خون حسین کے سوداگران

میری بڑی شدت خواہش ہے کہ کاش کے ایسا ہو وہ سارے فضائل علی ابن ابی طالب اور مصائب مولا حسین مظلوم بیان کرکے ان الفاظوں کی قیمتیں وصول کرنے والے بالخصوص وہ لوگ جو بارہ روز سے زائد دھرنے کا حصہ رہے اور متاثرین کی داد رسی کرتے رہے۔ وہ خواتین و حضرات جن کی رسائی ممبر تک ہے وہ معززین حکومت اور اداروں کے خلاف بیانیہ جاری کرتے رہے یہ عزت ماب افراد کم از کم اس سال ایام غم میں خون حسین ابن علی کی بولی نہ لگائیں۔

Read more

مینگروز کی افزائش اور پاک بحریہ کا کردار

ساحلی علاقوں میں مینگروز کی ضرورت سے انکارنہیں۔ دنیا بھر میں مینگرو کے درخت 137800 مربع کلومیٹر ( 53200 مربع میل) تک پھیلے ہوئے ہیں۔ اس درخت کی قدرتی صلاحیت کی بدولت سمندری حیات محفوظ ہوتی ہے۔ اس میں سمندری طوفان کی شدت کو کم کرنے کی صلاحیت بھی ہوتی ہے۔ درختوں کی جڑوں میں سمندری جانور اپنی پناہ گاہیں بناتے ہیں۔ مینگروز مچھلیوں اور جھینگوں سمیت دیگر سمندری حیات کی افرائش نسل کا بہترین ذریعہ بھی ہوتے ہیں۔ مینگروز ہسپانوی زبان کا لفظ ہے۔ اسے اردو میں تمر کہا جاتا ہے۔ ان میں آکسیجن فراہم کرنے کی بھی صلاحیت ہوتی ہے۔

Read more

یہ جو سوہنی دھرتی ہے اس کے پیچھے وردی ہے

ستائیس فروری 2019 پاکستان کی تاریخ کا ایک اور یادگار دن ہے۔ اس دن نے چھ ستمبر 1965 کے دن کی یاد کو تازہ کیا ہے۔ دن کے اجالے میں پاکستان ایئر فورس کے اسکوڈران لیڈر حسن صدیقی اور ونگ کمانڈر نعمان علی خان نے راشد مہناس اور ایم ایم عالم کی روحوں کو خراج…

Read more

کراچی کی روشنیاں: شکریہ پاکستان آرمی

زیادہ پرانی بات نہیں، جب معاشی حب کراچی میں آگ و خون کی ہولی کھیلی جاتی تھی۔ کراچی کے رہائشی اس بات سے بخوبی واقف ہو گئے کہ اس شہر مظلوم کس طرح سے برباد کیا گیا۔ چند عاقبت نااندیشوں نے اسی شہر کا باسی ہونے کے باوجود، اسی کا سکون تاراج کیا۔ کراچی کو…

Read more

پرامن ساحل اور پاکستان نیوی

ترقی یافتہ ممالک کی کامیابی بہتر معاشی صورتحال سے منسلک ہے۔ معاشی امور کے ماہرین کے مطابق دنیا کی معیشت میں تجارت کا اہم ترین ذریعہ بحری راہداریاں ہیں۔ بحری تجارت پر توجہ دینے والے ممالک نے نمایاں ترقی حاصل کی۔ یہ ہی نہیں بلکہ بحری تجارت کے ذریعے یہ ممالک دوسرے براعظموں کے ساتھ اپنے مفادات کے اثر و رسوخ قائم کرنے میں بھی کامیاب رہے ہیں۔ اللہ نے پاکستان کو سمندر جیسی نعمت دی ہے۔ جس کی بدولت ہم اپنی معاشی صورتحال کو بہتر بنانے کے لئے کوشاں ہیں۔

Read more

نوحہ کناں کشمیر

کشمیر کا نام آتے ہے ذہن میں خواتین کی آہ وبکاں، مردوں کی بے بسی اور بچوں سسکیوں کے مناظر اجاگر ہوجاتے ہیں۔ جنت نظیر کشمیر کی وادی آٹھ دہائیوں سے لہو لہو ہے، مگر نہ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق تنظیموں کو شرم آتی ہے نہ ہی اسلامی اتحاد کوئی ٹھوس اقدامات کرتا ہے۔ وادی جنت نظیر میں، کتنی ہی مائیں، بہنیں، بیویاں اور بیٹیاں اپنے جبری گمشدہ مردوں کی آمد کی منتظر ہیں، کتنی ہی مائیں اپنے جوانوں کو کندھا دے چکی ہیں۔

Read more

بچے، والدین اور اساتذہ کی تکون

چند روز قبل انٹرنیٹ پر ایک بچے کی ویڈیو وائرل ہوئی جس میں وہ بڑے غصے سے کسی سے اپنا اسکول بیگ مانگ رہا تھا۔ سوشل میڈیا کے صارفین اس ویڈیو سے خوب لطف اندوز ہوئے بعد ازاں احمد نامی وہ بچہ مارننگ شوز کا حصہ بنا۔ جب لوگوں کا اس بچے سے مکمل تعارف ہوا تو کچھ حضرات نے اسے معصوم جبکہ کچھ نے اسے بدتمیز گرداننا، حالانکہ تین سالہ بچے کو کیا پتہ تمیز کیا ہے اور بدتمیزی کسے کہتے ہیں۔ وہ تو کورے کاغذ کی مانند ہوتے ہیں۔

انہیں جو بات سکھائی یا سمجھائی جائے وہ فوری نوٹ کرلیتے ہیں۔ بچوں کو توجہ کی طلب زیادہ ہوتی ہے۔ احمد نامی اس بچے نے دیکھا لوگ اسے کے غصے کی وجہ سے اسے توجہ دے رہے ہیں۔ اس کی باتوں پر ہنسا جا رہا ہے۔ اسے پیار کیا جا رہا ہے لہذا اس نے وہی کیا جو لوگوں نے چاہا۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ بچہ بدتمیز نہیں ہے بلکہ اسے بدتمیز بنایا جا رہا ہے۔

Read more

یہ جو پنڈی سے محبت ہے

کراچی کی بریانی، حیدرآباد کی چوڑیاں، ہالہ کا لکڑی کا فرنیچر، سکھر کا قینچی کا پل، ملتان کا سوہن حلوہ، لاہور کا قلعہ، کوئٹہ کے میوے، پشاور کے پھول سمیت روالپنڈی جی ایچ کیو کی وجہ سے ممتاز ہے۔ میں نے پاکستان کے سب سے بڑے شہر میں آنکھ کھولی مگر حیرت کی بات ہے…

Read more

کراچی کے پیشہ وار گداگروں کا مافیا کیسے کام کرتا ہے

وہ گداگر جو کبھی اللہ کے نام پر مالی مدد کی درخواست کیا کرتے تھے اب ان جگہ پیشہ ور بھکاریوں نے لے لی ہے جو ہر بندے کو پکڑ کر، راستہ روک کر، دروازہ کھٹکھٹا کر بھیک وصولنے کو حق سمجھنے لگے ہیں۔ اکثر تو یہ بھی دیکھنے میں آیا ہے کہ کم بھیک ملنے پر بھکاری خوب ناراض ہوتے ہیں اور بددعائیں تک دینے لگتے ہیں۔ بد دعائیں سن کر کمزور دل یا پھر فہمی افراد فوری ان کی ہتھیلی گرم کردیتے ہیں۔ جب سے گداگری نے پیشے کا روپ اختیار کیا ہے تب سے بھکاریوں کے انداز بھی بدل گئے ہیں۔

پروفیشنل بھکاریوں کی مختلف اقسام روزانہ حق دار سے اس کے منہ کا نوالہ چھیننے میں سرگرم ہیں۔ ان میں سے ایک گروہ فرضی معذور بن کر سڑک کنارے خاموشی سے بیٹھ جاتا ہے۔ آتے جاتے لوگ ان کے کشکول میں خیرات ڈال جاتے ہیں۔ اس طرح یہ گروہ اپنا ہدف حاصل کرنے میں کامیاب ہوتا ہے۔ یہ پیشہ ور ایک ہی سڑک کنارے نہیں ہوتے ہیں بلکہ ان کے گروہ کا گرو ان کے علاقے بانٹتا ہے۔ اس کے عوض وہ یومیہ اپنا کمیشن وصول کرتا ہے۔

Read more

کراچی، موسمی تبدیلی اور سبزے کا فقدان

یوں تو کراچی میں کبھی بھی شدید سردی کے آثار نہیں دیکھے گئے البتہ زمانہ طالب علمی میں ہفتہ، دس دن کی مہمان سردی کے مزے سے ضرور لطف اندوز ہوئے ہیں۔ گذشتہ پانچ، چھ سالوں سے تو یہ حالت ہے کہ کمبل اوڑھنے کے لئے پنکھا چلانا پڑتا ہے۔ دفاتر میں اے سی آن…

Read more