اینکرز اپنی وقعت کیوں کھو رہے ہیں؟

نئی صدی کے اوائل میں پرویز مشرف نے اپنے سافٹ امیج کے لیے نجی نیوز چینلز کو لائسنس دینے کا آغاز کیا۔ الیکٹرانک میڈیا آیا اور چھا گیا۔ چینل مالکان نے صحافی حضرات کو گھر سے اٹھا کر سکرین اور عوام نے سر آنکھوں پہ بٹھایا۔ اک وقت تھا جب یہ صحافی اینکرز حکومتیں گرانے کا الٹی میٹم دیا کرتے تھے۔ میڈیا مالکان نے ان کے لیے خزانوں کے منہ کھول دیے۔ ان کا کہا پتھر پہ لکیر ہو جاتا۔ کیا سیاستدان کیا فوجی سب اک وقت میں ان سے بنا کر رکھنے میں عافیت جانتے۔

Read more

پاکستان میں ہر چار سال بعد طیارہ کیوں گرتا ہے؟

کراچی کے جناح انٹرنیشنل ائرپورٹ کے قریب پی آئی اے کا مسافر طیارہ گر کر تباہ ہو گیا ہے۔ طیارہ ماڈل کالونی کے علاقے میں گرا ہے جس سے بعض گھروں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ امدادی ٹیموں اور فائر بریگیڈ کے عملے نے ریسکیو کا عمل شروع کر دیا ہے۔ پی آئی اے ذرائع کے مطابق طیارے میں 99 افراد سوار تھے۔ طیارہ لینڈنگ سے ایک منٹ پہلے گر کر تباہ ہوا۔ طیارے کا لینڈنگ گیئر کام نہیں کر رہا تھا اور وہیل نہ کھلنے کی اطلاعات سامنے آ رہی ہیں۔ کنٹرول روم نے طیارے کو چکر لگانے کا کہا تھا۔

پاکستان میں تقریباً ہر چار سال بعد کسی نہ کسی مسافر طیارے کو حادثہ پیش آتا رہتا ہے۔ 2016 میں جب دنیا سات دسمبر کو ہوا بازی کا دن اور ہماری سول ایوی ایشن بھی اپنے معرض وجود میں آنے کی سالگرہ منا رہی تھی۔ عین اسی دن ہمارا ایک اے ٹی آر طیارہ حویلیاں کے قریب کریش ہو کر پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی کارکردگی کا پول کھول گیا تھا۔

Read more

سندھ حکومت اور میڈیا

مٹھی تھر پارکر سندھ کا اک دور پار کا علاقہ ہے وہاں کے مقامی صحافیوں کو مین سٹریم میڈیا پہ آنے کا موقع صرف انتخابات کے مواقع پہ ملتا تھا۔ اک دن اک نیوز چینل پہ غذائی قلت کے شکار بچے کی رپورٹ کیا چلی۔ میڈیا کو اک ہاٹ ٹاپک اور مقامی صحافیوں کو مین سٹریم میڈیا پہ ’ان‘ رہنے کا نسخہ کیمیا ہاتھ لگ گیا۔

عوام یہ جانے بغیر کہ میلنیوٹریشن کیا چیز ہے کیوں ہوتی ہے پاکستان میں کن کن علاقوں میں پائی جاتی ہے سندھ حکومت کے خلاف بولنا شروع ہو جاتے ہیں۔ راقم نہ صرف نیوٹریشنسٹ ہے بلکہ چار سال سے زائد یونیسیف اور ڈبلیو ایچ او کے غذائی کمی کے شکار بچوں کے پروجیکٹ پہ کام کر چکا ہے۔ یہ غذائی قلت عموماً دو طرح کی ہوتی ہے۔ اک میں جسم سوکھ کر کانٹا بن جاتا ہے جبکہ دوسری قسم میں بچے کا جسم سوج جاتا ہے۔ پانچ ماہ سے لے کر انسٹھ ماہ (پانچ سال) تک کے بچوں کو قابل علاج سمجھا جاتا ہے اس کے اوپر والوں کرانک میلنیوٹریشن میں شمار کیا جاتا ہے جس کا علاج عمومی طور پہ ممکن نہیں۔

Read more

محمد بن قاسم یا راجا داہر : ہیرو کون

پچھلے کچھ دنوں سے محمد بن قاسم اور راجا داہر کے متعلق بحث چھڑی ہوئی ہے۔ اک طبقہ ہے جس کا ماننا ہے کہ محمد بن قاسم بیرونی حملہ آور تھا اور اس کے آنے سے قبل اسلام ہندوستان میں پہنچ چکا تھا۔ جبکہ ہمارا مطالعہ پاکستان کہتا ہے کہ محمد بن قاسم 712 ء میں اک مظلوم لڑکی کی فریاد پہ اس راجا داہر جیسے ڈاکو سے چھڑانے سندھ میں وارد ہوئے۔ ان کی عمر تب سترہ سال تھی وہ ہندوستان میں اسلام لائے۔

کچھ لوگ گڑے مردے اکھاڑے جانے پہ شکوہ کناں ہیں کہ یہ لاحاصل بحث ہے جس کا کوئی فائدہ نہیں۔

Read more

سائنس اور مذہب کا جھگڑا

سائنس کہتی ہے کہ 65 ملین سال پہلے اک سیارچہ زمین سے آ ٹکرایا جس کے نتیجے میں ڈائنو سارز کا وجود مٹ گیا اور ہماری زمین پہ سو سال کے لیے گرد چھا گئی۔ جس کی وجہ سے زمین کا ٹمپریچر گر گیا اور آئس ایج دور کا آغاز ہوا جب گرد چھٹی اور…

Read more

محبت میں نوجوان کی خودکشی کا معاملہ

لاہور کے اک لڑکے نے مبینہ طور پہ پیار میں خود کشی کی۔ اس کی والدہ نے لڑکی کی تصاویر سوشل میڈیا پہ لگائیں اب ہر دوسرا بندہ تصاویر شئیر کیے جا رہا ہے اور لڑکی کو برا بھلا کہے جا رہا ہے بھائی اک تو زندگی سے گیا دوسرے کی زندگی آپ برباد کر…

Read more

نیو لبرل سرمایہ داری کا مجرمانہ چہرہ اور پاکستان

اک دور تھا جب یہاں جاگیرداری نظام تھا۔ زمین کے مالک عوام پہ حکومت کرتے تھے۔ زراعت بڑی انڈسٹری سمجھی جاتی تھی۔ پھر وقت بدلا اور سرمایہ داری نظام نے آہستگی سے جاگیرداری کی جگہ لے لی۔ آج ہم نیو لبرل سرمایہ داری نظام میں سانس لے رہے ہیں۔ تھرڈ ورلڈ ممالک سے لے کر…

Read more

بھٹو صاحب اور ٹیکسلا میں مہاتما بدھ کا تاریخی پیپل

آج چار اپریل ہے۔ ٹیکسلا میں بدھا کے عبادت گاہ کا سایہ بننے والا پیپل کا درخت اداس ہے۔ تاریخ کا حصہ بن جانے والے بھٹو کے ہاتھ سے لگایا گیا وہ تاریخی درخت جو اشوک ’گیا‘ سے لایا تھا اور ٹیکسلا میں لگایا تھا پھر جب اشوک کو شکست ہوئی تو اس کی پوتی…

Read more

ڈینئل پرل کے فیصلے نے پاکستان کو کس پوزیشن پر لا کھڑا کیا ہے؟

مغربی صحافت ہمارے ملک کی طرح نہیں کہ میڈیا مالکان فیلڈ رپورٹرز کی محنت کے بل بوتے پہ اربوں روپے کمائیں اور فیلڈ رپورٹرز بنا تنخواہ سیاستدانوں کی کوریج کی مٹھائیوں محکمانہ اشتہارات یا بلیک میلنگ سے گزارہ کریں۔ مغربی ادارے نہ صرف تنخواہیں دیتے ہیں بلکہ دنیا بھر کے ڈیسک بنا کر ٹیمیں بناتے ہیں جرنلسٹ فیلڈ میں جاتا ہے تو ان کے سفر قیام و طعام کا خرچہ ادارے کے ذمے ہوتا ہے۔ دوسرا مغرب میں معلومات تک رسائی بہت آسان ہے جبکہ پاکستان میں قانون تو موجود ہے مگر مجال ہے کہ آپ تحصیل کے ہسپتال کے کینٹین ٹھیکے کے ٹینڈر کی ہی معلومات لے سکیں بجٹ تو بہت دور کی بات ہے۔ یہی وجہ ہے کہ مغربی میڈیا کی رپورٹس عموماً غیر جانبدار اور حقائق پہ مبنی ہوتی ہیں۔

Read more

کورونا وائرس سے ہمیں کیا خطرہ ہے

تصویر میں نظر آنے والی فوجی گاڑیاں اٹلی میں کورونا سے مرنے والے لوگوں کو لادنے کے لیے آئی ہوئی ہیں کیونکہ میتیں اٹھانے والی گاڑیاں کم پڑ گئیں ہیں. یہ یورپ کا حال ہے وہ یورپ جو ہم سے کہیں ترقی یافتہ اور امیر ہے وہاں میتیں ان فوجی ٹرکوں میں بھر کر بغیر کسی…

Read more