انتظار امید ہوتا ہے

مولانا فضل الرحمٰن اپنے لاؤ لشکر کے ساتھ طمطراق سے آئے اور کسی شعبدہ باز کے برعکس ایک اچھے سیاستدان کی طرح ”مبارک ہو، مبارک ہو“ کا غلغلہ بلند کیے بغیر بردباری سے پلان بی کا اعلان کرکے اپنے کارکنوں کو کچھ روز کچھ مقامات پر مصروف رکھنے کا جھکاؤ دے کر سیاست کرنے چلے…

Read more

کیسے برباد کیے کوہ و دمن

بارہا نتھیا گلی کی بلندیوں سے یا گلگت میں فوج کی سروس کے دوران یا کسی بھی پہاڑی سڑک سے گزرتے ہوئے، پہاڑوں کی ڈھلوانوں پر تعمیر گاؤں دیکھتا رہا۔ دن میں ویسے ہی گھروندے اور راتوں کو روشنیاں اوپر تلے مگر کبھی کسی ایسے گاؤں میں جانے کا اتفاق نہیں ہو پایا۔ اسی طرح…

Read more

پھر سے اے ارض وطن

پاکستان ان ملکوں ‌ میں سے ہے جہاں ‌کی آبادی کا بہت کم حصہ سیاحت کی غرض سے دوسرے ملکوں میں جا سکتا ہے۔ یا تو بیرونی ممالک میں روزگار کی غرض سے گئے وہ پچاس ساٹھ لاکھ افراد ہیں جن کا بیشتر حصہ محنت مزدوری کی خاطر سعودی عرب، عرب امارات اور کچھ ملحقہ…

Read more

بکھیڑا لبرل اور پروگریسیو ”ترقی پسند“ ہونے کا

معلوم ہوا کہ لبرل افراد کو ”دیسی لبرل“ یا ”لنڈے کے لبرل“ صرف رجعت پسند ہی نہیں بلکہ وہ جنہیں پروگریسیو ہونے کا زعم ہے وہ بھی کہتے ہوں گے یا شاید کہتے ہی ہوں۔ بتایا گیا کہ لبرل ضروری نہیں کہ پروگریسیو بھی ہو مگر پروگریسیو بلا شبہ لبرل ہوگا۔ کیا کسی کو یہ…

Read more

میں نے پاکستان میں کیا دیکھا؟

میں نے 30 جون کو ملک چھوڑا تھا۔ ارادتاً واپسی کا ٹکٹ لے کے گیا تھا کیونکہ اس دروان اپنی خود نوشت کا دوسرا حصہ مکمل کرکے پبلشر کو ارسال کرنا تھا۔ چونکہ ان کا قصد اس کتاب کو دسمبر کے اواخر تک منصہ شہود پہ لانا تھا، چنانچہ نوک پلک درست کرنے کی خاطر…

Read more

وستی مہرے آلی میں 34 واں سرائیکی ادبی ثقافتی میلہ

میری جیسی کیسی بھی کئی عادات میں سے ایک عادت یہ بھی ہے کہ ارادہ کر لوں تو اس پر بہر صورت عمل کرتا ہوں ویسے ہی جیسے اگر بمشکل ہی سہی کوئی وعدہ کر لوں تو نبھاتا ہوں۔ وعدہ اپنے مہربان جناب عاشق بزدار سے کیا تھا کہ ان کے زیراہتمام ان کی بستی…

Read more

ڈاکٹر اقبال نیازی یوں چلے گئے؟

کل رات سے انتہائی مضطرب ہوں۔ ڈاکٹر ملا احسان کا فون آیا تھا، جس نے بتایا کہ کچھ ماہ پیشتر اقبال نیازی گزر گیا۔ ہائیں، فروری کے آخر میں تو ہم ڈاکٹر جنید قریشی ماہر امراض اطفال کے بیٹے کے ولیمہ سے اکٹھے ڈاکٹر عصمت اللہ خان ماہر امراض قلب کی کار میں ان کے…

Read more

وطن میں سات دن

ماسکو سے لاہور تک سوا چار ہزار کلومیٹر کا ہوائی سفر کر کے اب علی پور ضلع مظفرگڑھ میں بیٹھے مجھ فقیر باتقصیر کو وطن پہنچے سات روز بیت چکے ہیں۔ ایک دو مداحین نے رابطہ ضرور کیا مگر دوستوں میں چاہے وہ کالج کے زمانے کا کوئی دوست ہو یا سابق نظریہ کے توسط سے…

Read more

اپنے جیسوں سے انسیت کے بارے میں

میں دسویں جماعت میں تھا، زلفی ایک اونچے گھوڑے پر سوار ہو کر ہماری گلی میں داخل ہوتا تھا اور گھوڑے کی پیٹھ پر بیٹھے بیٹھے دروازہ کھٹکھٹا دیا کرتا تھا۔ میری بہنوں میں سے کوئی دروازے کی ریخ میں سے دیکھ کر کہتی،"تمہارا گھڑ سوار دوست آ گیا" مجھے لگتا جیسے میرے دانتوں تلے…

Read more

رابیرت بارتینی: سوویت طیارہ سازی کا ”سرخ نواب“

”ماضی، حال اور مستقبل۔ ۔ ۔ ایک ہی ہیں۔ اس طرح سے وقت راستے سے مماثل ہے۔ جب ہم سے گزر چکے ہوتے ہیں تو راستہ معدوم نہیں ہو جاتا۔ وقت بھی ایک لمحے کے لیے نہیں رکتا، بس موڑ آتے رہتے ہیں“۔ یہ الفاظ لکھنے والے کی شخصیت بارے بہت سی افواہیں ضرور تھیں،…

Read more