اسحاق ڈار تختہ مشق کیوں؟

گزشتہ سے پیوستہ کالم میں چین میں مقیم پاکستانی جو قید کی مدت پوری کر چکے ہیں کا مسئلہ بیان کیا۔ جس وقت گزشتہ ہفتے چینی سفیر نے اپنے گھر دعوت دے کر مجھے بتایا کہ ان کی کانگریس مارچ میں اس پر قانون سازی کرنے جا رہی ہے۔ امید ہے کہ اب اس انسانی…

Read more

مشرق وسطیٰ، معاملہ فہمی کی ضرورت ہے

کرکوک میں امریکیوں پر حملہ اور پھر اس کے بعد عراق اور شام میں کرتائب حزب اللہ کے کیمپوں پر امریکی بمباری یہ واضح کر رہی تھی کہ صورتحال بہت تیز رفتاری سے خرابی کی جانب رواں دواں ہے لیکن امریکہ کی جانب سے جنرل قاسم سلیمانی کو براہ راست عراق کی سر زمین پر نشانہ بنانا ایک ایسا اقدام ہے کہ جس کے اثرات بہت دیر تک قائم رہیں گے۔ اور اس اقدام سے نہ تو امن قائم ہو جائے گا اور نہ ہی ایران جہاں پر اپنے قدم جما چکا ہے وہاں سے واپسی کی راہ لے گا۔

Read more

دباؤ میں لیے گئے یوٹرن خارجہ تعلقات کے لئے پریشان کن ہیں

پریشانی اِس پر بنتی ہے کہ ملائیشیا کا دورہ منسوخ کر دیا گیا۔ وہ دورہ منسوخ کر دیا گیا جس کے حوالے سے جب معاملات کو طے کیا جا رہا تھا تو اس وقت کم از کم پاکستان میں بریکنگ نیوز بنائی جا رہی تھی۔ گزشتہ کالم میں بڑے دکھی دل کے ساتھ یہ مصدقہ…

Read more

مشرقی پاکستان کے استحصال کی حقیقت کیا تھی؟

سقوط ڈھاکہ ہماری قومی تاریخ کا ایسا المیہ ہے کہ جس نے قومی نفسیات پر گہرے نقوش ثبت کیے ہیں اور اس نفسیاتی کیفیت میں یہ تصور بہت مضبوطی سے جڑ پکڑ چکا ہے کہ سانحہ مشرقی پاکستان درحقیقت مغربی پاکستان یا موجودہ پاکستان کی جانب سے مشرقی بازو کے ساتھ روا رکھی جانے والی…

Read more

سی پیک پر چینی امریکی کشمکش اور حکومتِ پاکستان

گفتگو ہے کہ اختتام پذیر ہونی کا نام ہی نہیں لے رہی کہ سی پیک پر تازہ ترین صورتحال کیا ہے؟ اس کے وہ کون سے مفادات ہیں کہ جن کے سبب سے امریکہ بار بار سی پیک کے حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہار پاکستانی مفادات کی آڑ میں کرتا رہتا ہے اور امریکی مخالفت یا تحفظات کو رفع کرنے کی غرض سے ایسے کون سے اقدامات ہے جو اٹھائے گئے ہیں کہ جن سے چین بھی ناخوش نا ہو اور ہمارا توازن امریکی معاملات کے حولے سے بھی نہ بگڑے کیوں کہ یہ ایک دائمی حقیقت ہے کہ خارجہ تعلقات کسی جذباتیت کے تحت نہیں نبھائے جاتے بلکہ قطعی طور پر غیر جذباتی انداز میں معاملات کو دیکھا جاتا ہے اور اس کو نبٹایا جاتا ہے۔

Read more

کرتار پور سے گلگت بلتستان تک

کرتار پور راہداری کا مسئلہ بلکہ اس کی تعمیر ایک ایسا معاملہ ہے کہ جس کو پاکستان میں تو حکومتی سطح پر مستقل ایک خاص اہمیت دی جا رہی ہے مگر اس کے برخلاف عالمی میڈیا یا اقوام عالم کے ارباب اختیار اس کو پاکستان اور بھارت کے باہمی تعلقات کی تناظر میں کوئی اہمیت…

Read more

مولانا فضل الرحمٰن کامیاب ہو گئے

وطنِ عزیز کو ایک تجربہ گاہ بنا رہنا چاہئے یا مختلف تجربوں کے نچوڑ کے طور پر ایک طے شدہ سیاسی نظم و ضبط حاصل کرنا ہی سیاسی مقصد ہونا چاہئے۔ مولانا فضل الرحمٰن کا آزادی مارچ اِس سوال کا ایک واضح جواب ہے۔ یہ جواب ملک کی جمہوری طاقتوں کی جانب سے نہایت نپے…

Read more

جو کھڑے ہیں وہ کالا پانی جھیلنے کو بھی تیار ہیں

پہلے تذکرہ جنگ کی یاد داشتوں میں اپنی اولین یاد داشت امتیاز علی راشد مرحوم کا کہ جنہوں نے مجھے جنگ کی سیڑھیاں چڑھنا سکھائیں، جو مجھ پر بس ایک قرض ہی رہا کہ دعائے مغفرت کے سوا انسان کے بس میں اب کیا ہے۔ صرف زبانی کلامی نہیں حقیقت میں حق مغفرت کرے۔ عجب…

Read more

امریکی ایشیا پیسیفک اسٹریٹجی اور بھارت

کشمیر میں بھارت جو کر رہا ہے اور دنیا جو چپ سادھے بیٹھی ہے اس کے پیچھے اس کی خارجہ پالیسی ہے اور بھارت کی خارجہ پالیسی کو سمجھنے کے لئے امریکہ کی ایشیاءپیسیفک کی حکمت عملی کو سمجھنا پڑے گا۔ یہ دیکھنا ہو گا کہ امریکہ بھارت کو کس نظر سے دیکھتا ہے اور…

Read more

بھارت ریجن میں امریکی پالیسی کو فالو کر رہا ہے

کشمیر میں بھارت جو کر رہا ہے اور دنیا اُس پر جو چپ سادھے بیٹھی ہے اُس کے پیچھے بھارت کی خارجہ پالیسی ہے اور بھارت کی خارجہ پالیسی کو سمجھنے کے لئے امریکہ کی ایشیا پیسفک کی حکمت عملی کو سمجھنا پڑے گا۔ یہ امر بالکل واضح ہے کہ بھارت کے اپنے دونوں اہم…

Read more