مودی کے ہاتھ میں کاغذ کا بے وقعت پُرزہ

راہول گاندھی بے شک ایک نوجوان سیاسی لیڈر ہیں لیکن سوشل میڈیا پر ان کا ٹویٹ پڑھا تو میں نے دل ہی دل میں ان کے دانش اور وژن کی داد دی اس نے لکھا کہ ”کشمیر کی اہم ترین لیڈر شپ کو خفیہ جیلوں میں ٹھونس کر گویا دہشت گردوں کو ان کی خلاء…

Read more

ٹموتھی ڈیکسٹر نے کیسے دولت کمائی؟

اگر ابراھام لنکن سے بل گیٹس اور لیڈی ڈیانا سے کرنل سنیڈرز (کے ایف سی کا مالک ) تک عالمی شہرت حاصل کرنے والے اپنے چمکتے ہوئے تارے اور دمکتی ہوئی قسمت لے کر نہ آتے تو آج وہ بھی کسی مائیکل اور کسی میری کی طرح گمنام زندگی گزارتے اور گمنام موت مرتے۔ یہ…

Read more

وادی تیراہ سے مہمند ایجنسی تک

ہیلی کاپٹر فضا میں بلند ہوا تو ایک مشہور ٹیلیوژن چینل سے وابستہ نوجوان صحافی نے میرے کان میں کہا کہ سر ہم صحافیوں کی زندگی کچھ زیادہ خطروں سے دوچار نہیں ہوتی جارہی ہے؟ میں نے حیرت کے ساتھ اس کی طرف دیکھا تو اس نے شرارت آمیز مسکراہٹ کے ساتھ ہیلی کاپٹر کی حالت زار کی طرف اشارہ کیا لیکن لگ بھگ پچیس منٹ بعد یہی ”حالت زار“ ہمیں وادی تیراہ کے نواح میں پیندی چینہ کے سرسبز و شاداب پہاڑوں کے بیجوں بیج بخیر و عافیت اتار چکا، جہاں کچھ افسران اپنے سٹاف کے ساتھ گاڑیوں سمیت ہمارے منتظر تھے۔

Read more

فاٹا دہشت گردی سے ترقی تک

بریفنگ سابق فاٹا اضلاع میں سکیورٹی صورتحال اور ڈیویلپمنٹ کے حوالے سے تھی لیکن ظاہر ہے بہت سارے سوال بھی پوچھے جانے تھے اور بہت سے موضوعات بھی کھلنے تھے۔ کور کمانڈر پشاور جنرل شاھین مظہر ایک اور سینئر افسر کے ہمراہ سابق فاٹا کے ساتوں اضلاع میں سکیورٹی اور ترقی کے حوالے سے پشاور…

Read more

عرفان صدیقی۔ راستوں کی دھول ہوتی خوشبو

سرشام چند پراسرار لوگوں نے اس کے گھر کا گھیراؤ کیا اور چھوٹے سے قد اوربڑے ذہن والے بوڑھے عرفان صدیقی کو لے کر چلتے بنے، کیونکہ اس ”کرپٹ“ آدمی نے اپنے گھر کا خرچہ چلانے کے لئے اپنی جسمانی قامت جیسے چھوٹے گھر کا ایک پورشن بغیر اطلاع کے کرائے پر چڑھا دیا تھا اور ظاہر ہے حکومت عمران خان کی ہے اور وہ کسی کرپٹ کو نہیں چھوڑتا۔ اس لئے اس ”خوفناک کرپشن“ پر اس ”طاقتور“ کو دھر لیا گیا۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ گھر ان کے بیٹے کے نام پر ہے اور کرایہ نامہ بھی اسی کے نام پر ہے جس سے عرفان صدیقی کا کوئی لینا دینا نہیں۔

Read more

عمر مختار: وہ بندہ صحرائی جو ایک آزاد شیر تھا

اس کا نام آزادی اور حریت کی تاریخ کا ایک جگمگاتا استعارہ ہے وہ لیبیا کے ایک چھوٹے سے گاؤں جنزور میں 1862 ء کو پیدا ہوا، بنیادی طور پر وہ ایک دیہاتی سکول میں اُستاد اور قرآن پاک کا معلم تھا، حد درجہ سادہ اطوار لیکن مضبوط اعصاب رکھنے والے سکول ٹیچر کی ابتدائی…

Read more

کپتان کا حکم ہے کہ گھبرانا نہیں

یو ایس ائیرویز 1549 پندرہ جنوری دو ہزار نو کی ایک برفیلی صبح کو نیویارک ائیر پورٹ سے ساؤتھ کیرولینا کے لئے ایک سو پچپن مسافروں کو لے کر اُژی تو ستاون سالہ کیپٹن چیلسی سلنبرگر اپنے فرسٹ افسر جیفری سکائلز کو اپنے ائیر فورس کے زمانے (جب چیلسی برگر ایک فائیٹر پائلٹ ہوا کرتا…

Read more

اک ذرا صبر کہ بس جبر کے دن تھوڑے ہیں

اس مملکت خداداد نے ہمیشہ یونہی تو نہیں رہنا ہے۔ آمریتوں، کرپشن، اقرباء پروری، جبر و استحصال اور بربریت کے منہوس سایوں میں اس وطن کے خاک نشینوں نے بہت ظلم سہہ لئے، فطرت کا قانون ہے اور اٹل قانون کہ تمام منفی عوامل ایک مہلت کے اندر پنپتے اور فنا ہوتے ہیں لیکن تکبّر…

Read more

پختون قوم کی میڈیا پسندی اور حجرے کا کردار

یہ حجرہ ہی تھا جو صدیوں سے پختون خطے میں مجموعی طور پر سماجی زندگی کا نہ صرف اہم ترین حصّہ رہا بلکہ یہاں کی اجتماعی دانش بھی اسی مرکز سے پھوٹتی رہی۔ حُجرے کی یہی مرکزیت ہی تھی جس نے پختونوں کے مزاج میں با خبری اور خبر تک رسائی کا رنگ بھرا اور اسے ان کی جبلت کا حصہ بنایا۔ آگے چل کر یہی مزاج جدید دنیا اور میڈیائی ارتقاء سے ہم آھنگ ہونے لگا۔

ہماری نسل سے ذرا اُدھر ریڈیو نہ صرف حجرے کے سب سے اونچے طاق پر پہنچ گیا تھا بلکہ اسی ریڈیو کے سامنے کثرت کے ساتھ لوگ (خصوصاً بزرگ ) بھی نظر آنے لگے تھے اور یہی وہ وقت تھا جب خبریت کا مزاج رکھنے والی قوم کے سامنے خبر کا دائرہ پھیلنے لگا۔

Read more

میں اپنے آنسوؤں کو کس کے حوالے کروں

کرک کے دور افتادہ گاؤں غنڈی میرا خان خیل میں جس وقت عمر خٹک کو لحد میں اُتارا جا رہا تھا، عین اس وقت حیات آباد پشاور کے قبرستان میں ڈاکٹر پروین بھی خاک اوڑھنے لگی تھی۔
یہ دونوں بظاہر عام لوگ تھے کیونکہ پروین ایک گائناکالوجسٹ تھی اور عمر کرک کا ایک مقامی سیاستدان جو اپنے مقامی لوگوں میں اُٹھتا بیھٹتا اور وہ لوگ ہمیشہ اپنا ووٹ اس کی امانت سمجھتے رہے۔

Read more