موجودہ پاکستانی سیاست: آئیے “اینجائے کریں!”

پچھلے چند روز میں جناب پرویز الہٰی اور جناب شجاعت حسین صاحب اک دم ہی ابھر کر پاکستان کے سیاسی منظر نامے پر سامنے آئے ہیں اور سیٹھ میڈیا کا ٹی وی اک بار پھر پاکستان میں بونوں کی تشکیل کر رہا ہے۔ چوہدری برادران نے سرعام کہا ہے کہ وہ عمران نیازی صاحب کو…

Read more

مجھے کیلا کھانے پر اعتراض نہیں

ملک خضر حیات میرے دوست ہیں۔ ان کا تعلق پنڈی گھیپ کے اک نواحی دیہات سے ہے جہاں ان کی ہمشیرہ، خواتین کے اک پولنگ سٹیشن میں پولنگ ایجنٹ تھیں۔ الیکشن کے وقت کے اختتام کے بعد، انہیں زبردستی گھر بھیج دیا گیا۔ ان کے پولنگ سٹیشن کا نتیجہ اگلے دن تیار کر کے ان…

Read more

مولانا کا آزادی مارچ: جسے مات ہو، وہ گھر جائے!

آئیے ذرا آج کے دن مولانا فضل الرحمٰن کے لانگ مارچ سے قبل کے حالات کا اک طائرانہ جائزہ لیتے ہیں۔ یہ جائزہ احباب کو آج کے دن کی صورتحال سمجھنے میں مدد دے گا۔ پاکستان میں سیٹھ میڈیا پر پاکستانی شہریوں اور بالخصوص پاکستانی سیاستدانوں کو ڈی-ہیومینائز، یعنی ان کو اوسط انسان کے درجے…

Read more

ٹویوٹا فارچونر اور فرشتوں کا معاشرہ

پچھلے دو دنوں سے موٹروے پر ٹویوٹا فارچونر کے حوالے سے معاملات کو پڑھ رہا ہوں۔ گھومتے پھرتے وٹس ایپ پر وہ ویڈیو مجھ تک بھی آن پہنچی۔ تجسس تھا تو دیکھ لی۔ اس میں اک بہت ہی مبہم سا اشارہ ہے کہ جس واقعہ کی طرف انگلیاں اٹھائی جا رہی ہیں، وہ ہو رہا…

Read more

فوج کو سوچنا ہو گا، زخم بہت گہرا ہوتا جا رہا ہے

یہ خیال، اک الگ موضوع کا تقاضہ کرتا ہے، مگر سامنے کی تین چار باتیں احباب کی نذر ہیں۔ پاکستانی فوج، یعنی پیادہ فوج کی سیاست میں مداخلت، اور یہ میں نہیں صالح ظافر صاحب کی خبر کہہ رہی ہے، اس بار بھی پاکستان کے حق میں نہ رہی۔ آرمی چیف نے مولانا کو بلایا۔…

Read more

میں 47 سال کی عمر میں کیا سوچتا ہوں؟

چند دن بعد، میں اپنی عمر کے 47ویں سال میں داخل ہو جاؤں گا۔ گویا نصف سنچری سے صرف تین سال اِس طرف۔ اس موقع پر، میری پارٹنر، عترت اسد اور میرے عزیز دوست، جواد شکیل، جس کو میں دلہا میاں کے نام سے یاد کرتا ہوں، نے پوچھا کہ میں اوسطا مہیا کی گئی…

Read more

پاکستان، کشمیر پر کچھ بھی نہیں کر سکتا

آپ کے جذباتی خیالات، آپ کو اک ذہنی و روحانی لذت بھلے دیتے ہوں، مگر یہ آپ کی زندگی کے موجود اور دانت نکوستے ہوئے مسائل حل نہیں کرتے۔ یہ دنیا معیشت سے جڑی سیاسیات، اور سیاست سے جڑی معاشیات کی دنیا ہے۔

آپ کی جذباتیت بھلے لال قلعے اور یروشلم پر سبز ہلالی پرچم لہرواتی پھرے، مگر آپ کے خیال سے اختلاف کرتا ہوا ڈیٹا کا اک سٹروک، آپ کے جذبات کے درجنوں تربیلا ڈیمز پر بھاری ہے۔ تو آئیے، ذرا انڈیا اور پاکستان کے ڈیٹا کی دنیا میں چلتے ہیں۔

Read more

پروپیگنڈہ کیا ہوتا ہے اور یہ کرتا کیا ہے؟

آئیے، پہلے جانتے ہیں کہ پروپیگنڈے کی اہمیت کیا ہے۔

یووال ہریری کی کتاب، ہومو سیپئنز، اک حیران کر دینے والی کتاب ہے۔ اس میں انسانی ارتقاء کی داستان کے علاوہ، منظم معاشرے اور منظم ریاست کی پُرکاریوں پر بھی بہت عمدہ اشارے موجود ہیں۔ اپنی کتاب میں وہ لکھتے ہیں کہ ہومو سیپئنز اصیل افریقن تھے اور اپنے ارتقاء کے عمل کے دوران ان میں موجود چند طاقتور افراد نے بنیادی طور پر اپنی طاقت اور کنٹرول کی حرکیات (The dynamics of power and control) کو دوام بخشنے کے لیے مختلف مقدس نظریات تخلیق کیے۔

Read more

جنرل قمر جاوید باجوہ صاحب کے نام کھلا خط

محترم جناب جنرل باجوہ صاحب:

آپ نومبر 1960 کی پیدائش ہیں، اور میں ستمبر 1972 کی۔ آپ کی اور میری عمر میں محض 12 برس کا ہی فرق ہے۔ مگر آپ کے اور میرے جہانوں میں فرق سات زمینوں اور سات آسمانوں سے بھی زیادہ ہے۔ آپ جہاں ہیں، وہاں خوش ہیں۔ میں جہاں ہوں، میں بھی وہاں بہت خوش ہوں۔ آپ کے نام پہلے بھی دو خط لکھنے کی جسارت کی، تیسرا بھی اسی لیے لکھ رہا ہوں کہ آپ کے اور میرے درمیان مراتب کے بے پناہ فرق کے باوجود، آپ کی اور میری جنریش ایک ہی ہے۔ کیونکہ جنریشن گیپ کی کلاسیکی تعریف، اک نسل کو تقریبا 30 برس پر محیط رکھتی ہے۔

Read more

شکریہ عمران خان: جنرل حاجی ضیا کا دور یاد آ گیا

کافی دنوں سے کچھ لکھا نہیں تو سوچا کہ ایویں میں پڑھنے والوں کو متاثر کرنے کی خاطر، اک عہد ساز امریکی ماہرِ عمرانیات، ایلون ٹافلر کا اک قول ہی سناتا چلوں (ماخوذ): سیکھنے سے زیادہ مشکل، سیکھے ہوئے کو ان-سیکھنا ہوتا ہے اور اس سے بھی زیادہ مشکل، دوبارہ سے اور درست سیکھنا ہوتا…

Read more