آپ اپنے دام میں صیاد آ گیا

کہتے ہیں کہ ہوس کا کوئی اختتام نہیں، چاہے وہ دولت کی ہو، شہرت کی، یا طاقت و اقتدار کی۔ موجودہ حالات میں دنیا کے کئی ممالک وائرس سے پیدا ہونے والی وبا سے نبرد آزما ہیں۔ ایک مسلسل پریشانی کا دور جار ی ہے اور مصیبت یہ ہے کہ اس کا کوئی علاج نہیں۔ چین کا الزام ہے کہ امریکہ کے ساتھ فوجی مشقوں سے وہاں یہ وائرس شروع ہوا۔ یہ الزام کہاں تک درست ہے، اس کے بارے میں کوئی حتمی فیصلہ تو یقینا نہیں کیا جا سکتا۔ البتہ امریکہ اور امریکی صدر کی قوت و طاقت اور اقتدار و حکومت کی خواہش (یا ہوس) ایک ناقابلِ تردید اور مسلمہ حقیقت ہے۔

Read more

وبا کے دنوں میں فاصلہ اور لاء آف ایٹریکشن کی بلا

اگر آپ نے Rhonda Byrne کی کتاب The Secret پڑھی ہے تو یقینا آپ لاء آف ایٹریکشن کے بارے میں جانتے ہوں گے۔ یا اگر یونیورسل لاز (Universal Laws) کا علم رکھتے ہیں تو بھی آپ کو معلوم ہو گا کہ انسانی ذہن جو کچھ سوچتا ہے، مثبت اور منفی، اس کے ہماری زندگی پر…

Read more

عورت آزادی مارچ 2020 ء اور مردانہ عدم برداشت کا طوفان

ایک بات کی تو میں قائل ہو گئی ہوں۔ وہ یہ کہ اگر کسی عامیانہ ذہنیت کے مرد یا فیس بُکی / ٹویٹری دانشور کو انگاروں پہ لوٹانا ہو تو اس کے سامنے ”میرا جسم میری مرضی“ کا نعرہ لگا دیں۔ اس نعرے کی ننھی سی تیلی فریقِ مخالف کی ”شرم و غیرت“ کو آگ لگا د ینے کے لئے کافی ہو گی۔ تب وہ ایک ڈریگن کی مانند زبان سے ایسے شعلے برسائے گا جنہیں بجھانے کے لئے فائر بریگیڈ بھی ناکافی ہو گا۔

”میرا جسم میری مرضی“ کی شدید مخالفت اور یہ نعرہ لگانے والی ہر خاتون کو فاحشہ اور طوائف کا خطاب دے دینا مردانہ عدم برداشت کا افسوسناک اظہار ہے۔

Read more

”تیر ا جسم میری مرضی“ : اب تو خوش ہیں آپ؟

بہ حیثیت ِ قوم ہمارے ہاں منفیت اس قدر راسخ ہو چکی ہے کہ اکثر ہر نئی بات کو برا بنا کر مسترد کر دیا جاتا ہے، بالخصوص جن کا تعلق عورت سے ہو۔ ”میرا جسم میری مرضی“ پر خواتین کو اب تک جتنی گالیاں پڑی ہیں، اتنی شاید ہی کسی اور بات پر پڑی…

Read more

نسوانی کردار اتنے داغدار کیوں؟

ٹی وی ہمارے گھر کا ایک لازمی جز ہے۔ اور ٹی وی ڈرامے کو معاشرے کی اقدار و روایات کا عکاس کہا جا سکتا ہے۔ آج کل جبکہ ہر گھر میں ٹی وی موجود ہے، تو اس پر دیکھے جانے والے پروگرامز اور ڈرامے یقینا ہماری سوچ پر اثرانداز ہوتے ہیں۔ جو کہانیاں ہم چھوٹی…

Read more

شکر ہے اللہ نے شوہر کو سجدہ کرنے کا حکم نہیں دیا

مرد کی فوقیت ثابت کرنے کے لئے اکثر یہ حوالہ دیا جاتا ہے کہ اگر اللہ نے اپنی ذات کے بعد کسی اور ہستی کو سجدہ کرنے کا حکم دیا ہوتا تو بیوی کو یہ حکم دیا جاتا کہ وہ شوہر کو سجدہ کرے۔ مولوی حضرات خاص طور پر مرد کی برتری ثابت کرنے کے…

Read more

کیا مردانہ وحشیانہ پن ڈرامے کی ریٹنگ کے لئے ضروری ہے؟

ڈرامہ کسی معاشرے کی تہذیب و ثقافت اور طرزِ زندگی کی عکاسی کرتا ہے۔ چونکہ ٹی وی اور ڈراما ہر طبقے، عمر، اور صنف کے افراد دیکھتے ہیں اس لئے اس میں پیش کی گئی کہانیاں کسی نہ کسی طرح اپنا اثر ضرور رکھتی ہیں۔ بلکہ یہ کہنا بیجا نہ ہو گا کہ جو کچھ…

Read more

ڈرامے میں شرک کی ایک نئی قسم کی دریافت

یہ پہلا موقع ہے کہ میں کسی ایک ڈرامے کے حوالے سے دوسری مرتبہ کچھ لکھ رہی ہوں۔ یہ ڈراما ”میرے پا س تم ہو“ ہر ہفتے کی رات ٹویٹر کے ٹاپ ٹرینڈز میں شامل ہوتا ہے۔ ڈراما نگار نے کسی سائنسدان یا تحقیق دان کی مانند شرک کی ایک نئی قسم دریافت کی ہے۔…

Read more

صدا ہوں اپنے پیار کی: ملکۂ ترنم میڈم نور جہاں کو خراجِ عقیدت

21 ستمبر 1926 ء کو پنجاب کے مشہور شہر قصور میں مدد علی اور فتح بی بی کے ہاں ایک پیاری سی بچی پیدا ہوئی۔ اُسکا نام اللہ وسائی رکھا گیا۔ قصور گھرانے میں پیدا ہونے والی اللہ وسائی نے 6 سال کی عمر میں گانا شروع کر دیا۔ اس قدر کم سنی کے باوجود…

Read more

دو ٹکے کی لڑکی اور کھوٹے سکے جیسا مرد

ہفتے کی رات ایک آن ایئر ڈرامہ سیریل ”میرے پاس تم ہو“ میں دو ٹکے کی لڑکی والا مکالمہ سنا۔ عورت کو حقیر، بے وفا، اور مرد سے کمتر سمجھنے والوں نے اس مکالمے کا نہ صرف خوب لطف اٹھایا بلکہ سوشل میڈیا پر بہت زیادہ شیئر بھی کیا۔ جن لوگوں نے یہ ڈرامہ نہیں…

Read more