تقدیس مشرق، قحط زدہ معاشرہ اور اخلاقی گراوٹ

پچھلے ہفتہ اسلام آباد میں وقوع پذیر ہونے والے چند واقعات نے تقدیس مشرق کی ملمع کاری سے آراستہ بے بنیاد خوبصورت دیواروں کو ایک ایسا جھٹکا دیا ہے کہ ان کو استوار کرنے والوں کی ارواح بھی کانپ گئی ہوں گی۔ طعنے دیے جاتے ہیں کہ غربت اور جہالت گناہوں کو جنم دیتی ہے۔…

Read more

حرف حق کی صلیب اٹھاے عیسیٰ آئے

جسٹس (ر) منیر کے بعد سے تمام قوم ایک بات پر متفق تھی کہ کم از کم اس جہاں میں اس ملک میں طاقتور کے خلاف کوئی قانون حرکت میں نہیں لا یا جاسکتا اور ہمارے اعلیٰ قانونی ادارے اور ان میں بیٹھے بڑے بڑے نام اس طرح کی کوئی حرکت کر کے خود کو مصیبت میں نہیں ڈال سکتے اور عوام بھی ذہنی سکون میں تھے کہ امید ہی نہیں رکھنی۔ کیا کچھ نہ ہوا؟ ملک ٹوٹا۔ آئین ٹوٹے۔ منتخب عوامی نمائندے پھندوں پر جھول گئے۔ عوام کو پتا تھا کہ اوج پہ ہے طالعِ رقیب اس لئے آج کی جدائی پر غمزدہ نہیں ہونا، کل باہم ہو لیں گے۔ کسی اہل ہوس منصف سے منصفی نہیں چاہنی ہے۔ بس رہے نام اللہ کا۔ اور جو ملے اس پر صبر کر لینا ہے۔ اور آئین سے لے کر آئینی وزیراعظم تک کی لاش کو جیسے بھی دفن کردیا جاے صرف اس پر مزار بنا کر مجاور بن کر بیٹھنا ہے۔

Read more

حمزہ، شہباز اور دم چھلا

اورنگ زیب جنگ ہار رہا تھا۔ اس کی فوج بھاگ چکی تھی۔ چند جان نثار ہی بچے تھے جو اس کے ہاتھی کے گردمزاحمت کر رہے تھے۔ فوج کو یہ تسلی دینے کے لئے کہ شہزادہ میدان چھوڑ کر بھاگنے والا نہیں ہے اس نے حکم دیا ہاتھی کے پاؤں میں زنجیریں ڈال دی جائیں۔مغل شہزادے پر کوئی وار کرنے کو تیار نہ تھا۔ کیونکہ ریاستی اصول کے مطابق مغل شہزادے کو نقصان پہنچانے والے کا پورا خاندان ہی مار دیا جاتا تھا۔ داراشکوہ کو مشورہ دیا گیا کہ صرف آپ ہی یہ کام کرسکتے ہیں آگے بڑھ کر خود اس پر حملہ کریں۔ وہ ہاتھی سے اتر کر گھوڑے پر سوار ہو گیا۔ فوج میں افواہ پھیل گئی کہ دارا مارا گیا۔ ڈاکٹر برینئر نے لکھا ہے کہ ہندوستانی فوج فرانسیسی اور یورپین افواج کی طرح منظم نہیں ہوتی ہیں اور اگر کوئی ایسی افوہ پھیل جاے تو بھگڈر مچ جاتی ہے کیونکہ فوج کے مفادات اس ایک آدمی سے ہی وابستہ ہوتے ہیں وہ ہی نہ رہا تو فوجیوں کو اپنی جان بچانے کی فکر پڑ جاتی ہے۔ دارا کے ہاتھی کو خالی دیکھ کر اس کی فوج بھا گ اٹھی۔ برینئرجو کہ اس وقت دارا کی فوج میں موجود تھالکھتا ہے کہ اورنگ زیب کا یہ فیصلہ اس کو دہلی کے تخت تک لے گیا اوردارا شکوہ کے فیصلے نے اس کو صحراؤں کی خاک چھاننے کی راہ پر ڈال دیا۔

Read more

اسقاط حمل: فیصلہ صرف عورت کا؟

امریکی ریاست الابامہ میں ابارشن کے بارے میں 14 مئی کو ایک انتہائی متنازع قانون منظور ہوا جس کی وجہ سے پوری دنیا میں ایک بحث شروع ہو گئی ہے۔ اس قانون کے مطابق تقریبا ً ہر قسم کی ابارشن غیر قانونی ہو گی۔ صرف ایسے حمل جن میں پیدائشی نقائص کے حامل بچے جو…

Read more

آئی ایم ایف کے سونامی سے اچھائی نکل سکتی ہے

آئی ایم ایف کے آنے والے سونامی کی ابتدائی ہوائیں چلتے ہی روپیہ ردی کاغذ کے پرزوں کی طرح اڑنا شروع ہوگیا ہے اور کسی کے ہاتھ آتا نظر نہیں آرہا۔ اس کے ساتھ اب مہنگائی کا ایک بہت بڑا طوفان اٹھے گا جو مڈل کلاس کے لاکھوں افرادکو خط غربت سے نیچے پٹخ دے گا۔ غریب عوام تو مشکل حالات کے عادی ہو چکے ہیں اب تھپیڑے فیکٹری مزدوروں، ملازموں، چھوٹے کسانوں، دوکان داروں، درمیانہ درجہ کے تجارت پیشہ اور متوسط تنخواہ دار طبقات کو زیادہ شدت سے پڑیں گے۔عالمی حالات بھی ابھی پاکستان کے خلاف ہی جائیں گے۔ امریکہ ایران تنازعہ کی وجہ سے تیل کی قیمتیں اور اوپر جائیں گی۔ ہمارے زرمبادلہ کے ذخائر پر مزیدبوجھ پڑے گا۔ اور اگریہ جنگ چھڑ گئی یا پھر گوریلا جھڑپیں اوراکا دکا پٹاخے بھی چلنا شروع ہو گئے تو میدان جنگ کے اثرات پاکستان تک بھی آئیں گے۔ کچھ نہ کچھ ہمارے علاقے بھی متاثر ہوں گے۔ پراکسی وار ہمارے ملک میں بھی لڑی جاے گی۔ جس سے کمزور معیشت اور مشکل کا شکار ہوگی۔

Read more

ایران جنگ، تاریخی تناظر میں

”رومی مغلوب ہوے۔ پاس کی زمیں میں، اور اپنی مغلوبی کے بعد عنقریب غالب ہوں گے۔ چند برس میں، حکم اللہ ہی کا ہے۔ آگے اور پیچھے“۔ سورۃ رومسید مودودی اس سورۃ کی تفسیر کے آغاز میں لکھتے ہیں۔”نبوت سے آٹھ سال پہلے قیصر روم ماریس جو کہ ایرانی بادشاہ خسرو پرویز کا محسن تھا، کے خلاف بغاوت ہوئی۔ فوکاس نے اس کے پانچ بیٹوں کو اس کے سامنے اور پھر اسے قتل کرکے حکومت پر قبضہ کرلیا۔ خسرو کو روم پر حملہ کرنے کا بہانہ مل گیا۔ 603 عیسوی میں اس نے سلطنت روم کے خلاف اعلان جنگ کر دیا اور چند سالوں میں ایشیاے کوچک سے لے کر شام کے شہر حلب اور انطاکیہ تک پہنچ گیا۔ روم کے اعیان سلطنت نے جب دیکھا کہ فوکاس ملک کو نہیں بچا سکتا تو وہ افریقہ کے گورنر سے مدد کے طالب ہوے جس نے اپنے بیٹے ہرقل کو ایک طاقت وربیڑے کے ساتھ قسطنطنیہ بھیج دیا۔

Read more

لوگ نواز شریف کوجیل چھوڑنے کیوں گئے؟

اب کے کہانی نواز شریف کے حکومت سنبھالتے پہلے ماہ میں ہی شروع ہو گئی تھی جب حکومت کو سپریم کورٹ میں سابق فوجی ڈکٹیٹر پرویز مشرف پر سنگین غداری کا مقدمہ شروع کرنا پڑا۔ پاکستان کی تاریخ میں یہ پہلی مرتبہ ہوا تھا کہ کسی آمر کے ماورائے آئین اقدام کو اعلیٰ عدالت یاپارلیمنٹ…

Read more

آئی ایم ایف کا پاکستان

جب سے موجودہ حکومت اقتدار میں آئی ہے، ملکی معیشت تباہی کی طرف ہی جا رہی ہے۔ روپے کی قدر گر رہی ہے۔ بے روزگاری تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ افراط زر بڑھ رہا ہے۔ تمام ترقیاتی منصوبے بھی رکے ہوے ہیں، لیکن مالی خسارہ بڑھتا ہی جا رہا ہے۔ روپے کی قدر گرنے کے باوجود غلط حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے برآمدات بڑھنے کی بجائے کم ہو رہی ہیں۔ حکومت وقت کی بجلی پیدا کرنے والی کمپنیوں کو ادائیگیاں، تعطل کا شکار ہیں، جس سے گردشی قرضے بڑھتے جا رہے ہیں۔

Read more

ہمارا مستقبل کا ہیرو

بھٹو، اندرا گاندھی، کمال اتاترک، جمال عبدالناصر، نیلسن منڈیلا، مارگریٹ تھیچر، چرچل، لینن علیحدہ علیحدہ ممالک اور نظریات کے ساتھ نہ صرف اپنے ممالک میں سیاسی ہیرو کے طورپر پہچانے جاتے ہیں بلکہ پوری دنیا میں ان کی بعض پالیسیوں سے اختلاف کے باوجود عز ت کے اعلیٰ مقام پر فائز ہیں۔ ان لوگوں نے اپنی قوم کی بھی خدمت کی اور ان کے اقدامات پوری دنیا پر بھی اثر انداز ہوے۔ ان کی مثالیں علمی اور سیاسی حلقوں میں ہمیشہ سے ہی پیش کی جاتی رہی ہیں اور مستقبل میں بھی یہ لوگ زیر بحث رہیں گے۔ اگر چہ ان کی شخصیت ایک دوسرے سے انتہائی مختلف ہے لیکن ان تمام لوگوں میں ایک چیز مشترک ہے کہ وہ ہیرو ہیں۔ یہ تمام لوگ سخت مخالفت اور بعض مرتبہ تضحیک کے باوجود اپنے دور اندیش اقدامات کی وجہ سے اس منزل تک پہنچے۔ یہ اور اس طرح کے اور بہت سے ہیرو پوری دنیا میں ہمیشہ سے موجود رہے ہیں۔

Read more

مئی کا مہینہ، بن لادن اورسید احمد شہید کی برسی

مسلمانوں نے دنیا کے تمام دوسرے مذاہب کے برعکس اپنی پہچان کے لئے امہ کی ایک نئی اصطلاح متعارف کروائی۔ امہ یا امت مسلمہ کا مطلب مومنین پر مشتمل ایک ایسا معاشرہ تھا جس میں مذہب اور سیاست ایک ہی چیز تھی۔ قرون اولی ٰ سے لے کر سلطنت عثمانیہ کے زوال تک کے مسلمانوں…

Read more