انصاف کہاں ہے؟

لاقانونیت بہت بڑھ گئی ہے یا پھر ہم سب مادر پدر آزاد ہوگئے ہیں جو چائیں جب چاہیں کرتے رہیں کوئی پوچھنے والا نہیں، عزتیں لٹنا، عزتیں لوٹنا اتنا عام ہوگیا ہے کہ ایک خبرکے بعد دوسری خبر بھی ہمین چونکاتی نہیں۔ بے حسی سی بے حسی ہے ایک دوسرے پر الزام دھر کر خاموش…

Read more

کتاب آئنہ نما

مصنف ظفر عمران تبصرہ شاہانہ جاوید ظفر عمران کے افسانوں کا مجموعہ ”آئنہ نما“ ہے، مکمل آئینہ نہیں کیونکہ آئینہ میں بھرپور عکس نظر آتا ہے جب کہ یہاں جھلک دکھا کر معاشرے کے تلخ، تند، ہوشربا واقعات کو بیان کیا گیا ہے باقی کام قاری کا ہے وہ کہانی کو کس طرح محسوس کرتا…

Read more

دھرنا، کنٹینر اور عوام

دھرنا اور کنٹینر کا چولی دامن کا ساتھ ہے اور عوام تماشا بین۔ دھرنے کی سیاست بہت پرانی ہے، برصغیر میں گاندھی جی نے بھی دھرنے دیے انگریزوں کے خلاف اس وقت کھلے آسمان کے تلے دھرنا دینے والے چوکڑی مار کر بیٹھ جاتے اور مطالبات منوا کر ہی اٹھتے۔ سیاسی، تعلیمی، سماجی، معاشرتی مسائل…

Read more

غریب کو جینے دیجیئے اور چائے پینے دیجیئے

چائے ایسا مشروب شاید ہی کوئی نہ پیتا ہو، سردی میں چائے جسم کو گرمی پہنچاتی ہے اور گرمی میں موسم کی شدت کو کم کرتی ہے، برسات میں چائے کا لطف ہی الگ سے آتا ہے رم جھم پھوار اور بھاپ اڑاتی چائے عاشقوں کے دل گرماتی ہے تو وہیں بہت سوں کے دل…

Read more

کچرا کچرا ہے

کچرا کچرا ہے چاہے تھوڑا ہو یا بہت، چھوٹا ہو یا بڑا کچرا کچرا ہے۔ کچرا کچرا کیا مشکل ہے لوگوں کے دماغ میں اتنا کچرا بھر گیا ہے کہ ہر طرف کچرا نظر آتا ہے، اے کراچی والو کچرے میں کچرا بن کر جیو۔ ویسے بھی اس شہر کو تو کسی کی نظر کسی…

Read more

خلائی چور زمینی عدالت

تمام مخلوقات میں اشرف حضرت انسان کی حرکتیں بھی تمام مخلوقات کے مقابلے میں اشرف ہیں۔ آج تک زمین پر چوری کے واقعات تو سنے ہوں گے، اس کرہ ارض کا کون سا خطہ اس فعل قبیح سے مستثنٰی ہے لیکن صاحبو حیران کن بات یہ ہے کہ اب حضرتِ انسان کی کارفرمائی خلا تک جاپہنچی ہے جی ہاں خلا میں چوری کی پہلی واردات، اب نجانے زمین کی عدالتوں کے انصاف کی پہنچ خلاتک ہے یا نہیں لیکن واردات ہوچکی اور پکڑی بھی جاچکی ہے۔ تفصیل کچھ یوں ہے کہ خلائی تحقیق کا امریکی ادارہ ”ناسا“ تاریخ کے اس پہلے جرم کی تحقیقات کررہا ہے جس کی تفصیلات یہ ہیں کہ خلا نورد نے بین الاقوامی خلائی اسٹیشن سے اپنی ازدواجی ساتھی کی معلومات چوری کر کے ان کے بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات حاصل کیں۔

Read more

چور سپاہی کا کھیل

بچپن میں چور سپاہی کا کھیل کس نے نہیں کھیلا، بہت سارے سپاہی مل کر چور کو پکرتے تھے پھر مصنوعی رسی کی ہتھکری لگا کربجیل میں بند کردیا جاتا، پھر دوسرے چور کی تلاش شروع ہوتی۔ بچپن کے کھیل بھی نرالے ہوتے تھے کوئی فکر نہ پروا، چور بننے کا مزا بھی الگ سے آتا تھا چھپ چھپ کر اور سپاہیوں کی بھاگ بھاگ کر حالت پتلی ہوجاتی تھی جب جاکر چور پکڑا جاتا اور کھیل ختم ہوتا یا پھر مغرب کی اذان کھیل ختم کرنے کا اعلان کرتی اور بچے گھروں کو بھاگ جاتے کیونکہ مغرب کے بعد کھیلنا منع تھا۔

Read more

عام آدمی سے خاص آدمی تک!

عام آدمی آخر ہے کون؟ ہم حکومت کا ہر بیانیہ سنتے ہیں کہ ان اقدامات کا اثر عام آدمی پر نہیں پڑے گا، یا بجٹ میں عام آدمی کو ریلیف دیا گیا ہے، بجلی اور گیس کی قیمت بڑھنے سے عام آدمی کو فرق نہیں پڑے گا، مہنگائی کا اثر عام آدمی پر نہیں پڑے گا۔ عام آدمی شاید سب کی نظر میں وہ ہے جو اس معاشرے کا سب سے مضبوط آدمی ہے، جو ایک پرسکون اور فکروں سے آزاد زندگی گذار رہا ہے۔ روز گڑھا کھودتا ہے روز پیٹ کا ایندھن بھرتا ہے، نہ وہ بیمار پڑتا ہے، تو اسے ادویہ کی قیمتوں کے بڑھنے سے کیا فرق پڑے گا اور اتفاق سے بیمار پڑ گیا تو موت ہی اس کا علاج ہوتی ہے، وہ موت کو خوشی خوشی گلے لگا بھی لیتا ہے۔ تعلیم کی بھی اسے کیا ضرورت عام آدمی جو ہوا ڈگری لے کر کون سا تیر مار لے گا اس لیے تعلیم حاصل کرے یا نہیں کوئی آسمان نہیں ٹوٹ پڑے گا۔ کھانے کے معاملے میں بھی عام آدمی بہت مضبوط ہوتا ہے ایک وقت کھاکر کئی وقت آرام سے بھوک سہ سکتا ہے اور کبھی تو صرف پانی پہ گزارہ کر لیتا ہے۔

Read more

چینی دولہا پاکستانی دولہن!

کیا وقت تھا کچھ عرصے پہلے تک بڑے فخر سے یہ خبر سنائی جاتی تھی کہ چینی لڑکے نے مسلمان ہونے کے بعد پاکستانی لڑکی سے شادی کر لی، کیا بات ہے پاکستان کی کشش نے ایک غیر مسلم کو مسلمان کردیا۔ شادی بھی ہوگئی اور ثواب الگ کمایا لیکن وہ کہتے ہیں نا کہ جب بہت میٹھا ہوجائے تو کیڑے پڑ جاتے ہیں یعنی اتنی چینی ڈالی کہ کڑوا ہوگیا اور یہ راز کھل گیا کہ یہ اچانک چینی مردوں میں پاکستانی لڑکیوں سے شادی کا رجحان کیوں بڑھ گیا تھا۔

Read more

کرکٹ کی کِٹ کِٹ اور سیاست!

وکٹ گرادی، وکٹ اڑادی، ایمپائر کی انگلی کھڑی ہوگئی اللہ جانے پاکستان کی سیاست ہے یا کرکٹ میچ، ہم تو ویسے ہی کرکٹ میچ پسند نہیں کرتے تھے اب تو سیاست سے بھی بد دل ہوگئے جب دیکھو کرکٹ کی اصطلاحیں استعمال ہورہی ہیں ارے بندہء خدا آپ ملک کے وزیر اعظم ہو، میچ کے کپتان نہیں کچھ تو بردباری دکھاؤ، پچھلے دس سال کا رونا رونے کے بجائے پچھلے آٹھ ماہ کا حساب کرو کیا کھویا کیا پایا۔

آپ کے بیان میں ذرا جو سنجیدگی کی رمق ہو، سارے وفاداروں کو تبدیل کرتے کرتے کہیں خود بھی کسی کے حق میں دستبردار نہ ہو جانا۔ ایک حد تک تو یہ مثالیں جچتی تھیں لیکن اب یہ مثالیں بالکل ہضم نہیں ہو رہیں، کیونکہ حکومت بھی آپ کی، ریاست بھی آپ کی بیانیہ بھی آپ کا تو بھیا وزیراعظم سوچ سمجھ کر چلو۔ تم نے اپنی جھولی میں وہی کھوٹے سکے بھر لیے جو پہلے ہی نہ چل سکے، اب لوگ مذاق نہ اڑائیں تو کیا کریں۔

Read more