غلطی بانجھ نہیں ہوتی، بچے جنتی ہے

زوجہ شاہ حاملہ تھی۔ سارے حمل کے دوران عجیب و غریب مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ بچہ شایدزیادہ صحت مند تھا۔ جب بھی حرکت کرتا ایک ٹیس سی اٹھ کرریڑھ کی ہڈی کے راستے سر تک چلی جاتی۔ وہ پریشان اورخوفزدہ بھی تھی۔ وہ کوئی کمزور عورت تھی اور نہ ہی یہ اس کا…

Read more

وٹا سٹا

دونوں ڈاکٹر کے کمرے میں داخل ہوئے۔ عورت کومرد نے تقریباً گود میں اٹھا رکھا تھا۔ اس کے پاؤں زمین کے ساتھ رگڑ کھا رہے تھے۔ اس کوکمرے میں پڑے ہوئے بنچ پر لٹا کر مرد کو کچھ حوصلہ ہوا۔ ”ڈاکٹر صاحب، ان ظا لموں نے میری بیوی کو بہت مارا ہے۔ دو دن ہمیں…

Read more

جب شب زفاف داغدار ہو جائے (دوسرا حصہ)

پہلا حصہ پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں جب شب زفاف داغدار ہو جائے (پہلا حصہ) ***           *** وہ روتی جا رہی تھی۔ روتے روتے میرے ساتھ لگ جاتی۔ اور زیادہ زور سے روتی۔ کچھ حوصلہ ہوتا تو پھرمجھ سے دور ہو جاتی۔ غصے سے بولنا شروع کر دیتی۔ اسے آج…

Read more

شب زفاف جب داغدار ہو جائے

مجھے ڈاکٹر بنے تین سال ہو گئے تھے۔ میری ماں کہہ رہی تھی کہ یہ سال میری شادی کا ہے۔ کوئی لڑکی میرے دل کو بھاتی ہی نہیں تھی۔ بہت سی شعلہ، شبنم، مہتاب جبیں اردگر د موجود تھیں، میرا دل کسی پر جمتا ہی نہیں تھا۔ آج جب گھر سے نکلا تو ماں نے…

Read more

پیاسی لڑکی، لمبے قد کا دولہا اور چوتھا صنعتی انقلاب

بہت انوکھی لڑکی تھی وہ۔ باپ ملک کا مشہور باکسر، چھ فٹ پانچ انچ قد۔ رِنگ میں مخالف اس کی مار سے بے حال ہو جاتے تھے۔ اس کے مکے کوہساروں میں زلزلے کے جھٹکوں سے گرنے والے پتھروں کی طرح برستے تھے۔ رِنگ کے باہر اس کاشوق صرف جنس مخالف تک ہی محدود تھا۔…

Read more

محبت کی نفسیات: ڈاکٹر خالد سہیل کی توسیع میں

ڈاکٹر خالد سہیل کا ایک اور بہت اچھا مضمون۔ انہوں نے بہت سی باتوں کو تھوڑے سے الفاظ میں سمیٹنے کی کوشش کی ہے۔ وہ لکھتے ہیں، ”محبت کا تعلق جنس اور شادی سے ہے۔ جنس ایک جبلی اور جسمانی رشتہ ہے۔ محبت ایک نفسیاتی و جذباتی اور شادی ایک سماجی و ثقافتی۔ “ ان…

Read more

ایک بوند لہو

(یہ ایک افسانہ ہے۔ قارئین سے گزارش ہے کہ اس کو افسانہ ہی سمجھا جائے۔ ) اٹھارویں صدی پنجاب میں قیامت بن کرآئی۔ مغل سلطنت رو بہ زوال تھی۔ سکھ اورمرہٹے مغل سلطنت پرچڑھ دوڑے تھے۔ وارث شاہ نے اشارے کنائے میں کہہ دیا تھا کہ وہ عورتیں جو بھری سیج پر چڑھ کربیٹھ گئی…

Read more

پھول اور پھل کے درمیاں

یونیورسٹی میں آج رجھا کا پہلا دن تھا۔ ایف ایس سی میں ڈاکٹر بننے کے سپنے، دن اسکول، شام اکیڈمی اور رات دیر گئے تک گھر میں پڑھائی، یوں لگتا تھا کہ انسان نہیں روبوٹ ہے، جس کے اوقات مقرر کر دیے گئے ہیں، اِدھر ادھر ہٹنانا ناممکن ہے۔ بہت قریب پہنچ کر داخلہ نہیں…

Read more

آندھ راجہ بے داد نگری

رشنو  یمنا کنارے شُکری کے مقام پرپیدا ہوئی۔ اس کا پِتا دیوتاؤں کی دھرتی کا سب سے بڑاراجہ تھا۔ اس کی رحم دلی، انسان دوستی اور عدل کی کہا نیاں دوردور تک پھیلی ہوئی تھیں۔ دیوتاؤں کی دھرتی پر اس کے آباؤ اجداد نے صدیوں حکومت کی اگر چہ وہ خود دیوتاؤں کے پجاری نہیں…

Read more

مشتری ہشیار باش، فضل الرحمان آرہا ہے

خاکسار یاد آ گئے۔ خاکی کپڑے اور کندھوں پر بیلچے۔ اگر چہ یہ تحریک بھی زیادہ تر مذہبی تحریکوں کی طرح اپنے بانی کی زندگی تک ہی زندہ ر ہ سکی اور اپنے تمام تر جذبات و احساسات کے ساتھ وقت کے اٹھتے طوفانوں کی نذر ہوگئی۔ لیکن مارچ 1940  میں یہ اتنے نڈر اور…

Read more