شادی ہر مسئلے کا حل یا مزید مسائل کی وجہ ؟

ہمارے معاشرے میں ہر مسئلے کا ایک ہی حل ہے، شادی۔ اگر آپ کا بیٹا بری صحبت کا شکار ہو گیا ہے۔ کام نہیں کرتا۔ نشے کا عادی ہے۔ ذہنی دباؤ کا شکار ہے۔ والدین کی بات نہیں مانتا۔ تو ان سب مسائل کا ایک حل ہے کہ اس کی شادی کر دی جائے۔ جب…

Read more

مولانا طارق جمیل کے نام ایک بے حیا عورت کا خط

مولانا صاحب اسلام علیکم امید ہے کہ آپ اپنی دعا میں مجھ سمیت پاکستان کی تمام عورتوں کو بے حیا قرار دینے کے بعد بہت زیادہ خیریت سے ہوں گے ۔ میری خیریت آپ کو کیا نیک مطلوب ہو گی کہ میں تو وہ باحیا عورت نہیں جس کے نمبر کے لیے آپ کی ٹیم…

Read more

کیا وبا کے دنوں میں محبت سے اچھا کچھ ہو سکتا ہے؟

عام دنوں سے دن تھے۔ عام دنوں سے بھی برے دن تھے۔ کیونکہ ساری دنیا کی بے زاری میرے رویے میں تھی۔ عام دنوں میں پھر بھی مصروفیت رہتی ہے۔ کسی نہ کسی سے ملنا۔ کام کی بھاگ دوڑ رہتی۔ مگر ان دنوں وحشت چھائی تھی۔ تم انہی دنوں نظر آئے۔ نظر تو پہلے بھی…

Read more

کرونا سے پہلے اور بعد کی محبت

اک برہمن نے کہا تھا یہ سال اچھا ہے۔ پر یہ کیسا نئے سال کا سورج طلوع ہوا کہ پوری دنیا کی تاریخ کو بدل کے رکھ دے گا۔ یہ کیسا سال ہے کہ جس میں کوئی ایسا خطہ نہیں جہاں موت کی دہشت اور کرونا وائرس کا خوف نہیں۔ چین سے ہوتے ہوئے ایران،…

Read more

بریسٹ کینسر اور ادھوری عورت

بہت سال پہلے کی بات ہے۔جیو پہ ایک ڈرامہ آیا۔ادھوری عورت کے نام سے۔عائزہ خان فیصل قریشی کی بیوی ہوتی ہے۔اور اسے بریسٹ کینسر ہو جاتا ہے۔جس کے نتیجے میں اس کی بریسٹ ریموو کر دی جاتی ہے۔ جس دن اس کو سرجری کے بعد ہوش آتا ہے۔ ہاسپٹل میں ہی ہی فیصل قریشی کا رویہ بدل جاتا ہے۔ اس کے بعد اس کے رویے میں سرد مہری رہتی ہے۔ ایک دن عائزہ اسے نوکرانی کے ساتھ دیکھ لیتی ہے۔ اور جب اپنے شوہر سے سوال کرتی ہے تو وہ کہتا ہے کہ تمہارے پاس مجھے دینے کے لیے ہے ہی کیا۔ تم اب ایک ادھوری عورت ہو۔ آخر ان کی طلاق ہو جاتی ہے۔ اس ڈرامے نے مجھ پہ اتنا گہرا اثر چھوڑا کہ مجھے وہم سا لگ گیا۔

Read more

میں ناکام ہوں؛وجہ تم ہو

ہم میں سے کتنے لوگ ہیں جو زندگی میں کسی بھی مقام پہ کسی بھی وجہ سے ناکام ہوتے ہیں اور اپنی اس ناکامی کو دوسرے کے کھاتے میں نہیں ڈالتے۔ ہم ناکام ہیں تو وجہ کوئی اور ہے۔ کبھی ہم اس کا ذمہ دار والدین کو ٹھہرا دیتے ہیں۔ کبھی معاشرے کو۔ کبھی بہن…

Read more

عورت کو اپنے حقوق کے لیے مارچ کرنے کی ضرورت کیوں؟

اب جبکہ مارچ کا مہینہ قریب ہے۔ تو ملک میں ایک طوفان مچا نظر آ رہا ہے۔ یوں تو مارچ کا مہینہ ہمیشہ سے ہی اپنی باری پہ آ کے چلا جاتا تھا۔ مگر گزشتہ دو سال سے مارچ کی آٹھ تاریخ ملک میں ایک دم سے افراتفری مچا دیتی ہے۔ ویسے تو آٹھ کے…

Read more

محبتوں سے ڈرتے ہم لوگ

ہم محبتوں سے خوفزدہ لوگ ہیں۔ ہمیں محبت لفظ سے ہی خوف محسوس ہوتا ہے۔ جیسے یہ کوئی اچھوت لفظ ہے۔ جسے بولنے سے ہی ہماری زبانیں ناپاک ہو جاتی ہیں۔ مجھے لگتا ہے کہ بنیادی طور پہ ہمارے ڈی این اے میں ہی کوئی خرابی چلی آ رہی ہے۔ کیونکہ ہم نہیں چاہتے کہ…

Read more

عورت ہونا آسان نہیں

ہم جس معاشرے میں رہتے ہیں۔ یہ مکمل طور پہ پدرسری معاشرہ ہے۔ جس میں مرد کی مرضی اور حاکمیت پہ چلنا اور اس پہ سر تسلیم خم کرنا عورتوں کے لیے واجب بھی ہے اور ضروری بھی۔ جہاں پہ سر اٹھانے کی کوشش کی۔ اسے فورا کچلنے کی جلدی کی جاتی ہے۔ جیسے سانپ…

Read more

میں بری عورت ہوں کیونکہ میں روایت شکن عورت ہوں

عورت کی زندگی ایک مسلسل جدوجہد سے سے عبارت ہوتی ہے۔ چاہے وہ کسی بھی رشتے میں ہو، لیکن ایک جہد مسلسل اس کی ذات کا حصہ لازم ہوتا ہے۔ بس فرق یہ ہوتا ہے کہ اپنی ذات کے کچھ حصے وہ دکھا دیتی یا بتا دیتی ہے اور کچھ کبھی نہیں بتاتی۔ عورت کو…

Read more