھ حکومت کی طرف سے لگتے رہے ہیں کہ اس منتقلی سے ان کی انتظامی پوزیشن کو خطرہ لاحق ہے اس لیے وہ اپنا اثر و رسوخ استعمال کرتی رہی ہیں اور ساتھ ساتھ عدالتوں میں پٹیشن دائر کروا کے اس منتقلی کو روکنے کی کوششیں کر رہی ہیں۔

Read more

سندھ میں دو شخصیات اور ایک تاثر کیوں مشہور ہے؟

پاکستان پیپلز پارٹی مسلسل تیسری بار سندھ کی حکمران جماعت ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان پیپلز پارٹی کو جمہوریت کے لیے گراں قدر خدمات کی وجہ سے قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ ابھی بھی وفاقی حکومت کی طرف سے سندھ میں گورنر راج کے نفاذ کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ سندھ حکومت اور پاکستان پیپلز پارٹی کے عہدیداروں، اسمبلی میمبرز، وزیروں اور مشیروں کو کرپشن سے پاک ہونے کا سرٹیفیکیٹ کوئی بھی جاری نہیں کر سکتا مگر یہ بات بھی ریکارڈ پر موجود ہے کہ کرپشن، اقربا پروری، لوٹ مار اور حکومتوں کی غیر تسلی بخش کارکردگی پورے ملک میں ہی نظر آتی ہے۔

سندھ میں دو شخصیات اپنی سخاوت اور طاقت کی وجہ سے بہت مشہور ہیں ایک آصف علی زرداری کہ وہ یاروں کا یار ہے اور ان کے جیل کے زمانے کے ڈاکٹرز، مالشی اور خدمت گار ان کی وجہ سے بڑے بڑے عہدوں پر فائز ہوئے اور آصف علی زرداری کے جگری دوست ڈاکٹر ذوالفقار مرزا جو کبھی اپنے پہنے ہوئے کپڑوں کو بھی آصف علی زرداری کی ملکیت بتاتے تھے ان کی لڑائی کی وجہ شوگر ملز بتائی جاتی ہیں کہ آصف علی زرداری ان سے تمام بنایا ہوا مال سود سمیت وصول کرنا چاہتے تھے۔

Read more