سعودی شہزادہ اور تحریک انصاف کی فلاحی ریاست

سعودی شہزادے کی آمد سے پہلے ہی اسلام آباد اور راولپنڈی کے راستوں پر رنگ روغن اور بڑے بڑے پوسٹر لگا کر اسے دلھن کی طرح سجانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ دوسری طرف شہزادے کی آمد پر اسلام آباد کی ایک صحافتی تنظیم سعودی صحافی جمال خاشقجی کے بیہمانہ قتل پر احتجاج کرنے…

Read more

رمشہ کا قتل، نفیسہ شاہ کی پی ایچ ڈی اور منظور وسان کا خواب

  عورت بھی انسان ہے، رمشہ وسان کے قاتلوں کو گرفتار کرو اور رمشہ وسان کا قتل غیرت کے نام پر بے غیرتی ہے آج یہ نعرے نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے سامنے گونجتے رہے۔ ضلع خیرپور کے گاؤں حاجی نواب علی وسان کی آٹھویں کلاس کی طالبہ رمشہ وسان کے حوالے سے کہا…

Read more

موہنجو داڑو کے فقیر کوے

موہنجو داڑو کی تہذیب و تمدن کے قصے اور کہانیاں پوری دنیا میں مشہور ہیں۔ قصبہ بلھڑیجی جسے سوشلسٹ تحریکوں کے گیت گانے والے کامریڈیوں کی وجہ سے لٹل ماسکو بھی کہا جاتا ہے کے کنارے واقع موہنجو داڑو مٹی کا ڈھیر بن رہا ہے۔ کوّوں کو ہمارے لوگ گیتوں میں کافی اہمیت حاصل ہے۔ توہم پرستی پر اعتقاد کی وجہ سے کبھی کوے کی کاں کاں کو مہمان کی آمد کا ذریعہ بھی مانا جاتا رہا ہے اور کبھی کبھی بے اولاد مائیں میٹھی روٹی دے کر کوّوں سے اولاد کی دعا کرنے کو بھی کہا کرتی ہیں۔

Read more

کیا ہسپتال کے مریضوں کا پیسہ ڈیم فنڈ میں دینا جائز ہے؟

پاکستان بننے کے بعد اس ملک میں کئی اختلافات اور تضادات نے جنم دیا جس سے چھوٹے اور بڑے صوبوں میں نفرتیں بھڑکتی نظر آئیں۔ ملک کے بڑے صوبے پنجاب کے بارے میں یہ تاثر دیا گیا کہ یہ چھوٹے صوبوں سندھ، خیبر پختونخواہ اور بلوچستان کے حقوق سلب کرتا رہا ہے۔ اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد کراچی کے جناح پوسٹ گریجویٹ سینٹر کو سندھ حکومت کے حوالے کرنے کے حوالے سے اب ایک نیا تضاد جنم لیتا نظر آ رہا ہے۔ اس آئینی ترمیم کے بعد تعلیم اور صحت سمیت کئی وزراتیں صوبوں کو منتقل ہوئیں۔

مگر جناح پوسٹ گریجویٹ سینٹر کراچی جسے لوگ جناح اسپتال کراچی کے نام سے جانتے ہیں اس کی موجودہ ایگزیکٹو ڈائریکٹر محترمہ سیمی جمالی کی قیادت میں اس منتقلی کو نہ مانتے ہوئے سندھ ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کی گئی اور کئی سالوں کے بعد اب اس کیس کی شنوائی سپریم کورٹ آف پاکستان میں ہو رہی ہے۔ محترمہ سیمی جمالی پر یہ الزام ڈاکٹر برادری اور سندھ حکومت کی طرف سے لگتے رہے ہیں کہ اس منتقلی سے ان کی انتظامی پوزیشن کو خطرہ لاحق ہے اس لیے وہ اپنا اثر و رسوخ استعمال کرتی رہی ہیں اور ساتھ ساتھ عدالتوں میں پٹیشن دائر کروا کے اس منتقلی کو روکنے کی کوششیں کر رہی ہیں۔

Read more

سندھ میں دو شخصیات اور ایک تاثر کیوں مشہور ہے؟

پاکستان پیپلز پارٹی مسلسل تیسری بار سندھ کی حکمران جماعت ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان پیپلز پارٹی کو جمہوریت کے لیے گراں قدر خدمات کی وجہ سے قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ ابھی بھی وفاقی حکومت کی طرف سے سندھ میں گورنر راج کے نفاذ کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ سندھ حکومت اور پاکستان پیپلز پارٹی کے عہدیداروں، اسمبلی میمبرز، وزیروں اور مشیروں کو کرپشن سے پاک ہونے کا سرٹیفیکیٹ کوئی بھی جاری نہیں کر سکتا مگر یہ بات بھی ریکارڈ پر موجود ہے کہ کرپشن، اقربا پروری، لوٹ مار اور حکومتوں کی غیر تسلی بخش کارکردگی پورے ملک میں ہی نظر آتی ہے۔

سندھ میں دو شخصیات اپنی سخاوت اور طاقت کی وجہ سے بہت مشہور ہیں ایک آصف علی زرداری کہ وہ یاروں کا یار ہے اور ان کے جیل کے زمانے کے ڈاکٹرز، مالشی اور خدمت گار ان کی وجہ سے بڑے بڑے عہدوں پر فائز ہوئے اور آصف علی زرداری کے جگری دوست ڈاکٹر ذوالفقار مرزا جو کبھی اپنے پہنے ہوئے کپڑوں کو بھی آصف علی زرداری کی ملکیت بتاتے تھے ان کی لڑائی کی وجہ شوگر ملز بتائی جاتی ہیں کہ آصف علی زرداری ان سے تمام بنایا ہوا مال سود سمیت وصول کرنا چاہتے تھے۔

Read more

پیپلز پارٹی اور سندھ حکومت کا مستقبل کیا ہو گا؟

سندھ کی دھرتی ان روایتوں کی امین ہے جس میں شاہ لطیف کی عالمی امن کی دعا، سچل کا سچ، مخدوم بلاول کا اپنی زبان پر قائم رہتے ہوئے مسکراتے ہوئے کولہو میں پس جانا، ماروی کی حب وطنی اور سسی کی محبت کی داستانیں سدا قائم رہیں گی۔ وادی سندھ میں ہمیشہ سے سیاسی…

Read more

آصف علی زرداری 27 دسمبر کے خطاب میں آخر کون سے راز افشا کرنے والے ہیں؟

پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری، ان کی بہن فریال تالپر، اومنی گروپ اور حسین لوائی اور بحریہ ٹاؤن کے بے تاج بادشاہ ملک ریاض کے متعلق نت نئے انکشافات کا سلسلہ جاری ہے۔ سپریم کورٹ کی طرف سے جعلی اکاؤنٹس سے متعلق ایف آئی اے کی جے آئی ٹی نے تو اپنے پاور پوائنٹ پر منی لانڈرنگ اور پیسوں کا گورکھ دھندا ایسے افشا کیا ہے جیسے ہندوستانی فلم 16 دسمبر میں پاکستان کو ہندوستان میں ہونے والے ہر برے کام کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے۔

آصف علی زرداری اور ان کے رفقا سے متعلق تمام انکشافات کو دیکھ کر ایسا لگ رہا کہ یا تو جی آئی ٹی نے ہندوستانی فلم 16 دسمبر کو دیکھ کر سارا کام کیا ہے یا پھر آصف علی زرداری نے پوری فلم کا اسکپرٹ خود لکھا ہے۔ ملک ریاض کے بارے میں تو سب کو پتہ ہے کہ ابھی تک اس ملک میں کوئی بھی ایسا مائی کا لال پیدا نہیں ہوا ہے جو ان کا کام روک سکے ان کو ویسے بھی ملک کا گنک میکر سمجھا جاتا ہے۔ ماضی کے بڑے بڑے طرم خان، افسران ان کے یہاں تنخواہ پر کام کام کرتے نظر آتے ہیں۔

Read more

نواز شریف اور آصف علی زرداری کو اکٹھے جیل نہیں بھیجا جائے گا

نئے پاکستان میں صرف احتساب کے دف بج رہے ہیں۔ فلاحی اسلامی ریاست کا سہانا خواب جس میں بھوک افلاس کا خاتمہ، روزگار اور چھت مہیا کرنا ریاست کی ذمہ داری تھی وہ اب ایسا لگ رہا ہے کہ کسی نے شاید جلدی میں یہ سب کچھ وزیر اعظم عمران خان کی تقریر میں لکھ دیا تھا۔ پاکستان تحریک انصاف صرف ایک ہی ایجنڈے پر کام کر رہی ہے کہ ملک سے موروثی سیاست کا خاتمہ کر کے تمام روایتی سیاستدانوں سے جیلوں کو بھرنا ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کا ایجنڈا صرف اور صرف کرپشن کا خاتمہ کرنا ہے سستا اور آسان انصاف اگلی قسط میں شاید کوئی اور ہی مہیا کرے گا۔

عام آدمی تو پہلے ہی غربت کی چکی میں پس رہا ہے اور مزید مہنگائی سے اگر دو ٹائم کا کھانا نہ کھا سکا تو کون سی قیامت آ جائی گی۔ ویسے بھی رات گزارنے کھانا کھانے کے لیے تحریک انصاف نے پشاور میں مفت بندوست کیا ہے پاکستانی عوام وہاں سے مستفید ہو سکتی ہے۔ جب ملک کی عدالتوں میں لاکھوں کیسزز سرد خانوں میں پڑے ہوں اور ہماری اولین ترجیحات ڈیم بناؤ اور آبادی پر کنڑول پر ہو اور دوسری طرف وزیر اعظم عمران خان ملکی ترقی کے لیے دیسی انڈے اور مرغی والی شیخ چلی کی ترکیبیں دیتے نظر آتے ہوں تو ایسے میں ملک کا اللہ ہی حافظ ہے۔

Read more

گھوٹکی کا پریمی جوڑا اور اسلام آباد میں ٹیلیفون پر حکم سناتی عدالت

ہماری نئی حکومت نئے پاکستان میں انڈے اور مرغیاں بیچ کر ترقی کرنے کے فارمولے پر عمل در آمد کرتی نظر آتی ہے اور پرانے پاکستان والے سیاستدان نیب ریفرنس، جعلی اکاؤنٹس اور کالے دھن کے الزامات کی صفائی دے رہے ہیں نیز پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے 100 دنوں میں کاشت کردہ پودینے…

Read more

جب امن کی فاختہ بھی ہندو، سکھ اور مسلمان ہو تو بابا گرو نانک کیا کریں گے

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان اور بھارتی پنجاب کے وزیر برائے سیاحت و کھیل نوجوت سنگھ سدھو نے کرتار پور راہداری کی بنیاد رکھ کر امن کا راستہ کھولنے کی کوشش کی ہے۔ ایک طرف امن کے قیام کے لیے پاک بھارت بات چیت کے لیے فاختہ کی اونچی اڑان ہے تو دوسری طرف بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے پاکستان پر دہشتگردی کی پشت پناہی کا الزام لگاتے ہوئے پاکستان میں منعقد ہونے والی سارک کانفرنس میں شمولیت سے انکار کر دیا ہے۔

بھارت میں نوجوت سنگھ سدھو سمیت کئی سکھ رہنماؤں پر سنگین غداری کے الزامات لگائے جا رہے ہیں اور پاکستان کے آرمی چیف سے ان کی ملاقات کو منصوبہ خالصتان کا نام دیا جا رہا ہے۔ سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کے دور حکومت میں 2015 میں جب بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اچانک لاہور پہنچے تو اس وقت کی اپوزیشن اس دورے کو میاں نواز شریف کے بھارتی صنعتکار دوست سجن جندل کی ٹریڈ پالیسی کا نام دے رہی تھی اور پاکستان تحریک انصاف سمیت کئی سیاسی اور مذہبی جماعتیں میاں نواز شریف کے خلاف نعرے لگاتی نظر آئیں کہ جو مودی کا یار ہے وہ غدار ہے۔

Read more