ڈاکٹر مبارک علی اور قا ئدِ اعظم کو مذہبی ثابت کرنے کی کوشش

پاکستان میں قا ئدِ اعظم کی شخصیت اور خیالات کی ”تاریخی حیثیت“ کو کچھ جماعتوں، گروہوں اور نام نہاد محققین نے اپنے مفادات، خیا لات اور نظریات کے مطابق بدل دیا ہے۔ جب کوئی شخص کسی دوسرے کے نظریات سے ”کھلا تضاد“ کرتا ہے تو پھر دو ہی راستے ہوتے ہیں، پہلا یہ کہ اس…

Read more

اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد

4ہجری کے ماہِ شعبان المعظم کی تین تاریخ (تا ریخ پر اختلاف مو جود ہے ) کو حضرت سیدہ فاطمہؓ کے ہاں مدینہ طیبہ میں حضرت امام حسین ؓپیدا ہوئے۔ آپ کے نا م کے حوالے سے حضرت عکرمہؓ سے روایت ہے کہ ”جب سیدہ فاطمہ ؓکے ہاں حسن بن علیؓ کی ولادت ہوئی تو…

Read more

6 ستمبر 1965 کی جنگ: آغازکس نے کیا؟ کون ہارا کون جیتا؟ اور معاہدۂ تا شقند

قدرت اللہ شہاب اپنیکتاب ”شہاب نامہ“ میں لکھتے ہیں: ”صدر ایوب جنگ کا نام لیتے ہی کانوں کو ہاتھ لگایا کرتے تھے اور ہمیشہ یہی کہا کرتے تھے کہ تنازعہ کشمیر کا حل ہم نے پاکستان کے مفاد کی خاطر ڈھونڈنا ہے۔ اس حل کی تلاش میں پاکستان کو داؤ پر نہیں لگانا۔“ تو سوال پیدا ہوتا ہے کہ وہ کون سے محرکات تھے جن کی بنا پر جنگ کا نام لیتے ہی کانوں کو ہاتھ لگانے والے ایوب خان کو بھی یہ جنگ لڑنا پڑی؟

Read more

اکبر بگٹی تجھ سے ہم شرمندہ ہیں

1922 میں بگٹی قبیلہ کے سردار محراب خان کے انگریزوں کے ساتھ تعاون کی وجہ سے اس قبیلے کو انگریزوں نے 500 ایکڑ زمین عطا کی، لیکن سردار محراب کا بیٹا عبد الرحمان خان بگٹی انگریزوں کا سخت مخالف اور آزادی کا متوالا تھا۔ انہوں نے آزادی کی خاطر قیدو بند کی صعوبتیں بھی برداشت کیں۔ نواب محراب خان کے دوسرے بیٹے اکبر بگٹی 1939 میں بگٹی قبیلہ کے جانشین بنے۔ اکبر بگٹی نے بھی آزادی کے حق میں ووٹ دیا اور 1951 میں ایجنٹ ٹو گو رنر جنرل بلوچستان کے مشیر رہے۔

Read more

بھارتی وزیرِ دفاع، ضیاالحق کی کرکٹ ڈپلومیسی اور مسئلہ کشمیر

بھارتی وزیرِ دفاع راج ناتھ نے یہ کہہ کر ایٹمی جنگ کی طرف پہلا قدم بڑھایا ہے کہ حالات دیکھ کر فیصلہ ہو گا کب ایٹم بم کا استعمال کرنا ہے۔ اس سے تین سال پہلے اس وقت کے بھارتی وزیرِ دفاع منوہر پاریکر نے بھی یہی کہا تھا مگر فوراً وضاحت کر دی گئی…

Read more

آزادی کے ”یوم“ کی بحث

ہم بحیثیت پاکستانی ”14 اگست“ کے دن پر ایمان لاتے ہوئے اسے اپنی آزادی کے ”یوم“ کے طور پر مناتے ہیں۔ پچھلے ستر سال سے چند تاریخی چیزیں ”معمہ“ بنی ہوئی ہیں جن پر ہر سال بحث کی جاتی ہے مگر حل ندارد، جیسا کہ قائد اعظم اسلام پسند تھے یا سیکولر، مُلا حضرات پاکستان…

Read more

صدام حسین اور اس کی وردی

وہ 16 جولائی 1979 کو عراق کا صدر بنا اور 24 برس تک مسلسل حکمران رہا۔ اس کا تکیہ کلام تھا ”میرا جوتا میرا آئین اور قانون ہے۔“ عراق میں تب چھے بڑے عہدے ہوا کرتے تھے، صدر، وزیرِ اعظم، افواج کا سپریم کمانڈر، وزیرِ دفاع، چیئر مین انقلابی کمانڈ کونسل اور پارٹی کا سیکرٹری…

Read more

علامہ اقبال کی ازدواجی زندگی اور ان پر لگائے گئے الزامات

بڑے لوگ بڑے مقاصد کی تکمیل کی بھاگ دوڑ میں بہت سی چھوٹی ذمہ داریوں کو بھول جاتے ہیں۔ یہ غلطیاں ان کی ذاتی زندگی میں ایسی ناکامیاں بن کر ابھرتی ہیں کہ مخالفین کے لیے ”کردار کشی“ کی راہ ہموار کر دیتی ہیں۔ بڑے لوگوں کی ذاتی زندگی کے بارے میں جھوٹ تراشنا اور…

Read more

قبائلی انتخابات: موروثی سیاست کامیاب ٹھہری یا ناکام؟

قبائلی اضلاع میں پہلی بار ہونے والے صوبائی انتخابات کافی حد تک پر امن طریقے سے پایہ تکمیل کو پہنچے۔ الیکشن کمیشن کے مطابق آزاد امید وار وں نے 6، پی ٹی آئی نے 5، جمیعت علمائے اسلام (ف) نے 3، جماعت اسلامی نے ایک اور عوامی نیشنل پارٹی نے بھی ایک نشست حاصل کی…

Read more

حکمران طبقے کا تعلیم سے ”رشتہ“ ہمارے مسائل کی جڑ ہے

پاکستان کو ”لاحق“ مسائل کی بات کی جائے تو بے روزگاری، غربت، کرپشن، لوڈ شیڈنگ اور دہشت گردی جیسے بڑے مسائل پر ”نظر“ جا اٹکتی ہے۔ مگر ان تمام مسائل کی جڑ اگر کسی مسئلے کو کہا جا سکتا ہے تو وہ ہے ”تعلیم کا فقدان“۔ اس تعلیمی فقدان کے ذمہ دار کسی حد تک…

Read more