مریم نواز کا سیاسی مستقبل

مسلم لیگ ن کے بار ے میں ان کے بہت سے سیاسی پنڈت یہ رائے دیتے تھے کہ مریم نواز ہی میں وہ سیاسی حرارت موجود ہے جو عملی طور پر نواز شریف کے بعد پارٹی کی سیاست میں نئی جان اور طاقت ڈال سکتی ہیں۔ یہ ہی وجہ ہے کہ مسلم لیگ کے سیاسی پنڈت مریم نواز کو ہی نواز شریف کا سیاسی جانشین کے طور پر پیش کرتے رہے ہیں۔ ابتدا میں واقعی مریم نواز نے نواز شریف کی وزارت عظمی سے برطرفی کے بعد ان کے سیاسی مخالفین کو ایک بڑی طاقت سے للکارا تھا۔

Read more

اتفاق رائے کی سیاست کا فقدان

عمومی طور پر جمہوری سیاست میں حکومت اور حزب اختلاف کے درمیان قومی سنگین مسائل پر اتفاق رائے کی سیاست کی بہت زیاد ہ اہمیت ہوتی ہے۔ کیونکہ مسائل کا حل ٹکراؤ کی سیاست کے مقابلے میں اتفاق رائے کی سیاست سے جڑا ہوتا ہے اور یہ عمل ایک ذمہ دار سیاست کے پہلوؤں کو بھی نمایاں کرتا ہے۔ لیکن بدقسمتی سے پاکستان جیسے معاشروں میں جہاں سیاست، جمہوریت اپنے ارتقائی عمل سے گزر رہی ہے تو وہاں ایک دوسرے کے سیاسی وجود کو قبول نہ کرنے اور ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے کی سیاست کو فوقیت دینے سے ہم مجموعی طور پر بگاڑ پیدا کرنے کا سبب بنتے ہیں۔ اس طرز کی سیاست کا عملی نتیجہ محاز آرائی اور لعن طعن کی سیاست کی صورت میں نکلتا ہے جو جمہوری سیاست میں عدم استحکام کی سیاست کو پیدا کرتا ہے۔ اتفاق رائے کی سیاست وہاں پیدا ہوتی ہے جہاں اہل سیاست سے جڑے افراد شعوری طور پر ایک ذمہ دار طرز کی سیاسی پختگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔

Read more

انصاف پر مبنی نظام کیسے ممکن ہوگا؟

پاکستان میں اگر ایک منصفانہ اور شفاف نظام کو لانا ہے تو یقینی طور پر اس کی ایک بڑی بنیاد سیاسی، سماجی اور معاشی انصاف پر مبنی نظام ہوگا اور اسی بنیاد پر ہم ایک مہذہب اور ذمہ دار معاشرہ کے تقاضوں کو پورا کر سکتے ہیں۔ جو بھی معاشرہ انصاف کے نظام کے تناظر…

Read more

کیا واقعی ہم تبدیل ہوسکیں گے؟

عمومی طور پر ایک دلیل یہ دی جاتی ہے کہ اگر کوئی معاشرہ کسی بڑی مشکل کا شکار ہوتا ہے تو اس کے نتیجے میں مشکلات سے نمٹنے کے تناظر میں

کئی بڑے مواقع بھی پیدا ہوتے ہیں۔ کیونکہ ہر بحران کا اپنا ایک نظام ہوتا ہے اور بحرانوں سے نمٹ کر ہم مستقبل کی کے ماحول کو بھی بدلنے کی طرف پیش قدمی کر سکتے ہیں۔ یہ الگ بات ہے کہ کوئی بھی معاشرہ سامنے آنے والے مواقع سے فائدہ اٹھاتا ہے یا اپنی عدم صلاحیت اور بہتر سمجھ بوجھ سمیت کمزور سیاسی کمٹمنٹ کے باعث فائدہ

Read more

میڈیا کا محاذ اور حکومتی بیانیہ

نئے وزیر اطلاعات سینٹر شبلی فراز اورمیڈیا سے جڑے معاملات پر وزیر اعظم کے معاون خصوصی جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کی تقرری کی سیاسی ٹائمنگ بہت اہم ہے۔ دونوں افراد اچھی سیاسی اور انتظامی و عسکری شہرت کے حامل ہیں۔ بالخصوص جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ بطور سابق سربراہ آئی ایس پی ار ا ور میڈیا مینجمنٹ کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں۔ وہ بنیادی طور پر روایتی انداز میں میڈیا مینجمنٹ کی بجائے ان معاملات کو جدید انداز اور مربوط رابطہ سازی کی مدد سے چلاتے رہے ہیں۔

Read more

مودی حکومت اور اسلام فوبیا کا کھیل

بھارت میں بدقسمتی سے اس وقت اسلام مخالف لہر بڑی شدت سے موجود ہے۔ مودی حکومت کی بنیاد ایک سیکولر بھارت کے مقابلے میں عملاً ہندواتہ پر مبنی ریاست اور حکومت ہے۔ ان کے بقول بھارت صرف اورصرف ہندوؤں کا ہے اور جس مسلم سمیت تمام اقلیتوں کو اگر بھارت میں رہنا ہے تو اسے…

Read more

شہباز شریف کہاں کھڑے ہیں

سیاست کا ایک المیہ یہ ہوتا ہے کہ لوگ اس عمل میں مستقبل کی بجائے ماضی میں رہ کر اپنا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں۔ ان کے سامنے مستقبل کی تصویر کم اور ماضی کا ماتم زیادہ ہوتا ہے۔ سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کا مسئلہ یہ ہے کہ وہ خود ایک بڑے سیاسی…

Read more

خود مختار مقامی نظام حکومت ناگزیر ہوگیا ہے

کرونا وائرس سے جڑے بحران سے نمٹنے میں ریاستی و حکومتی سطح پر جو بڑے بڑے چیلنجز سامنے آئے ہیں ان میں ایک بڑا مسئلہ ملک میں مضبوط، مربوط، شفاف اور خود مختار مقامی حکومتوں کے نظام کا نہ ہونا ہے۔ اہل دانش کی سطح سے یا جو لوگ حکمرانی کے نظام کی افادیت یا…

Read more

کرونا وائرس اور نوجوان طبقہ

کرونا وائرس سے نمٹنا ایک بڑا قومی چیلنج ہے۔ یقینی طو رپر اس چیلنج سے نمٹنے میں ریاست یا حکومت تن تنہا کچھ نہیں کرسکتی۔ یہ جنگ ہمیں اگر جیتنی ہے تو ا س میں معاشرے کے تمام فریقین کو ریاست کے ساتھ کھڑا ہونا ہوگا۔ یہ وقت سیاسی اسکورنگ، مقابلہ بازی، الزام تراشی یا…

Read more

سیاسی مافیا پر مبنی گٹھ جوڑ توڑنا ہوگا

پاکستان کی سیاست، جمہوریت اور معاشرہ کو عملی طور پر طاقت ور طبقوں یا مختلف مفاداتی فریقین کے باہمی گٹھ جوڑ نے قبضہ کیا ہوا ہے یا ہماری سیاست ان طاقت ور لوگوں کے ہاتھوں یرغمال ہے۔ سیاسی جماعتیں، سیاسی قیادتیں اور جمہوری عمل کمزور اور طاقت ور مافیاز یا مفادات پر مبنی گروہ زیادہ…

Read more